Announcement

Collapse
No announcement yet.

ہائے لوگوں کی کرم فرمائیاں

Collapse
X
  • Filter
  • Time
  • Show
Clear All
new posts

  • ہائے لوگوں کی کرم فرمائیاں

    ہائے لوگوں کی کرم فرمائیاں
    تہمتیں، بدنامیاں، رسوائیاں

    زندگی شاید اسی کا نام ہے
    دوریاں، مجبوریاں ، تنہائیاں

    کیا زمانے میں یوں ہی کٹتی ہے رات
    کروٹیں، بے تابیاں، انگڑائیاں

    کیا یہی ہوتی ہے شام انتظار
    آہٹیں، گھبراہٹیں، پرچھائیاں

    میرے دل کی دھڑکنوں میں رہ گئی
    چوڑیاں، موسیقیاں، شہنائیاں

    دیدہ و دانستہ ان کے سامنے
    لغزشیں، ناکامیاں، پسپائیاں

    رہ گئیں اک طفل مکتب کے حضور
    حکمتیں، آگاہیاں، دانائیاں

    زخم دل کے پھر ہرے کرنے لگیں
    بدلیاں، برکھا رتیں، پروائیاں

    کیفؔ، پیدا کر سمندر کی طرح
    وسعتیں، خاموشیاں ، گہرائیاں
    میں نعرہ مستانہ، میں شوخی رندانہ

  • #2
    Wah Nice Sharing..............

    Comment


    • #3
      Thank you so much :-)
      میں نعرہ مستانہ، میں شوخی رندانہ

      Comment


      • #4
        Very nice .

        Comment


      • #5
        khoob
        :(

        Comment


        • #6
          nice sharing

          Comment

          Working...
          X