PDA

View Full Version : kia yeh insaaf hain



chaand_nager
3rd April 2009, 10:16
pegham ky seb dosto ko zoniesh ka salam

main ny aj abi abi ek holaknak dardnak menzer dekha hain aur muje samjh nhe arhi k main kia keron kasyse berdast keron dil ker raha hain k apne jism k he tokery ker don sawat main 17 year ki lerki ko sare aam korey mary ja rahin hain us ki cheekhain mery dimag ki neson ki phar dain g us ki maa jis ko zinda aag laga dyni chaye jo apni beti ka yehon sare aam leta k korey marwa rahi hain mamta kahan gai hain ya insan he nhe wo jo apni beti ki cheekahin b sun nhe pa rahi aur jeb wo massom lerki ihtajaj kerny k liya hath rakhti hain to us ki maa us k hath paker leti hain ek merd ny us ko tangon sy paker rakh ta ky wo ihtajaj b na ker saky kahan gaya ya rub to kahan gaya mery pore wajod main senata chah gaya hain aur loog bygret ben k sara tamasha dakh rahain
main pochna chati hon k ek judge ko bahal kerwany k liya sare log road py nekal aye mager kia koi ahin aysa is zulm k khilaaf awaz uthaye baher neklay .:ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak:: ak::ak:

Masood
3rd April 2009, 10:31
Wa salaam behna...

Yeh btao keh yeh waqeya aap ki aankhon key samney huwa hai ya TV per dikaya geya hai? Ya aap ney kahin sey suna hai?

AbgeenA
3rd April 2009, 11:22
ji ye TV par dikhaya ja raha he or jahan tak saza ka taluk he to ye saza Quran me Surah Noor me he k bad kaar mard or orat ko 100 korey mare jaen or sath me ye bhi he k ghalat ilzam lagane wale ko bhi 80 korey mare jaen...to saza to bilkul mojood he....ab jurm sabit theek hua ya ghalat sabit hua ye pata karna hukaam ka kaam he lekin ap saza ko maghrib ki tarah zalimaana nahi keh sakte....Allah ka hukam to ye bhi he ese mujrim par tars bhi na kia jaey...baki aj kal Islam ko badnaam karne ki mohim khasi kamyaab chal rahi he......is leay sab kuch mad-e-nazar rakhna chaey.
baki usalmanon ko Quran ka tarujma zarur zarur parhna chaey ta k gumrahi se bacha ja sake or Allah ka pegham clear ho kar hmare samene aey:)

Masood
3rd April 2009, 11:52
ji ye TV par dikhaya ja raha he or jahan tak saza ka taluk he to ye saza Quran me Surah Noor me he k bad kaar mard or orat ko 100 korey mare jaen or sath me ye bhi he k ghalat ilzam lagane wale ko bhi 80 korey mare jaen...to saza to bilkul mojood he....ab jurm sabit theek hua ya ghalat sabit hua ye pata karna hukaam ka kaam he lekin ap saza ko maghrib ki tarah zalimaana nahi keh sakte....Allah ka hukam to ye bhi he ese mujrim par tars bhi na kia jaey...baki aj kal Islam ko badnaam karne ki mohim khasi kamyaab chal rahi he......is leay sab kuch mad-e-nazar rakhna chaey.
baki usalmanon ko Quran ka tarujma zarur zarur parhna chaey ta k gumrahi se bacha ja sake or Allah ka pegham clear ho kar hmare samene aey:)

Sab sey pehley aap apney mulk mein ISLAM nafiz to kar lein, phir Quran ki roshni mein sazaein bhi sunena. Jis mulk mein islam naam ki koi shay sirrey sey mojood hi nahin, wahan per aap is tarha key waqeyat sirf Islam ko badnaam karney key kaam aatey hain. Hairat hai keh ham logon ney apney eemano ko kitna gira diya hai. Islam ka kaun sa haq hai jo ham ada kar rahey hain jo is tarha key faisley sunaey jaa rahey hain???????

Aur jo TV channels yeh tamasha dikha ker apney aap ko sahafat mein pesh pesh sabit karney ki koshish kar rahey hain, unko woh barbariyat nazar nahin aati jo hamarey mulk mein aam ho rahi hai???

Aanchal
3rd April 2009, 12:08
ji ye TV par dikhaya ja raha he or jahan tak saza ka taluk he to ye saza Quran me Surah Noor me he k bad kaar mard or orat ko 100 korey mare jaen or sath me ye bhi he k ghalat ilzam lagane wale ko bhi 80 korey mare jaen...to saza to bilkul mojood he....ab jurm sabit theek hua ya ghalat sabit hua ye pata karna hukaam ka kaam he lekin ap saza ko maghrib ki tarah zalimaana nahi keh sakte....Allah ka hukam to ye bhi he ese mujrim par tars bhi na kia jaey...baki aj kal Islam ko badnaam karne ki mohim khasi kamyaab chal rahi he......is leay sab kuch mad-e-nazar rakhna chaey.
baki usalmanon ko Quran ka tarujma zarur zarur parhna chaey ta k gumrahi se bacha ja sake or Allah ka pegham clear ho kar hmare samene aey:)

larki nay jo bhi ghalati ki hoo saza milni chaien jo bhi saboot houn us kay hissab say ....lekan Talaban koon hotay hain saza deenay walay ?
or sarr-i-aam kisi khatoon ko saza deena koon say islam main hai ? or yeh jo video hai is main tareeka deekhoo in Talbaan ka ...

Aanchal
3rd April 2009, 12:14
Sab sey pehley aap apney mulk mein ISLAM nafiz to kar lein, phir Quran ki roshni mein sazaein bhi sunena. Jis mulk mein islam naam ki koi shay sirrey sey mojood hi nahin, wahan per aap is tarha key waqeyat sirf Islam ko badnaam karney key kaam aatey hain. Hairat hai keh ham logon ney apney eemano ko kitna gira diya hai. Islam ka kaun sa haq hai jo ham ada kar rahey hain jo is tarha key faisley sunaey jaa rahey hain???????



Saudia main jo jurayam hotay hian hain un ki saza islamic lihaaz say di jati hai ....or aik waja yeh hai kay vohan ki GOVT logoun ko sari sahulatian diti hai or nizaam bhi aisa hai kay juaryam na kar sakian loog ....lekan is kay bawajood koi jurm karta hai to us bhi pher vohi saza banti hai jo wo deytay hian ....
lekan pakistan main choori ki saza hath katna nahi ban sakti kay hazaar wajoohat nikal aian gee jin ki bina pay chori ki gai .........

pehlay hi bahir kay loog itni batian banatay hain kay pakistan main aurtoun kay sath yeh yeh hota hai ...yeh loog such sabit kar kay deekha rehay hain kay waqai un cheezoun say barh kay hota hai jo batian logoun nay suni hoti hain ...

shahid_naman
3rd April 2009, 12:15
Sab sey pehley aap apney mulk mein ISLAM nafiz to kar lein, phir Quran ki roshni mein sazaein bhi sunena. Jis mulk mein islam naam ki koi shay sirrey sey mojood hi nahin, wahan per aap is tarha key waqeyat sirf Islam ko badnaam karney key kaam aatey hain. Hairat hai keh ham logon ney apney eemano ko kitna gira diya hai. Islam ka kaun sa haq hai jo ham ada kar rahey hain jo is tarha key faisley sunaey jaa rahey hain???????

Aur jo TV channels yeh tamasha dikha ker apney aap ko sahafat mein pesh pesh sabit karney ki koshish kar rahey hain, unko woh barbariyat nazar nahin aati jo hamarey mulk mein aam ho rahi hai???
well masood bhai yeh baat too app na he karain too behter hai k ISLAM nafiz to kar lein sab ko pata hai ka SAWAT main asay wakiyat hotay hain fariq sirf itna hai k es baat TV pey dekhya gaya hai aur aik baat app ko bata doon ka Sawat jasay alakoon main behoot se batain asi hain jo ISLAM ka mutabaq hoti hain esi leya too un ko marna ke kosish ke ja rehi hai....:(

shahid_naman
3rd April 2009, 12:23
ji ye TV par dikhaya ja raha he or jahan tak saza ka taluk he to ye saza Quran me Surah Noor me he k bad kaar mard or orat ko 100 korey mare jaen or sath me ye bhi he k ghalat ilzam lagane wale ko bhi 80 korey mare jaen...to saza to bilkul mojood he....ab jurm sabit theek hua ya ghalat sabit hua ye pata karna hukaam ka kaam he lekin ap saza ko maghrib ki tarah zalimaana nahi keh sakte....Allah ka hukam to ye bhi he ese mujrim par tars bhi na kia jaey...baki aj kal Islam ko badnaam karne ki mohim khasi kamyaab chal rahi he......is leay sab kuch mad-e-nazar rakhna chaey.
baki usalmanon ko Quran ka tarujma zarur zarur parhna chaey ta k gumrahi se bacha ja sake or Allah ka pegham clear ho kar hmare samene aey:)
i am agree with you:thmbup:

aabi2cool
3rd April 2009, 13:07
pegham ky seb dosto ko zoniesh ka salam

main ny aj abi abi ek holaknak dardnak menzer dekha hain aur muje samjh nhe arhi k main kia keron kasyse berdast keron dil ker raha hain k apne jism k he tokery ker don sawat main 17 year ki lerki ko sare aam korey mary ja rahin hain us ki cheekhain mery dimag ki neson ki phar dain g us ki maa jis ko zinda aag laga dyni chaye jo apni beti ka yehon sare aam leta k korey marwa rahi hain mamta mer gai hain ya insan he nhe wo jo apni beti ki cheekahin b sun nhe pa rahi aur jeb wo massom lerki ihtajaj kerny k liya hath rakhti hain to us ki maa us k hath paker leti hain ek merd ny us ko tangon sy paker rakh ta ky wo ihtajaj b na ker saky kahan gaya ya rub to kahan gaya mery pore wajod main senata chah gaya hain aur loog bygret ben k sara tamasha dakh rahain
main pochna chati hon k ek judge ko bahal kerwany k liya sare log road py nekal aye mager kia koi ahin aysa is zulm k khilaaf awaz uthaye baher neklay such main aj mery dil sy yeh dua nekli hain k
allah sawat main azaab laye sare log mer jain kiyon k ayse gandy zalim logo ko jeenay ka koi haq nhe jo zulm ko dkahty to hain mger us ko rokny ki hemt nhe kerty allah berbad ker dy ayse logo ko ameen :ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::a k::ak:

بی بی آپ پہلے یہ تو واضح کریں کہ آپ کو اختلاف سزا پر ہے یا سزا دینے والے پر یا سزا یافتہ کہ لڑکی ہونے پر یا اس کہ محض سترہ سالہ ہونے پر یا سزا کہ طریقہ کار پر آیا آپ کا اصل اعتراض ہے کیا جو آپ اتنا واویلا کر رہی ہیں ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟

Sky angel
3rd April 2009, 13:16
mai ny b abhi kuch der pehly dekha
dekha nai ja raha tha najany wahan log k sy but bany khary thy
insaniat nai rahi in may
us ka jurm itna bara to na tha
uff is kadar jahiliat hai372-scare
wo bechari chilati rahi magar itny behis log thy

chaand_nager
3rd April 2009, 13:24
muje ap jayse aqelmanedh logo sy pori pori yeh he tawaeqo the k muje ayse he ans milyain gy to main ap sebb muslim jo boaht advance ya boaht islamic aur sazaon komaan nay waly bentyhain aj kuch kahna chahti hon
1 pahli baat soreh noor main yeh bata diya gaya k zani merd aur zani ouret ko kore mary jain aur bakol mery mery muhtarm bhai ap k is gonah main maafi ki koi gunjais nhe as u say
ans
muje ek baat batain ap ny pora quran paerha hain ? yakeenen nhe kiyon k ager perha hota to ap ko is ki tafseer b maloom hoti islam main kisi b gonah k liya kisi b gonah k liya
3 bar maafi ka hukam diya gaya
islam main bedkar ourt k liya kaha gaya k 3 adfa usy samjho piyar sy
guse
dant k ya maar k
mager kia ap yeh bata saktain islam ny aur quran pak main yeh kahan likha hion k jao jao apni maa betiyon ko jo ager nasmjhi main koi gonah ker deti han to jao ly jao un sare aammmmmmm ly k jao dunya ko bato k haan dakho yeh humri beti bivi kitne buri hain pher namahrem logo sy kaho ayo logo meri jawab beti ho pakero zammen py ulta letao aur ayo nahmarm sharif zado ayo meri beti ko tangon sy pakero bazon sy pakeron aur ayo islam k maanay walo ayo meri beti per sare aaaaaaaaaam namahram merdon k samnay kore maro kia yhe isalm ny kaha.?
kiay yeh quran pak main likha hain
kia yeh humry pak nabi PBUM ny huamin seekhay hain ?
huamin apne metlub ki sari sazain araaishain to yaad hain mger afsos hum tafser bhol gaye humain yeh too yaad raha k quran pak main 4 sgadiyan kerny ki ijazt hain ager insaf ker sako mger hum yeh tafseer bhaol agye k 4 shadiyan apne ayash nafes k liya nhe kaha tha is liya kah tha k bewao ka sahara beno yateemu k ser py hath pharyon kia yhe kaha gaya islam main k koi merd apne ayash hain apne gandy nafes py qabo nhe rakh sakta to ajye aur shadi ker lain aur kahye main insaaf kero ga apni bivaiyon k dermiyan ? muje itraaj lerki py nhe tum logo py hain jo insan nheya pher apne metlub ka islam bana k bath gaye

aabi2cool
3rd April 2009, 13:30
نوعمر لڑکی کو سرعام کوڑوں کی سزا


عبدالحئی کاکڑ
بی بی سی اردو ڈاٹ کام، پشاور





http://www.pegham.com/images/imported/2009/04/39.jpg یہ سزا سر عام دی گئی



صوبہ سرحد کے ضلع سوات سے پہلی مرتبہ ایک ایسی ویڈیو منظر عام پر آئی ہے جس میں حلیے سے طالبان معلوم ہونے والے افراد ایک لڑکی کو سرعام کوڑوں کی سزا دے رہے ہیں۔تاہم حکومت اور طالبان نے اس خاص واقعہ کی تردید کی ہے تاہم اس بات کی تصدیق کی کہ ماضی میں خواتین کو کوڑوں کی سزائیں دینے کے واقعات پیش آئے ہیں۔
موبائل فون سے بنائی گئی یہ دو منٹ کی ویڈیو اب سرعام دستیاب ہے۔ ویڈیو میں سرخ جوڑے میں ملبوس ایک جوان سال لڑکی کو دکھایا گیا ہے جسے زمین پر الٹا لِٹاکر کوڑے مارے جارہے ہیں۔
ویڈیو میں یہ بھی دکھایا گیا ہے کہ طالبان کے حُلیے میں ایک شخص لڑکی کو پشت پر کوڑے برسارہا ہے جبکہ ایک شخص اس کے پیروں اور دوسرے نے جسم کے اوپر کے حصے کو دبوچا ہوا ہے۔ اس موقع پر درجنوں افراد دائرے میں کھڑے اس منظر کو دیکھ رہے ہیں۔
سزا دینے والے افراد آپس میں پشتو زبان میں بات کرتے ہیں اور لڑکی چیختی چلاتی پشتو میں فریاد کرتی ہے کہ میرے باپ کا توبہ ، میرے دادا کا توبہ آئندہ ایسا نہیں کرونگی۔ وہ شدت درد سے بار بار التجا کرتی ہے کہ خدا کے لیے کچھ صبر کرو مگر مارنے والا شخص کہتا ہے کہ تم نے کہا تھا مجھے ماردو مگر اب تو میرے پاس چھری بھی نہیں ہے۔
پندرہ سے زائد کوڑے مارنے کے بعد وہ لوگ لڑکی کو چھوڑ دیتے ہیں اور اٹھتے ہی لڑکی شٹل کاک برقعہ میں ملبوس نظر آتی ہے۔ اس وقت ان میں سے بڑی داڑھی والا ایک شخص اس سے قریب واقع ایک کمرے میں لے جاتا ہے۔ چیخ و پکار اور باتوں سے وہ تقریباً بارہ سے سترہ سال کے درمیان کی عمر کی معلوم ہوتی ہے۔
http://www.pegham.com/images/imported/2009/04/39.jpg


اس سلسلے میں دس کے قریب مقامی لوگوں سے رابطہ کیا گیا تو کافی مشکلات کے بعد انہوں نے صرف واقعہ کی تصدیق کی اور کہا کہ واقعہ سوات کی تحصیل کبل کے کالا کلی میں پیش آیا ہے۔ مقامی لوگ بظاہر خوف کی وجہ سے مزید معلومات دینے سے انکار کررہے ہیں۔ یہ بھی معلوم نہیں ہوسکا کہ لڑکی کون ہے اور انہیں کس بات پر سزا دی جارہی ہے۔
طالبان ترجمان مسلم خان سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ خواتین کو کوڑے مارنے کی سزا کا واقعہ حالیہ دنوں میں پیش نہیں آیا ہے۔ انہوں نے اس خاص واقعہ سے بھی لاعلمی کا اظہار کیا البتہ انہوں نے اس بات کی تصدیق کی کہ امن معاہدے سے قبل مولانا فضل اللہ کے حکم پر خواتین کو سزائیں دی جاتی تھیں۔
انہوں نے کہا کہ ماضی میں خواتین کو سرعام سزائیں نہیں دی گئیں بلکہ مولانا فضل اللہ نے حکم دیا تھا کہ خواتین کو جب بھی سزا دینی ہو تو انہیں کمرے کے اندر کوڑے مارے جائیں۔ مسلم خان کے بقول انہوں نے ماضی میں ایسی خواتین کو سزائیں دی ہے جو بقول ان کے گھر سے بھاگ گئی تھیں یا پھر انہیں مبینہ طور پر ' غیر اخلاقی حرکات' میں ملوث پایا گیا تھا۔
ملاکنڈ ڈویژن کے کمشنر سید محمد جاوید سے بھی جب اس بابت رابطہ کیا گیا تو انہوں نے بھی اس طالبان ترجمان مسلم خان کے مؤقف کی تائید کی اور کہا ممکن ہےماضی میں خواتین کو ایسی سزائیں دی گئی ہوں۔ان کے بقول امن معاہدے کے بعد طالبان نے اپنی نجی عدالتیں ختم کردی ہیں۔
ابھی تک یہ معلوم نہیں ہوسکا ہے کہ آیا یہ واقعہ حکومت اور طالبان کے درمیان ہونے والے امن معاہدے سے پہلے یا بعد میں پیش آیا ہے لیکن یہ اس لحاظ بہت ہی سنگین واقعہ ہے کہ سوات میں ایک خاتون کو سرعام کوڑوں کی سزادی جارہی ہے۔اس سے قبل طالبان نے کئی دفعہ ان مرد حضرات کو لوگوں کے سامنے کوڑوں کی سزائیں دی تھیں جن پر مختلف نوعیت کے الزامات لگائے گئے تھے۔
بشکریہ بی بی سی اردو (http://www.bbc.co.uk/urdu/pakistan/2009/04/090402_taliban_girl_flogging_fz.shtml)

chaand_nager
3rd April 2009, 13:34
well masood bhai yeh baat too app na he karain too behter hai k ISLAM nafiz to kar lein sab ko pata hai ka SAWAT main asay wakiyat hotay hain fariq sirf itna hai k es baat TV pey dekhya gaya hai aur aik baat app ko bata doon ka Sawat jasay alakoon main behoot se batain asi hain jo ISLAM ka mutabaq hoti hain esi leya too un ko marna ke kosish ke ja rehi hai....:(



oh really ALLAH KA AZAAB HAIN UN LOGO PY KAHBI YEH SOUCHA HAIN
aur han ap ny konsa quran pak perha hai yeh konsa islam seekh liya hain jo sare aam jawan lerki ko namahram sy korey lagwaye ?
nabi pak PBUM k zamany main kitne jhaliyt the even lerkiyon ko zinda dafen ker diay jata tha did u think that k aysa koi kam unho ny ijazt di ho g ?
ap k liay zarori hain pahly quran pak ki pori tafseer perhain pher baat kertain hain main hyran hain kitne assani sy ap logo ny kah diya k islam main jaiz hain o kuda k bendon ALLAH PAK KA HUKAM HAIN K AGER KISI MAIN KOI BURAI DEKHON TO US KA CHERCHA MET KERO BELKAY USY DHANP LO QYAMET K DIN WERNA TUMHRE AIBON KO SARE AAM PIASH KIA JAYE GA PHER YEH KAYSE SOCH LIYA K ALLAH PAK JO INSAN KI INSAN SY HAYA KERNY KO KAHTA HAIN WO YEH HUKM DY GA K SARE AAM GHERON KI IZEETON KO BHAER LAO NAMHARM LOGO SY KORE PERWAON YEH KAHAN LIKHA HAIN ZRA MUEJ BATAIN GAY ? AGER US BACHI NY GELTI KI TO US K PARENTS KA KAMK USY DANATIN USY MARAIN SMAJHAIN MAGER GHER K ANDER YEH KOI ISLAM NHE SUNA TUM NAY KOI ISLAM NHE YEH K BAHER BETIYON KO SARE AAM MERDON K SAMNY ULTA LETA K MARA JAYE SMAJHY AP LOG KUDA HE HAFIZ HAIN TUM LOGO KA

chaand_nager
3rd April 2009, 13:38
نوعمر لڑکی کو سرعام کوڑوں کی سزا



عبدالحئی کاکڑ
بی بی سی اردو ڈاٹ کام، پشاور





http://www.pegham.com/images/imported/2009/04/39.jpg یہ سزا سر عام دی گئی



صوبہ سرحد کے ضلع سوات سے پہلی مرتبہ ایک ایسی ویڈیو منظر عام پر آئی ہے جس میں حلیے سے طالبان معلوم ہونے والے افراد ایک لڑکی کو سرعام کوڑوں کی سزا دے رہے ہیں۔تاہم حکومت اور طالبان نے اس خاص واقعہ کی تردید کی ہے تاہم اس بات کی تصدیق کی کہ ماضی میں خواتین کو کوڑوں کی سزائیں دینے کے واقعات پیش آئے ہیں۔
موبائل فون سے بنائی گئی یہ دو منٹ کی ویڈیو اب سرعام دستیاب ہے۔ ویڈیو میں سرخ جوڑے میں ملبوس ایک جوان سال لڑکی کو دکھایا گیا ہے جسے زمین پر الٹا لِٹاکر کوڑے مارے جارہے ہیں۔
ویڈیو میں یہ بھی دکھایا گیا ہے کہ طالبان کے حُلیے میں ایک شخص لڑکی کو پشت پر کوڑے برسارہا ہے جبکہ ایک شخص اس کے پیروں اور دوسرے نے جسم کے اوپر کے حصے کو دبوچا ہوا ہے۔ اس موقع پر درجنوں افراد دائرے میں کھڑے اس منظر کو دیکھ رہے ہیں۔
سزا دینے والے افراد آپس میں پشتو زبان میں بات کرتے ہیں اور لڑکی چیختی چلاتی پشتو میں فریاد کرتی ہے کہ میرے باپ کا توبہ ، میرے دادا کا توبہ آئندہ ایسا نہیں کرونگی۔ وہ شدت درد سے بار بار التجا کرتی ہے کہ خدا کے لیے کچھ صبر کرو مگر مارنے والا شخص کہتا ہے کہ تم نے کہا تھا مجھے ماردو مگر اب تو میرے پاس چھری بھی نہیں ہے۔
پندرہ سے زائد کوڑے مارنے کے بعد وہ لوگ لڑکی کو چھوڑ دیتے ہیں اور اٹھتے ہی لڑکی شٹل کاک برقعہ میں ملبوس نظر آتی ہے۔ اس وقت ان میں سے بڑی داڑھی والا ایک شخص اس سے قریب واقع ایک کمرے میں لے جاتا ہے۔ چیخ و پکار اور باتوں سے وہ تقریباً بارہ سے سترہ سال کے درمیان کی عمر کی معلوم ہوتی ہے۔
http://www.pegham.com/images/imported/2009/04/39.jpg


اس سلسلے میں دس کے قریب مقامی لوگوں سے رابطہ کیا گیا تو کافی مشکلات کے بعد انہوں نے صرف واقعہ کی تصدیق کی اور کہا کہ واقعہ سوات کی تحصیل کبل کے کالا کلی میں پیش آیا ہے۔ مقامی لوگ بظاہر خوف کی وجہ سے مزید معلومات دینے سے انکار کررہے ہیں۔ یہ بھی معلوم نہیں ہوسکا کہ لڑکی کون ہے اور انہیں کس بات پر سزا دی جارہی ہے۔
طالبان ترجمان مسلم خان سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ خواتین کو کوڑے مارنے کی سزا کا واقعہ حالیہ دنوں میں پیش نہیں آیا ہے۔ انہوں نے اس خاص واقعہ سے بھی لاعلمی کا اظہار کیا البتہ انہوں نے اس بات کی تصدیق کی کہ امن معاہدے سے قبل مولانا فضل اللہ کے حکم پر خواتین کو سزائیں دی جاتی تھیں۔
انہوں نے کہا کہ ماضی میں خواتین کو سرعام سزائیں نہیں دی گئیں بلکہ مولانا فضل اللہ نے حکم دیا تھا کہ خواتین کو جب بھی سزا دینی ہو تو انہیں کمرے کے اندر کوڑے مارے جائیں۔ مسلم خان کے بقول انہوں نے ماضی میں ایسی خواتین کو سزائیں دی ہے جو بقول ان کے گھر سے بھاگ گئی تھیں یا پھر انہیں مبینہ طور پر ' غیر اخلاقی حرکات' میں ملوث پایا گیا تھا۔
ملاکنڈ ڈویژن کے کمشنر سید محمد جاوید سے بھی جب اس بابت رابطہ کیا گیا تو انہوں نے بھی اس طالبان ترجمان مسلم خان کے مؤقف کی تائید کی اور کہا ممکن ہےماضی میں خواتین کو ایسی سزائیں دی گئی ہوں۔ان کے بقول امن معاہدے کے بعد طالبان نے اپنی نجی عدالتیں ختم کردی ہیں۔
ابھی تک یہ معلوم نہیں ہوسکا ہے کہ آیا یہ واقعہ حکومت اور طالبان کے درمیان ہونے والے امن معاہدے سے پہلے یا بعد میں پیش آیا ہے لیکن یہ اس لحاظ بہت ہی سنگین واقعہ ہے کہ سوات میں ایک خاتون کو سرعام کوڑوں کی سزادی جارہی ہے۔اس سے قبل طالبان نے کئی دفعہ ان مرد حضرات کو لوگوں کے سامنے کوڑوں کی سزائیں دی تھیں جن پر مختلف نوعیت کے الزامات لگائے گئے تھے۔

بشکریہ بی بی سی اردو (http://www.bbc.co.uk/urdu/pakistan/2009/04/090402_taliban_girl_flogging_fz.shtml)



zulam zulam hota hain bhai chaye aj ho ya kal ho rahy ga pher b zulam haan yeh such hain ka ayse wakiyaat
pahly b hoty rahy farq sirf itna k un ko menzer -e- aam per nhe laya gya .

aabi2cool
3rd April 2009, 13:41
muje ap jayse aqelmanedh logo sy pori pori yeh he tawaeqo the k muje ayse he ans milyain gy to main ap sebb muslim jo boaht advance ya boaht islamic aur sazaon komaan nay waly bentyhain aj kuch kahna chahti hon
1 pahli baat soreh noor main yeh bata diya gaya k zani merd aur zani ouret ko kore mary jain aur bakol mery mery muhtarm bhai ap k is gonah main maafi ki koi gunjais nhe as u say
ans
muje ek baat batain ap ny pora quran paerha hain ? Yakeenen nhe kiyon k ager perha hota to ap ko is ki tafseer b maloom hoti islam main kisi b gonah k liya kisi b gonah k liya
3 bar maafi ka hukam diya gaya
islam main bedkar ourt k liya kaha gaya k 3 adfa usy samjho piyar sy
guse
dant k ya maar k
mager kia ap yeh bata saktain islam ny aur quran pak main yeh kahan likha hion k jao jao apni maa betiyon ko jo ager nasmjhi main koi gonah ker deti han to jao ly jao un sare aammmmmmm ly k jao dunya ko bato k haan dakho yeh humri beti bivi kitne buri hain pher namahrem logo sy kaho ayo logo meri jawab beti ho pakero zammen py ulta letao aur ayo nahmarm sharif zado ayo meri beti ko tangon sy pakero bazon sy pakeron aur ayo islam k maanay walo ayo meri beti per sare aaaaaaaaaam namahram merdon k samnay kore maro kia yhe isalm ny kaha.?
Kiay yeh quran pak main likha hain
kia yeh humry pak nabi pbum ny huamin seekhay hain ?
Huamin apne metlub ki sari sazain araaishain to yaad hain mger afsos hum tafser bhol gaye humain yeh too yaad raha k quran pak main 4 sgadiyan kerny ki ijazt hain ager insaf ker sako mger hum yeh tafseer bhaol agye k 4 shadiyan apne ayash nafes k liya nhe kaha tha is liya kah tha k bewao ka sahara beno yateemu k ser py hath pharyon kia yhe kaha gaya islam main k koi merd apne ayash hain apne gandy nafes py qabo nhe rakh sakta to ajye aur shadi ker lain aur kahye main insaaf kero ga apni bivaiyon k dermiyan ? Muje itraaj lerki py nhe tum logo py hain jo insan nheya pher apne metlub ka islam bana k bath gaye

بی بی آپ سے عرض کی تھی کہ*آپ اپنے اعتراض کی اصل کو واضح کریں نہ کہ آپ سے یہ عرض کی تھی کہ* آپ میرے دین کہ فہم کا امتحان لینے بیٹھ جائیں ۔ ۔ ۔ ۔ جاہں تک بات ہے مذکورہ ویڈیو والے واقعہ کی تو میں نے اس کی حمایت ہرگز نہیں کی اور نہ ہی کرتا ہوں کہ میں ان نام نہاد طالبان جو اصل میں ظالمان اور امریکہ کہ پٹھو ہیں کہ سخت مخالف ہوں جنکی وجہ سے ساری دنیا میں اسلام بدنام اور پاکستان تنہا ہورہا ہے ۔ ۔ ۔ آپ سے عرض ہے کہ پہلے کسی کہ بھی ریمارکس کو سمجھنے کہ لیاقت پیدا کریں* پھر سامنے والے پر چڑ دوڑیں ابھی اگر میں آپ کی لاگائی ہوئی اس پوسٹ کا پوسٹ مارٹم کروں تو آپ کو سخت خفت کا سامنا کرنا پڑے گا کہ جو جو باتیں نے آپ نے قرآن کہ نام سے فرمائیں ہیں ان کا قرآن تو کای اسلام سے بھی سے بھی کوئی دور کا واسطہ نہیں ۔ ۔ ۔ ۔۔ اس لڑکی کہ ساتھ جو کچھ ہوا وہ سارا واقعہ میں نے آپکی لگائی ہوئی پوسٹ کہ بعد انٹرنیٹ پر سرچ کرکے دیکھا ۔ ۔۔ ۔ سب سے پہلی بات تو یہ ہے کہ اسلام میں اگر کسی (غیر شادی شدہ )مرد اور عورت کا زانی ہونا ثابت ہوجائے چارہ گواہون کی موجودگی میں تو ان پر حد جاری کی جائے گی 100 کوڑے اور اگر الزام لگانے والا چار گواہ پیش نہ کرسکے تو پھر خود اس پر حد قذف جاری کی جائے گی جو کہ 80 کوڑے ہے اور اس کہ اسکہ ساتھ ساتھ اسکی گواہی تمام ضروری دینی امور میں تاعمر ساقط ہوجائے گی ۔ ۔ ۔۔ اور پھر اس کہ بعد اصل یہ ہے کہ عورت کو سزا دینے میں اختلاف ہے کہ آیا وہ سر عام دی جائے گی یا چار دیواری کہ اندر ۔ ۔ ۔پھر یہ کہ اس سزا کو دینے کا اختیار اسلامی ریاست کو ہوگا نہ کہ کسی نام نہاد طالبانی گروہ کو ۔ ۔ اس کہ علاوہ بھی کئی دیگر پہلو ہیں یہی وجہ تھی کہ میں نے آپ سے عرض کی تھی کہ آپ اپنے اعتراضات کو مطلقا نہ رکھیں کیونکہ اگر یہ تمام شرائط پائی جائیں تو پھر مزکورہ سزا اسلامی سزا کہلائے گی اور آپ کا اعتراض اسلام پر اعتراض ہوگا ۔ ۔ امید کرتا ہوں وضاحت ہوگئی ہوگی ۔ ۔ ۔

chaand_nager
3rd April 2009, 13:54
بی بی آپ سے عرض کی تھی کہ*آپ اپنے اعتراض کی اصل کو واضح کریں نہ کہ آپ سے یہ عرض کی تھی کہ* آپ میرے دین کہ فہم کا امتحان لینے بیٹھ جائیں ۔ ۔ ۔ ۔ جاہں تک بات ہے مذکورہ ویڈیو والے واقعہ کی تو میں نے اس کی حمایت ہرگز نہیں کی اور نہ ہی کرتا ہوں کہ میں ان نام نہاد طالبان جو اصل میں ظالمان اور امریکہ کہ پٹھو ہیں کہ سخت مخالف ہوں جنکی وجہ سے ساری دنیا میں اسلام بدنام اور پاکستان تنہا ہورہا ہے ۔ ۔ ۔ آپ سے عرض ہے کہ پہلے کسی کہ بھی ریمارکس کو سمجھنے کہ لیاقت پیدا کریں* پھر سامنے والے پر چڑ دوڑیں ابھی اگر میں آپ کی لاگائی ہوئی اس پوسٹ کا پوسٹ مارٹم کروں تو آپ کو سخت خفت کا سامنا کرنا پڑے گا کہ جو جو باتیں نے آپ نے قرآن کہ نام سے فرمائیں ہیں ان کا قرآن تو کای اسلام سے بھی سے بھی کوئی دور کا واسطہ نہیں ۔ ۔ ۔ ۔۔ اس لڑکی کہ ساتھ جو کچھ ہوا وہ سارا واقعہ میں نے آپکی لگائی ہوئی پوسٹ کہ بعد انٹرنیٹ پر سرچ کرکے دیکھا ۔ ۔۔ ۔ سب سے پہلی بات تو یہ ہے کہ اسلام میں اگر کسی (غیر شادی شدہ )مرد اور عورت کا زانی ہونا ثابت ہوجائے چارہ گواہون کی موجودگی میں تو ان پر حد جاری کی جائے گی 100 کوڑے اور اگر الزام لگانے والا چار گواہ پیش نہ کرسکے تو پھر خود اس پر حد قذف جاری کی جائے گی جو کہ 80 کوڑے ہے اور اس کہ اسکہ ساتھ ساتھ اسکی گواہی تمام ضروری دینی امور میں تاعمر ساقط ہوجائے گی ۔ ۔ ۔۔ اور پھر اس کہ بعد اصل یہ ہے کہ عورت کو سزا دینے میں اختلاف ہے کہ آیا وہ سر عام دی جائے گی یا چار دیواری کہ اندر ۔ ۔ ۔پھر یہ کہ اس سزا کو دینے کا اختیار اسلامی ریاست کو ہوگا نہ کہ کسی نام نہاد طالبانی گروہ کو ۔ ۔ اس کہ علاوہ بھی کئی دیگر پہلو ہیں یہی وجہ تھی کہ میں نے آپ سے عرض کی تھی کہ آپ اپنے اعتراضات کو مطلقا نہ رکھیں کیونکہ اگر یہ تمام شرائط پائی جائیں تو پھر مزکورہ سزا اسلامی سزا کہلائے گی اور آپ کا اعتراض اسلام پر اعتراض ہوگا ۔ ۔ امید کرتا ہوں وضاحت ہوگئی ہوگی ۔ ۔ ۔



bhai main ny ap ny yeh arz lo the k muje saza k tareeka kar per itraaz hain doseri baat k main maan leti hon yhe baat k 100 kore ka hukam hain mger
pher wo he baat ajti hain bhai mery quran pak ki tafseer to per lain ap log just lafzi terujama ker k sabet ker rahin ap log ?
Islam rahemdili ka hukam deta hain
islam main ager koi apne gonah ki tuba ker lay to kia teb b saza di jati hain ? Ap log samjh nhe rhain ap is vedio ki baat choor dain k wo galt ahin sahe hain main ek sepratelly baat kerna chah rahi hon k kia sahe hain ap ny yeh nhe perha heb
chori k hukam per hath kaytne ki sazza di gai to nabi pak pbum k pass jeb yeh case aya to unho ny b fermy a k uej boaht dokh haon aur koshish kia keron k ayse cases apes main hal ker liay keron insaf k sath m,ager
is k tafsser yeh hain k
ager hukmanan apni awam k sath ascha salok kerty ahin un ki zindagiyon ka kiyal rakhtain ta ky chori ki zarort na pais aye aur us k bad b koi chori kery teb saz di jaye na k gher main kahnay ko nhe bhook sy koi mer jain aur hukaman apnei he aysahiyon main lgy hoon aur koi majbor ko paker lya jaye aur hath kat diyain jain kia yeh sahe hain?waqet aur halat ka jiaza laytain howay saza di jaye ager koi zani maer ya zani ouret gonah sy tuba kerti hain to saza ka akoi jawaz nhe benta kiyon k ager aysa na hota to islam main qatel ki m,afi k lia qasas na rakha jata kiyon qatil to zana sy b bhera huram hain pori insaniyt ko qateil kia jis ny ek insa ka khon kia us ki b maafi ahin islam mian ager tuba ki ajye to pher ap kayse kah rahain hain k bus pata lagy koi galt kam hai to foren 100 kore maar do allah allah kahir sela yeh baat hoi an pher to maaf he nhe kerna cahye pher to koi gunajiash he nhe honi chaye mafi ka word tak kahtm ho jana chaye

chaand_nager
3rd April 2009, 14:01
بی بی آپ سے عرض کی تھی کہ*آپ اپنے اعتراض کی اصل کو واضح کریں نہ کہ آپ سے یہ عرض کی تھی کہ* آپ میرے دین کہ فہم کا امتحان لینے بیٹھ جائیں ۔ ۔ ۔ ۔ جاہں تک بات ہے مذکورہ ویڈیو والے واقعہ کی تو میں نے اس کی حمایت ہرگز نہیں کی اور نہ ہی کرتا ہوں کہ میں ان نام نہاد طالبان جو اصل میں ظالمان اور امریکہ کہ پٹھو ہیں کہ سخت مخالف ہوں جنکی وجہ سے ساری دنیا میں اسلام بدنام اور پاکستان تنہا ہورہا ہے ۔ ۔ ۔ آپ سے عرض ہے کہ پہلے کسی کہ بھی ریمارکس کو سمجھنے کہ لیاقت پیدا کریں* پھر سامنے والے پر چڑ دوڑیں ابھی اگر میں آپ کی لاگائی ہوئی اس پوسٹ کا پوسٹ مارٹم کروں تو آپ کو سخت خفت کا سامنا کرنا پڑے گا کہ جو جو باتیں نے آپ نے قرآن کہ نام سے فرمائیں ہیں ان کا قرآن تو کای اسلام سے بھی سے بھی کوئی دور کا واسطہ نہیں ۔ ۔ ۔ ۔۔ اس لڑکی کہ ساتھ جو کچھ ہوا وہ سارا واقعہ میں نے آپکی لگائی ہوئی پوسٹ کہ بعد انٹرنیٹ پر سرچ کرکے دیکھا ۔ ۔۔ ۔ سب سے پہلی بات تو یہ ہے کہ اسلام میں اگر کسی (غیر شادی شدہ )مرد اور عورت کا زانی ہونا ثابت ہوجائے چارہ گواہون کی موجودگی میں تو ان پر حد جاری کی جائے گی 100 کوڑے اور اگر الزام لگانے والا چار گواہ پیش نہ کرسکے تو پھر خود اس پر حد قذف جاری کی جائے گی جو کہ 80 کوڑے ہے اور اس کہ اسکہ ساتھ ساتھ اسکی گواہی تمام ضروری دینی امور میں تاعمر ساقط ہوجائے گی ۔ ۔ ۔۔ اور پھر اس کہ بعد اصل یہ ہے کہ عورت کو سزا دینے میں اختلاف ہے کہ آیا وہ سر عام دی جائے گی یا چار دیواری کہ اندر ۔ ۔ ۔پھر یہ کہ اس سزا کو دینے کا اختیار اسلامی ریاست کو ہوگا نہ کہ کسی نام نہاد طالبانی گروہ کو ۔ ۔ اس کہ علاوہ بھی کئی دیگر پہلو ہیں یہی وجہ تھی کہ میں نے آپ سے عرض کی تھی کہ آپ اپنے اعتراضات کو مطلقا نہ رکھیں کیونکہ اگر یہ تمام شرائط پائی جائیں تو پھر مزکورہ سزا اسلامی سزا کہلائے گی اور آپ کا اعتراض اسلام پر اعتراض ہوگا ۔ ۔ امید کرتا ہوں وضاحت ہوگئی ہوگی ۔ ۔ ۔



aur han muje us cheez per ya us baat per kabhi khifet nhe hoti jis ka mera shaour aur mera zameer aur mera dil mutmain ho yeh kahin nhe hain k ager kisi ko gonah kert howay dekh lo paker k ly jao aur kore maane lag jao i samjh tafseer ka main is liya bar bar kah rahi hon pherhin jo jo batain main ny ki hain bakol ap k islam main nhe hain to bhai mery zera ek bar bus ek bar quran pak ki poriiii tafseer perain terjuma to perha he ho ga ap nay

chaand_nager
3rd April 2009, 14:14
,main yhe nhe kahti k gonah per saza na di jaye mager bhai ager tuba ker le jaye teb saza nhe dyni chaye ? 100 korey teb marny chaye jeb zani merd aur zani ouret gonah sy baaz na aye ya tuba na kery aur jahan tk us lekri ka taluk to us ki umer 17 year hain jo bohat he emature age hoti hain bahter yeh hain k us py aysa zulm kerny ki bajye maa baap gher main us ko dnatin marian mger isterhan zulm na kerian

aabi2cool
3rd April 2009, 14:28
aur han muje us cheez per ya us baat per kabhi khifet nhe hoti jis ka mera shaour aur mera zameer aur mera dil mutmain ho yeh kahin nhe hain k ager kisi ko gonah kert howay dekh lo paker k ly jao aur kore maane lag jao i samjh tafseer ka main is liya bar bar kah rahi hon pherhin jo jo batain main ny ki hain bakol ap k islam main nhe hain to bhai mery zera ek bar bus ek bar quran pak ki poriiii tafseer perain terjuma to perha he ho ga ap nay


pahli baat soreh noor main yeh bata diya gaya k zani merd aur zani ouret ko kore mary jain aur bakol mery mery muhtarm bhai ap k is gonah main maafi ki koi gunjais nhe as u say
ans
muje ek baat batain ap ny pora quran paerha hain ? Yakeenen nhe kiyon k ager perha hota to ap ko is ki tafseer b maloom hoti islam main kisi b gonah k liya kisi b gonah k liya
3 bar maafi ka hukam diya gaya
islam main bedkar ourt k liya kaha gaya k 3 adfa usy samjho piyar sy
guse
dant k ya maar k
?


تو گویا آپ نے جو کچھ فرمایا وہ تفسیر کی روشنی میں تھا کیا میں جان سکتا ہوں کہ ہم نے آپکہ جن الفاظ کو بڑا کرکے سرخ رنگ میں نمایاں کیا ہے وہ الفاظ کس تفسیر سے لیے گئے ہیں ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟'؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟'

chaand_nager
3rd April 2009, 14:38
تو گویا آپ نے جو کچھ فرمایا وہ تفسیر کی روشنی میں تھا کیا میں جان سکتا ہوں کہ ہم نے آپکہ جن الفاظ کو بڑا کرکے سرخ رنگ میں نمایاں کیا ہے وہ الفاظ کس تفسیر سے لیے گئے ہیں ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟'؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟'

bhai main ny koi red rang use nhe kia ALLAH JANTA HAIN main ny jeb post kia tha to koi b rang use nhe kia tha lakin jeb port kai to wored rang tha nechay pata nhe kiyon mery shyed nouse k ringer ko use kerny sy icons open ho rahain hain colours k aur jo baat main ny kahi main yhe nhe kahti k quran pak ki pori tafseer hain haan kiyon k main hafiza nhe hon jo lafz ba lafz yaad keron aur jahn tak mafii ki baat to abi abi main ny soreh noor main perha hain us main msaza ka hukam diya gaya mager us k sath sath jhoty ilzam lagny walo ki tuba aur gonah kerny walo ki tuba ko b qabol kia gya hain k ALLAH RAHEEM O KAREEM HAIN main ny ap sy bola na k ager gonha kia gay hain to saza us sort main di jaye jeb tuba na ki aur ager tuba na kerny walo ko saz deni he hain khas toor per kisi aouret ko to kam sy kam aysa nhe di jni yeh yeh main ny quran pak main kahin nhe perha k asye saza di jaye ap ny pher hain to muje b bata dain main bus itna janti hon k ALLAH RAB-UL-IZET BOHAT BOAHT MAHRBAN HAIN TUBA KENRY WALY KI ZAROR SUNTA HAIN .main is baat sy bilkol inkaar nhe kerti k islam main 100 kore marny ka hukam diya gaya byshuk ta ky dobra koi gonah na kiya haye na ho saky mger bhai halat wakiyat ko dakh ker saza deni chaye na? yehon sare aam ek jawan lerki ko merdon sy kore merwana yeh to islam nhe kha ager kha hain to batain muje?bus itna kah sakti hon k ALLAH HUM SEB K GONAHON KO MAAF KERY AUR SE KO ZALUM SY GONAH SY MAHFOOZ RAKHY

aabi2cool
3rd April 2009, 14:45
,main yhe nhe kahti k gonah per saza na di jaye mager bhai ager tuba ker le jaye teb saza nhe dyni chaye ? 100 korey teb marny chaye jeb zani merd aur zani ouret gonah sy baaz na aye ya tuba na kery aur jahan tk us lekri ka taluk to us ki umer 17 year hain jo bohat he emature age hoti hain bahter yeh hain k us py aysa zulm kerny ki bajye maa baap gher main us ko dnatin marian mger isterhan zulm na kerian

محترمہ معاف کیجیئے گا آپ کو اسلامی شرعی حدود کا رتی برابر بھی علم نہیں ۔ ۔ جو آپکے منہ میں آرہا ہے آپ وہ کہے چلی جارہی ہیں اور اس پر نام اسلام قرآن اور تفسیر کا رکھ رہی ہیں ۔ ۔ ۔
ویڈیو والے مسئلہ میں ہم اپنا مؤقف صاف ظاہر کرچکے کہ اگر اس لڑکی پر اسلامی حدود و قیود کہ مطابق جرم ثابت بھی ہوجاتا تو تب بھی وہ طالبان اس کو سزا دینے کہ مجاز نہ تھے کہ اسلام نے یہ اتھارٹی ریاست کو بخشی ہے رہ گیا لڑکی کہ بالغ و نابالغ ہونے کا مسئلہ تو
متفقہ اسلامی قانون کہ مطابق 12 سال کی لڑکی اور لڑکا بلوغت میں شمار کیے جاتے ہیں مگر تاہم اس مسئلہ یعنی کہ بلوغت کہ تعین میں جدید قواعد کو مد نظر رکھتے ہوئے مزید اصلاحات کی جاسکتی ہیں اور جہان تک اسلامی حدود کا تعلق ہے تو وہ توبہ کرنے یا معافی مانگنے سے ساقط نہیں ہوتی جب تک کہ ان کو جاری نہ کردیا جائے آپ سے گزارش ہے کہ آپ دوسروں کو قرآن فہمی کا طعنہ دینے کی بجائے خود فقط قرآن کا ہی مطالعہ فرمالیں تفسیر تو بڑے دور کی بات ہے ۔ ۔ ۔ ۔ ؟

aabi2cool
3rd April 2009, 14:50
bhai main ny koi red rang use nhe kia allah janta hain main ny jeb post kia tha to koi b rang use nhe kia tha lakin jeb port kai to wored rang tha nechay pata nhe kiyon mery shyed nouse k ringer ko use kerny sy icons open ho rahain hain colours k aur jo baat main ny kahi main yhe nhe kahti k quran pak ki pori tafseer hain haan kiyon k main hafiza nhe hon jo lafz ba lafz yaad keron aur jahn tak mafii ki baat to abi abi main ny soreh noor main perha hain us main msaza ka hukam diya gaya mager us k sath sath jhoty ilzam lagny walo ki tuba aur gonah kerny walo ki tuba ko b qabol kia gya hain k allah raheem o kareem hain main ny ap sy bola na k ager gonha kia gay hain to saza us sort main di jaye jeb tuba na ki aur ager tuba na kerny walo ko saz deni he hain khas toor per kisi aouret ko to kam sy kam aysa nhe di jni yeh yeh main ny quran pak main kahin nhe perha k asye saza di jaye ap ny pher hain to muje b bata dain main bus itna janti hon k allah rab-ul-izet bohat boaht mahrban hain tuba kenry waly ki zaror sunta hain .main is baat sy bilkol inkaar nhe kerti k islam main 100 kore marny ka hukam diya gaya byshuk ta ky dobra koi gonah na kiya haye na ho saky mger bhai halat wakiyat ko dakh ker saza deni chaye na? Yehon sare aam ek jawan lerki ko merdon sy kore merwana yeh to islam nhe kha ager kha hain to batain muje?bus itna kah sakti hon k allah hum seb k gonahon ko maaf kery aur se ko zalum sy gonah sy mahfooz rakhy

لاحول ولا قوۃ بلکہ انا للہ وانا الیہ راجعون

AbgeenA
3rd April 2009, 14:51
Sab sey pehley aap apney mulk mein ISLAM nafiz to kar lein, phir Quran ki roshni mein sazaein bhi sunena. Jis mulk mein islam naam ki koi shay sirrey sey mojood hi nahin, wahan per aap is tarha key waqeyat sirf Islam ko badnaam karney key kaam aatey hain. Hairat hai keh ham logon ney apney eemano ko kitna gira diya hai. Islam ka kaun sa haq hai jo ham ada kar rahey hain jo is tarha key faisley sunaey jaa rahey hain???????

Aur jo TV channels yeh tamasha dikha ker apney aap ko sahafat mein pesh pesh sabit karney ki koshish kar rahey hain, unko woh barbariyat nazar nahin aati jo hamarey mulk mein aam ho rahi hai???

ap to mujhe mere mulk....mere mulk me islam..ke tane dene lage:)....me ne kahin bhi nahi kaha k ye wakia theek he....yakinan is me bohat se pehloo hen jin par sawal uthaya ja sakta he...govt ka kaam he is par tehkeek kare lekin me serf ye btane ki koshish ki k ye saza bilkul bar haq he.....log to saza par tankeed kar rahe hen to Allah k wazeyah hukam ko tankeed ka nishana bana rahe hen......jo aik ghalat baat he....baki ye video kitni sachi he..kab ki he....is ko is tarah bana kar logon me phelana ka maksad kia he?ye sab bhi jan'ne ki zarurat he or is ko is tarah phela kar kon kia faeda hasil kar raha he ye bhi made nazar rehna chaey....Allah ham sab par rehem farmaey.ameen

chaand_nager
3rd April 2009, 14:54
محترمہ معاف کیجیئے گا آپ کو اسلامی شرعی حدود کا رتی برابر بھی علم نہیں ۔ ۔ جو آپکے منہ میں آرہا ہے آپ وہ کہے چلی جارہی ہیں اور اس پر نام اسلام قرآن اور تفسیر کا رکھ رہی ہیں ۔ ۔ ۔



ویڈیو والے مسئلہ میں ہم اپنا مؤقف صاف ظاہر کرچکے کہ اگر اس لڑکی پر اسلامی حدود و قیود کہ مطابق جرم ثابت بھی ہوجاتا تو تب بھی وہ طالبان اس کو سزا دینے کہ مجاز نہ تھے کہ اسلام نے یہ اتھارٹی ریاست کو بخشی ہے رہ گیا لڑکی کہ بالغ و نابالغ ہونے کا مسئلہ تو


متفقہ اسلامی قانون کہ مطابق 12 سال کی لڑکی اور لڑکا بلوغت میں شمار کیے جاتے ہیں مگر تاہم اس مسئلہ یعنی کہ بلوغت کہ تعین میں جدید قواعد کو مد نظر رکھتے ہوئے مزید اصلاحات کی جاسکتی ہیں اور جہان تک اسلامی حدود کا تعلق ہے تو وہ توبہ کرنے یا معافی مانگنے سے ساقط نہیں ہوتی جب تک کہ ان کو جاری نہ کردیا جائے آپ سے گزارش ہے کہ آپ دوسروں کو قرآن فہمی کا طعنہ دینے کی بجائے خود فقط قرآن کا ہی مطالعہ فرمالیں تفسیر تو بڑے دور کی بات ہے ۔ ۔ ۔ ۔ ؟



main ny kisi ko tana nhe diya jayse ap ny apni baat waziya ki hain main ny b ki hain ap log ager koi baat kerta hain to lerny kiyon lag jatain hain ya ana ka mesla he bana laytain hain jo jo baatain main ny ki jitna mera ilam tha main by kah diya ap ka jitna ilam tha shaour tha pa nay kah diya is main koi tana dyane wali baat nhe hain main keb sy ek he baat ker rahi hon jo k ap ki samjh main nhe nhe nhe nhe arhi k mai b yeh he arz ker rahi the k k ayse tareeka kar jo lerki py implement kia gaya wo galt hain yhe main ny nhe kha k ALLAH MAAF KERY K KOI BAAT QURAN PAK AMIN SHAE NH ALLAH MAAF KER AYSA MAIN NY NHE KHA MAAFI KI BAAT KI MAGER WO B AUR SENSE MAIN JO AP NHE SAMJHAIN GY AUR NA MAIN SAMJHAO G KAHRI HAAN G BYSHUK MERA ILAM NAQES HAIN INSAN HON IS LIYA JO MERY PASS THA WO HE BOLA MAIN NAY HER INSAN KI PORA HAQ HAIN APNI BAAT KERNY KA BOLNY KA MAIN NY SRIF ITNA HE KHA K TAREEKA GALT YHE NHE KAHA THA K QURAN PAK MAIN NHE HIAN AUR YEH B KHA HAIN K MAAF KERNY WALA ALLAH KI ZAAT HAIN

aabi2cool
3rd April 2009, 15:12
main ny kisi ko tana nhe diya jayse ap ny apni baat waziya ki hain main ny b ki hain ap log ager koi baat kerta hain to lerny kiyon lag jatain hain ya ana ka mesla he bana laytain hain

اچھا تو اب آپ اس سے بھی انکاری ہیں کہ آپ نے کسی کو طعنہ نہیں مارا یہ خوب کہی بھئی چوری اور اوپر سے سینہ زوری تو کیا آپ کہ درج زیل جملے طعنہ کی بجائے تاریخ میں سنہری حروف سے لکھے جانے کہ قابل ہیں جو آپ اپنے مخاطبین کو بار بار یہ فرما رہی ہیں آگے آپ ہی کہ الفاظ ۔ ۔




۔۔ ۔ ۔ ۔muje ap jayse aqelmanedh logo sy pori pori yeh he tawaeqo the k muje ayse he ans milyain gy to main ap sebb muslim jo boaht advance ya boaht islamic aur sazaon komaan nay waly bentyhain aj kuch kahna chahti hon





muje ek baat batain ap ny pora quran paerha hain ?



jo jo baatain main ny ki jitna mera ilam tha main by kah diya ap ka jitna ilam tha shaour tha pa nay kah diya is main koi tana dyane wali baat nhe



تعجب ہے پہلے آپ لوگوں کو قرآن پورا پڑھنے کا مشورہ دیتی ہیں اور جب آپ سے قرآن کی بابت پوچھا جائے تو پھر آپ یہ فرماتی کہ جو میری سمجھ میں آیا یا جتنا میرا علم ہے میں نے کہہ دیا ۔ ۔ ۔ تو کیا آپ کو کسی نے یہ نہیں بتایا کہ اپنی ذاتی سمجھ بوجھ کو قرآن و سنت کا نام نہیں دینا چاہیے اور جب تک خود مکمل قرآن و سنت کا مطالعہ نہ کیا ہو دوسروں کو اس بات پر تنبیہ نہیں کرنی چاہیے ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ یہی پرابلم ہے دین کو سب لوگوں نے مزاق سمجھ رکھا ہے جس کہ جو منہ میں آتا ہے کہے چلا جاتا ہے اور اس پر نام قرآن و سنت کا رکھ دیتا ہے اور جب بعد میں پوچھا جائے تو پھر اہے یہ میری اپنی سمجھ کی بات تھی وغیرہ وغیرہ کی تاویلیں کرنا شروع کردیتا ہے کیا دنیا کہ اور شعبے تھوڑے رہ گئے ہیں درگت بنانے کہ لیے جو لوگوں کو فقط قرآن و سنت ہی ملے ہیں کہ بغیر سوچے سمجھے جس کا جو بھی جی چاہتا ہے بولے چلا جاتا ہے تعجب ہے ڈاکٹری کہ لیے تو ڈاکٹری کی تعلیم لازمی ٹھرے مگر قرآن و سنت پر ہر ایرہ غیرہ ڈاکٹری کرتا پھر اسے کوئی پوچھنے والا نہ ہو

aabi2cool
3rd April 2009, 15:51
aur jo baat main ny kahi main yhe nhe kahti k quran pak ki pori tafseer hain haan kiyon k main hafiza nhe hon jo lafz ba lafz yaad keron aur jahn tak mafii ki baat to abi abi main ny soreh noor main perha hain us main msaza ka hukam diya gaya mager us k sath sath jhoty ilzam lagny walo ki tuba aur gonah kerny walo ki tuba ko b qabol kia gya hain k ALLAH RAHEEM O KAREEM HAIN main ny ap sy bola na k ager gonha kia gay hain to saza us sort main di jaye jeb tuba na ki aur ager tuba na kerny walo ko saz deni he hain khas toor per kisi aouret ko to kam sy kam aysa nhe di jni yeh yeh main ny quran pak main kahin nhe perha k asye saza di jaye ap ny pher hain to muje b bata dain main bus itna janti hon k ALLAH RAB-UL-IZET BOHAT BOAHT MAHRBAN HAIN TUBA KENRY WALY KI ZAROR SUNTA HAIN .



الزَّانِيَةُ وَالزَّانِي فَاجْلِدُوا كُلَّ وَاحِدٍ مِّنْهُمَا مِئَةَ جَلْدَةٍ وَلَا تَأْخُذْكُم بِهِمَا رَأْفَةٌ فِي دِينِ اللَّهِ إِن كُنتُمْ تُؤْمِنُونَ بِاللَّهِ وَالْيَوْمِ الْآخِرِ وَلْيَشْهَدْ عَذَابَهُمَا طَائِفَةٌ مِّنَ الْمُؤْمِنِينَ


. . بدکار عورت اور بدکار مرد (اگر غیر شادی شدہ ہوں) تو ان دونوں میں سے ہر ایک کو (شرائطِ حد کے ساتھ جرمِ زنا کے ثابت ہو جانے پر) سو (سو) کوڑے مارو (جبکہ شادی شدہ مرد و عورت کی بدکاری پر سزا رجم ہے اور یہ سزائے موت ہے) اور تمہیں ان دونوں پر اللہ کے دین (کے حکم کے اجراء) میں ذرا ترس نہیں آنا چاہئے اگر تم اللہ پر اور آخرت کے دن پر ایمان رکھتے ہو، اور چاہئے کہ ان دونوں کی سزا (کے موقع) پر مسلمانوں کی (ایک اچھی خاصی) جماعت موجود ہو
Whip a hundred lashes each, the (unmarried) adulteress and the adulterer (on validation of adultery in accordance with conditions of statutory [hadd] punishment. If married, then both are to be stoned to death). And you should not feel even the slightest pity for both of them (in executing the command of Din [Religion]) if you have faith in Allah and the Last Day. And a (sizeable) party of Muslims should be present on (the occasion of) award of punishment to both of them.



http://www.pegham.com/images/imported/2009/04/41.jpg
http://www.pegham.com/images/imported/2009/04/42.jpg

Z.
3rd April 2009, 16:00
AstaghfiruAllah...............

Insaaan
3rd April 2009, 16:03
Pori dunia main pakistan kee badnami hui hay..
jin logon ny kia hay UN ko sar e aam phansi daini chayee
................ager mery bus main hoto main hee dy donga
any way dill phat gia hay dekh ker
aur yeh islamic saza nahi hay
islam to aib ko chupata hay

chaand_nager
3rd April 2009, 16:29
بی بی آپ پہلے یہ تو واضح کریں کہ آپ کو اختلاف سزا پر ہے یا سزا دینے والے پر یا سزا یافتہ کہ لڑکی ہونے پر یا اس کہ محض سترہ سالہ ہونے پر یا سزا کہ طریقہ کار پر آیا آپ کا اصل اعتراض ہے کیا جو آپ اتنا واویلا کر رہی ہیں ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟



g ap nay baat ki sheriyet ki?
bhai mery quran pak humrey liya ek zabta hayat hain aur us ki takmeel humre nabi pak PBUM
ney ki yani quran pak ka turjama aur nabi pak pbum ki pori haayat taiba humry liya quran pak ki tafseer hain
nabi pak pBUM Ki door main kabhi koi aysi saza di gai? kia teb gonah nhe hoty
kia teb sazain nhe milti the main yeh kehna chahti hon k humre nabi pak PBUM ny b reham aur
mamla fahmi ki irshaad fermya k logo k aibon ko kholy aam met phalaon perda poshi kero
quran pak humre liya reh rast hain to us per chalne ka way b humry nabi pak PBUM NEY HE BATAYA HAIN NA KIA
KABI B AYSA KUCH KIA YA HOWA
EVEN HAZRET ALI RAZI TALA UN HA,HAZRET UMER FAROOQ RAZI TALA UN HA AUR JITNE B SAHABI IKRAM K DOOR GOZERY KHABI KOI EK MISAL AYSI MILI
AB ALLAH MAAF KERY YEH TO NHE KAHTY HAIN UNHO NY QURAN PER IMPLEMENT NHE KIA ALLAH MAF KERY
YEH BAAT SMJHA RAHI HON K QURAN PAK KI TAFSEER SY MURAD MERI NABI PAK PBUM HI HAYAT TAIBA HAIN JEB HUMRY PAKS NABI NY ASYI SAZA DAYNE SY GORAIZ KIA HAINA UR MAAFI KI B GONAJSI RAKHI TO HUM KIYON RAKH SAKTAIN
KIA HUM ZAYDA HE SHERIYT K PASDAR HAIN ?QO KAYSE?
SOOREH NOOR MAIN JAHAN YEH IRSHAD HOWA K 100 KORE MARY JAIN WAHAN YEH B IRSHAAD HOWA HAIN K
KUCH LOGO KA GROPU BNYA JAYE JO SAZA PER MUSHAIDA KERY AUR PHER US MAIN JITNE PAISHO RAFT HO SAKTI KERY YEH B FERMYA K JINHO NY ZOR ZABDERTI YA BYKASI YA MAJBORI MAIN AKER YEH GONAH KIA BYSHUK WO GONHA HE KHALY GA MGER ALLAH RUB UL IZET MAAF KERNY WALA HAIN MAAF KERY GA YEH LAFZI TERJUMA HAIN .

chaand_nager
3rd April 2009, 16:35
لاحول ولا قوۃ بلکہ انا للہ وانا الیہ راجعون

yeh ap ny kis liya bola? mouse sy automatically couls change hony sy ?jis py ringer laga howa hain move kero to icon open ho jaty hain window k ya pher meri baton main bog ap nay baat ki sheriyet ki?
bhai mery quran pak humrey liya ek zabta hayat hain aur us ki takmeel humre nabi pak PBUM
ney ki yani quran pak ka turjama aur nabi pak pbum ki pori haayat taiba humry liya quran pak ki tafseer hain
nabi pak pBUM Ki door main kabhi koi aysi saza di gai? kia teb gonah nhe hoty
kia teb sazain nhe milti the main yeh kehna chahti hon k humre nabi pak PBUM ny b reham aur
mamla fahmi ki irshaad fermya k logo k aibon ko kholy aam met phalaon perda poshi kero
quran pak humre liya reh rast hain to us per chalne ka way b humry nabi pak PBUM NEY HE BATAYA HAIN NA KIA
KABI B AYSA KUCH KIA YA HOWA
EVEN HAZRET ALI RAZI TALA UN HA,HAZRET UMER FAROOQ RAZI TALA UN HA AUR JITNE B SAHABI IKRAM K DOOR GOZERY KHABI KOI EK MISAL AYSI MILI
AB ALLAH MAAF KERY YEH TO NHE KAHTY HAIN UNHO NY QURAN PER IMPLEMENT NHE KIA ALLAH MAF KERY
YEH BAAT SMJHA RAHI HON K QURAN PAK KI TAFSEER SY MURAD MERI NABI PAK PBUM HI HAYAT TAIBA HAIN JEB HUMRY PAKS NABI NY ASYI SAZA DAYNE SY GORAIZ KIA HAINA UR MAAFI KI B GONAJSI RAKHI TO HUM KIYON RAKH SAKTAIN
KIA HUM ZAYDA HE SHERIYT K PASDAR HAIN ?QO KAYSE?
SOOREH NOOR MAIN JAHAN YEH IRSHAD HOWA K 100 KORE MARY JAIN WAHAN YEH B IRSHAAD HOWA HAIN K
KUCH LOGO KA GROPU BNYA JAYE JO SAZA PER MUSHAIDA KERY AUR PHER US MAIN JITNE PAISHO RAFT HO SAKTI KERY YEH B FERMYA K JINHO NY ZOR ZABDERTI YA BYKASI YA MAJBORI MAIN AKER YEH GONAH KIA BYSHUK WO GONHA HE KHALY GA MGER ALLAH RUB UL IZET MAAF KERNY WALA HAIN MAAF KERY GA YEH LAFZI TERJUMA HAIN .la ?:ak:

chaand_nager
3rd April 2009, 16:58
Pori dunia main pakistan kee badnami hui hay..
jin logon ny kia hay UN ko sar e aam phansi daini chayee
................ager mery bus main hoto main hee dy donga
any way dill phat gia hay dekh ker
aur yeh islamic saza nahi hay
islam to aib ko chupata hay


yeh he baat main samjhany ki khoshish ker rahi hon mager abicool ki samjh main nhe arah main un ki yeh he smjhan chah rahi k kuda k bandy nabi pak PBUM ny aibo per perda dalny ka hukam fermya hain un ki hayat taiba per nazer dalin to ek b aysa wakia nhe milta kia teb gonah nhe hoty thy ya szain nhe milti the seb kuch hota tha na mager kabi aysa wakia samny aya kabi b kisi sahabi k door main b nhe khabi b kisi ny b is saza per implement kia?quran pak humre liya rehnumai hain mager is per amel kerny ka tareeka to humry nabi pak PBUM ny he bataya na humain .

aabi2cool
3rd April 2009, 17:01
g ap nay baat ki sheriyet ki?
bhai mery quran pak humrey liya ek zabta hayat hain aur us ki takmeel humre nabi pak PBUM
ney ki yani quran pak ka turjama aur nabi pak pbum ki pori haayat taiba humry liya quran pak ki tafseer hain
nabi pak pBUM Ki door main kabhi koi aysi saza di gai? kia teb gonah nhe hoty
kia teb sazain nhe milti the main yeh kehna chahti hon k humre nabi pak PBUM ny b reham aur
mamla fahmi ki irshaad fermya k logo k aibon ko kholy aam met phalaon perda poshi kero
quran pak humre liya reh rast hain to us per chalne ka way b humry nabi pak PBUM NEY HE BATAYA HAIN NA KIA
KABI B AYSA KUCH KIA YA HOWA
EVEN HAZRET ALI RAZI TALA UN HA,HAZRET UMER FAROOQ RAZI TALA UN HA AUR JITNE B SAHABI IKRAM K DOOR GOZERY KHABI KOI EK MISAL AYSI MILI
AB ALLAH MAAF KERY YEH TO NHE KAHTY HAIN UNHO NY QURAN PER IMPLEMENT NHE KIA ALLAH MAF KERY
YEH BAAT SMJHA RAHI HON K QURAN PAK KI TAFSEER SY MURAD MERI NABI PAK PBUM HI HAYAT TAIBA HAIN JEB HUMRY PAKS NABI NY ASYI SAZA DAYNE SY GORAIZ KIA HAINA UR MAAFI KI B GONAJSI RAKHI TO HUM KIYON RAKH SAKTAIN
KIA HUM ZAYDA HE SHERIYT K PASDAR HAIN ?QO KAYSE?
SOOREH NOOR MAIN JAHAN YEH IRSHAD HOWA K 100 KORE MARY JAIN WAHAN YEH B IRSHAAD HOWA HAIN K
KUCH LOGO KA GROPU BNYA JAYE JO SAZA PER MUSHAIDA KERY AUR PHER US MAIN JITNE PAISHO RAFT HO SAKTI KERY YEH B FERMYA K JINHO NY ZOR ZABDERTI YA BYKASI YA MAJBORI MAIN AKER YEH GONAH KIA BYSHUK WO GONHA HE KHALY GA MGER ALLAH RUB UL IZET MAAF KERNY WALA HAIN MAAF KERY GA YEH LAFZI TERJUMA HAIN .

محترمہ آپ سے گزارش ہے کہ* آپ قرآن و سنت پر براہ راست رائی زنی کرنے سے پہلے اسلامی تاریخ کا بغور مطالعہ فرمالیں آپ جتنا بولے چلی جارہی ہیں اتنا ہی آپ کا اسلام کہ بارے میں علم نمایاں ہوتا چلا جارہا آپ کو چاہیے کہ پہلے اسلامی حدود و تعزیرات کا مطالعہ فرمائیں کہ آیا حدوداللہ کیا ہوتی ہیں انکے احکام کیا ہیں ان کا نفاذ کیسے ہوگا اور کون کرئے گا اور کیا ان کہ نفاذ میں نرمی برتنا خود ایک جرم نہیں اور جب کسی کا جرم ثابت ہوجائے تو اس پر کیا حد لگے گی ؟ آیا اس کا جرم حد کہ دائرے میں آئے گا یا تعزیر کہ اور یہ بھی کہ حد اور تعزیر میں کیا فرق ہے ؟ نیز حد قائم کرنے کی کیا شرائط ہیں وغیرہ وغیرہ ۔ ۔
مختصر عرض کرتا چلوں کہ زنا کی سزا (یعنی حد) جاری کرنے کے لیے جن شرائط پر فقہاء کا اتفاق ہے وہ یہ ہیں کہ زنا کرنے والا بالغ ہو، عاقل ہو، مسلمان ہو، زانی مختار ہو یعنی اس پر جبر (زبردستی) نہ کی گئی ہو۔ عورت کے ساتھ زنا کرے اور ایسی لڑکی سے زنا کیا ہو جس سے عادتاً وطی ہوسکتی ہو۔
جب یہ تمام شرائط پائی جائیں تو پھر حد جاری کی جاسکتی ہے ورنہ اگر کوئی بھی ایک شرط نہیں پائی جارہی یا پھر کسی ایک شرط میں شبہ پڑ رہا ہے تو اس پر بھی حد جاری نہیں کی جائے گی کیونکہ اگر حد جاری کرنے میں معمولی شبہ پڑ رہا ہے تو اس وقت حد جاری نہیں ہوتی بلکہ ساقط ہوجاتی ہے۔
گواہ: مذکورہ شرائط کے پائے جانے کے ساتھ ساتھ حد جاری کرنے کے لیے چار گواہوں کا ہونا بھی لازمی ہے اور اگر تین گواہ ہیں تو پھر بھی حد جاری نہیں ہوگی۔ چار گواہوں کا ہونا قرآن مجید سے ثابت ہے
جیسا کہ سورۃ النسآء کی آیت نمبر15 میں ہے کہ ۔ ۔۔
وَاللاَّتِي يَأْتِينَ الْفَاحِشَةَ مِن نِّسَآئِكُمْ فَاسْتَشْهِدُواْ عَلَيْهِنَّ أَرْبَعةً مِّنكُمْ فَإِن شَهِدُواْ فَأَمْسِكُوهُنَّ فِي الْبُيُوتِ حَتَّى يَتَوَفَّاهُنَّ الْمَوْتُ أَوْ يَجْعَلَ اللّهُ لَهُنَّ سَبِيلاً
. اور تمہاری عورتوں میں سے جو بدکاری کا ارتکاب کر بیٹھیں تو ان پر اپنے لوگوں میں سے چار مردوں کی گواہی طلب کرو، پھر اگر وہ گواہی دے دیں تو ان عورتوں کو گھروں میں بند کر دو یہاں تک کہ موت ان کے عرصۂ حیات کو پورا کر دے یا اللہ ان کے لئے کوئی راہ (یعنی نیا حکم) مقرر فرما دے

And those of your women who commit adultery, call in from your men four witnesses against them. Then if they produce evidence, confine those women to their houses till death completes their term of life or Allah ordains a way (i.e. a new injunction) for them.

اسلامی تعزیرات اور حدود اللہ کے نفاذ کے لیے بنیادی کامل ثبوت اور مکمل شہادت ہے۔ شہادت بھی ایسی جو ہر قسم کے شک و شبہ سے بالا ہو۔ یہ اسلامی تعزیرات کی ایک ایسی وصف ہے جو انہیں دنیا کے تمام نظام ہائے تعزیرات سے ممتاز کردیتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ جس ملک میں، جہاں کہیں اور جب بھی اسلامی حدود کا نفاذ اپنی اصل روح کے ساتھ ہوا وہاں جرائم کا نشان ہی نہیں رہا۔ اور لطف یہ ہے کہ سزا کی نوبت بھی شاذونادر ہی آئی ہے۔
ثبوت اور گواہ کے بغیر کوئی بھی فیصلہ نہیں کیا جائے گا
گواہوں کی تعداد: گواہوں کی تعداد دعوے اور جرم کی نوعیت پر موقوف ہے۔ بعض دعواؤں کے ثبوت کو ایک گواہ کافی ہے اور بعض دعواؤں کے لیے دوگواہوں کی ضرورت پڑتی ہے۔ جبکہ بعض واقعات کے لیے چار گواہوں کی شہادت ضروری ہوتی ہے۔ زنا کے مجرم کو سنگسار کرنے کے موقع پر ایک جم غفیر (بڑی جماعت) کی موجودگی مطلوب ہوتی ہے۔ اسی طرح بعض معاملات میں مرد و عورت دونوں کی گواہی تسلیم کرلی جاتی ہے۔ جبکہ بعض مقدمات میں صرف مرد کی گواہی لازمی ہے۔ مثلاً زنا کی گواہی میں عورت کی گواہی قابل قبول نہیں ہے۔ زنا میں چار مردوں کی شہادت کی ضرورت ہوتی ہے جبکہ چوری وغیرہ کے معاملات میں دوگواہ کافی ہوتے ہیں۔ لیکن حدود اللہ کے نفاذ کے لیے ضروری ہے کہ گواہ فاسق نہ ہوں۔ عام حالات میں دو مرد نہ ہوں تو ایک مرد اور دو عورتیں۔ ان میں سے جن کو تم گواہی کے لیے پسند کرتے ہو، گواہی دیں تاکہ ان میں سے ایک عورت بھول جائے تو دوسری اس کو یاد دلائے۔ (البقرہ۔ آیت 282)
حدود شرعی کے نفاذ کے لیے عورتوں کی گواہی کافی نہیں۔ مردوں کی شہادت ضروری ہے۔ اس کی کئی وجوہ ہوسکتی ہیں۔ مثلاً عورت کا صنف نازک اور ضعیف ہونا۔ مرد کا عورت پر قوام ہونا۔ عورت کو منظر عام پر لانے اور عدالتوں میں مقدمات کی جرح قدح سے بچانے کے لیے اس زحمت میں نہ ڈالنا وغیرہ۔ شک و شبہ کی صورت میں گواہ سے حلف بھی لیا جاسکتا ہے کہ وہ جو کچھ کہے سچ سچ کہے گا۔ جیسا کہ فرمان الٰہی ہے اگر تمہیں شک ہو تو دونوں گواہ قسم کھائیں کہ ہم اس کا دنیوی حقیر معاوضہ قبول نہیں کریں گے خواہ وہ ہمارے قریبی عزیز رشتہ دار کا معاملہ ہو اور خدا ترسی کے تحت سچی بات کو نہیں چھپائیں گے ایسا کیا تو ہم گناہ گار ہوجائیں گے۔ (المائدہ۔ 106)
اسلام نے گواہ کے لیے جس قدر پابندیاں عائد کی ہیں اتنی قدر ان کے احترام اور تقدس کو واجب قرار دیا ہے۔ نہ صرف مدعی (دعویٰ کرنے والا) اور مدعا علیہ (جس پر دعویٰ کی گئی ہو) پر بلکہ ان کے ورثاء اور متعلقین پر بھی ضروری ہے بلکہ حکومت اور عدلیہ کی بھی ذمہ داری ہے کہ گواہوں کو ان کی گواہی کی بناء پر کسی طور پر کوئی گزند نہ پہنچے۔ کوئی فریق انہیں نقصان یا ایذا نہ پہنچائے۔ ارشاد باری تعالیٰ ہے کاتب اور گواہ کو کوئی بھی نقصان نہ پہنچایا جائے۔ (البقرہ۔ آیت 282)
موجودہ معاشرے کے بگاڑ، تنازعات کی بھرمار اور عدالتی نظام کی بحالی کا صرف ایک ہی حل ہے کہ اسلام کے اس عادلانہ اور حکیمانہ نظام کو اس کی اصل روح کے ساتھ نافذ اور جاری کیا جائے۔ بے ثبوت دعوے نہ ہوں۔ گواہ سچے ہوں۔ گواہیاں بے لاگ ہوں۔ لین دین کے معاملات ضبط تحریر لائے جائیں۔ فرضی تمسکات نہ لکھے جائیں۔ گواہوں کا تحفظ ہو۔ گواہ پر کوئی ہاتھ اٹھانے کی جرأت نہ کرے۔ ناقابل اصلاح جھوٹے گواہ زندگی بھر کے لیے گواہی سے محروم اور واجب تعزیر قرار پائیں تاکہ انہیں قرار واقع سزا ملے اور دوسروں کے لیے سبق بن جائے۔
اسلامی سزاؤں کا مقصد مجرم کی اصلاح اور معاشرہ میں جرائم کا انسداد ہے۔ سزائیں شدید ہیں لیکن ان کے نفاذ میں حد درجہ احتیاط اور کڑی شرائط ہیں:
سچی توبہ اور اسلامی سزا مجرم کو پاک کردیتی ہے۔ لہٰذا توبہ کرلینے والے اور اپنے جرم کی سزا پالینے والے شخص سے حقارت اور نفرت کی کوئی گنجائش نہیں۔ اسلامی نظام عدل کی بنیادی بات یہ ہے کہ جرم ثابت ہوجانے کے بعد کسی عدالت اور کسی بھی فرد کو حدود اللہ میں تخفیف اور تبدیلی کا اختیار نہیں۔ الَّا یہ کہ مقتول کے وارث خون بہا قبول کرنے پر راضی ہوجائیں یا ازخود معاف کردیں۔
چند حدود کے بیان سے قبل اس حقیقت کا اظہار ضروری ہے کہ حدود اللہ اور تعزیرات یعنی سزاؤں کا نفاذ عدلیہ کے اختیار میں ہے، کسی فرد کو از خود کسی صورت میں قانون کو اپنے ہاتھ میں لینے کا اختیار نہیں۔ اس معاملہ میں ہرگز کسی شبہ کی گنجائش نہیں ہے کیونکہ انسانوں کے اپنے بنائے ہوئے قوانین میں اور اللہ تعالیٰ علیم و خبیر کے بھیجے ہوئے احکام میں زمین آسمان کا فرق ہے۔
انسان کا علم محدود ہے۔ وہ جو کچھ سوچتا ہے اپنے ذاتی یا قومی مفاد کے لیے سوچتا ہے یا علاقائی، ملکی اور گروہی فوائد کو مدنظر رکھتا ہے۔ اگر عالمی مقاصد بھی اس کے سامنے ہوں تو وہ وقتی اور ہنگامی ہوتے ہیں کیونکہ مستقبل کا علم اور غیب کی خبر صرف عالم الغیب اللہ کو ہے کہ وہ سب کا مالک ہے، سب کا خالق ہے اور سب کا رب ہے۔ لہٰذا اللہ تعالیٰ کی نازل کردہ کتاب دائمی ہے۔ وہ قیام قیامت تک کے لیے ہے اور اسلامی احکام بھی دائمی ہیں عارضی اور وقتی نہیں ہیں۔
اسی طرح اسلامی تعزیرات تمام نوع انسانی کی بھلائی اور اقوام عالم کی اصلاح کے لیے ہیں۔ اسلامی سزاؤں سے مقصود محض انتقام یا بدلہ اور تعزیر نہیں بلکہ یہ سزائیں مجرم کی اصلاح، دوسروں کی عبرت، معاشرہ کی تطہیر اور مستقبل میں جرائم کی روک تھام کے لیے ہیں۔

Insaaan
3rd April 2009, 18:45
yeh he baat main samjhany ki khoshish ker rahi hon mager abicool ki samjh main nhe arah main un ki yeh he smjhan chah rahi k kuda k bandy nabi pak PBUM ny aibo per perda dalny ka hukam fermya hain un ki hayat taiba per nazer dalin to ek b aysa wakia nhe milta kia teb gonah nhe hoty thy ya szain nhe milti the seb kuch hota tha na mager kabi aysa wakia samny aya kabi b kisi sahabi k door main b nhe khabi b kisi ny b is saza per implement kia?quran pak humre liya rehnumai hain mager is per amel kerny ka tareeka to humry nabi pak PBUM ny he bataya na humain .
great..............yakeen karain k aap jaisy islam ko hee theek samjty hian..
ALLAH humain islam pori tarah samjny ke tofeek dy ameen

shela
3rd April 2009, 19:28
muje ap jayse aqelmanedh logo sy pori pori yeh he tawaeqo the k muje ayse he ans milyain gy to main ap sebb muslim jo boaht advance ya boaht islamic aur sazaon komaan nay waly bentyhain aj kuch kahna chahti hon
1 pahli baat soreh noor main yeh bata diya gaya k zani merd aur zani ouret ko kore mary jain aur bakol mery mery muhtarm bhai ap k is gonah main maafi ki koi gunjais nhe as u say
ans
muje ek baat batain ap ny pora quran paerha hain ? yakeenen nhe kiyon k ager perha hota to ap ko is ki tafseer b maloom hoti islam main kisi b gonah k liya kisi b gonah k liya
3 bar maafi ka hukam diya gaya
islam main bedkar ourt k liya kaha gaya k 3 adfa usy samjho piyar sy
guse
dant k ya maar k
mager kia ap yeh bata saktain islam ny aur quran pak main yeh kahan likha hion k jao jao apni maa betiyon ko jo ager nasmjhi main koi gonah ker deti han to jao ly jao un sare aammmmmmm ly k jao dunya ko bato k haan dakho yeh humri beti bivi kitne buri hain pher namahrem logo sy kaho ayo logo meri jawab beti ho pakero zammen py ulta letao aur ayo nahmarm sharif zado ayo meri beti ko tangon sy pakero bazon sy pakeron aur ayo islam k maanay walo ayo meri beti per sare aaaaaaaaaam namahram merdon k samnay kore maro kia yhe isalm ny kaha.?
kiay yeh quran pak main likha hain
kia yeh humry pak nabi PBUM ny huamin seekhay hain ?
huamin apne metlub ki sari sazain araaishain to yaad hain mger afsos hum tafser bhol gaye humain yeh too yaad raha k quran pak main 4 sgadiyan kerny ki ijazt hain ager insaf ker sako mger hum yeh tafseer bhaol agye k 4 shadiyan apne ayash nafes k liya nhe kaha tha is liya kah tha k bewao ka sahara beno yateemu k ser py hath pharyon kia yhe kaha gaya islam main k koi merd apne ayash hain apne gandy nafes py qabo nhe rakh sakta to ajye aur shadi ker lain aur kahye main insaaf kero ga apni bivaiyon k dermiyan ? muje itraaj lerki py nhe tum logo py hain jo insan nheya pher apne metlub ka islam bana k bath gaye

app kesi ko yah nahi kah sakti ka YAQEENAN Quran nahi perha u dont know about others definately :rose
Hain main ne pora Quran perha ha lakin pora Tarjuma se nahi perha kahen kahen se tarjuma or tafseer se perhna sekha ha or Allah ka shuker ha ka Arabic perh ker samagh aa jate ha ka kis bare main baat ho rahe ha

Zani mard or aurat ko kore mare jain to khabar ke mutabik wo aurat zani the to us ko kore mare gaye kunkah gunnah main koi maffi nahi ha,
App yah kis terhain se kah sakte hain ka us aurat ko 3 dafa warning nahi de gaye :mm:

jab Hamary Rasool (PBUH) ne saza ke bare main Bataya tha to yah Wazah Alfaz main ferma deya tha kah ager Gunah App kay ghar main se bhi kesi ne kia to Mafi ke koi gunjayesh nahi ha.

or Islam main sab se Bahtreem Baat yah ha kah jb koi appne Keya ke saza sab ke samnay la leta ha to phir us ka wo Gunah Dhool jata ha or society main kesi ko bhi Yah Haq nahi hota ha kah wo us ke past ke bare main us ko taneee de or jo us ko tanee da ga wo phir Bohtan lagaye ga or Bohtan ke saza to Zani se bhi zeda ha

Aanchal
3rd April 2009, 23:01
aik sawaal to yeh hai na kay Talbiaan kay paas kia saboot hain kay us larki ka jurm yeh tha ?:mm: Tv pay kuch or taraha say bhi news hain ..yeh baat to tehqeeqaat kay bad samnay aye gee kay asal waqeya kia tha...or agar yehi jurm hai bhi to Talibaan koon hotay hain saza deenay walye ? pak ki hakoomat hai jo saza banye pak day ga Talibaan koi islaam kay muhafiz nahi jo aisi sazaian deetay pheeraian :tasali: ..or kisi khatoon ko sarr-i-aam aisi saza deena islam main kaha likha hai .......

Rabi
4th April 2009, 05:59
larki nay jo bhi ghalati ki hoo saza milni chaien jo bhi saboot houn us kay hissab say ....lekan Talaban koon hotay hain saza deenay walay ?
or sarr-i-aam kisi khatoon ko saza deena koon say islam main hai ? or yeh jo video hai is main tareeka deekhoo in Talbaan ka ...


Exactly may bhi yahi kheny wali thee
Sar-e-Aam MArnay ki wajha kia hay akhir :fuming: YE khai nahi likha kay Juram sabit honay kay baad itnay logo kay dermayan Usy saza di jaye
Or sub zalim insaan khary daikh rahy hain Sharm hi nahi rahi logo may

Allah hidayat day sub ko Or mujhy bhi/ammen

Rabi
4th April 2009, 06:01
muje ap jayse aqelmanedh logo sy pori pori yeh he tawaeqo the k muje ayse he ans milyain gy to main ap sebb muslim jo boaht advance ya boaht islamic aur sazaon komaan nay waly bentyhain aj kuch kahna chahti hon
1 pahli baat soreh noor main yeh bata diya gaya k zani merd aur zani ouret ko kore mary jain aur bakol mery mery muhtarm bhai ap k is gonah main maafi ki koi gunjais nhe as u say
ans
muje ek baat batain ap ny pora quran paerha hain ? yakeenen nhe kiyon k ager perha hota to ap ko is ki tafseer b maloom hoti islam main kisi b gonah k liya kisi b gonah k liya
3 bar maafi ka hukam diya gaya
islam main bedkar ourt k liya kaha gaya k 3 adfa usy samjho piyar sy
guse
dant k ya maar k
mager kia ap yeh bata saktain islam ny aur quran pak main yeh kahan likha hion k jao jao apni maa betiyon ko jo ager nasmjhi main koi gonah ker deti han to jao ly jao un sare aammmmmmm ly k jao dunya ko bato k haan dakho yeh humri beti bivi kitne buri hain pher namahrem logo sy kaho ayo logo meri jawab beti ho pakero zammen py ulta letao aur ayo nahmarm sharif zado ayo meri beti ko tangon sy pakero bazon sy pakeron aur ayo islam k maanay walo ayo meri beti per sare aaaaaaaaaam namahram merdon k samnay kore maro kia yhe isalm ny kaha.?
kiay yeh quran pak main likha hain
kia yeh humry pak nabi PBUM ny huamin seekhay hain ?
huamin apne metlub ki sari sazain araaishain to yaad hain mger afsos hum tafser bhol gaye humain yeh too yaad raha k quran pak main 4 sgadiyan kerny ki ijazt hain ager insaf ker sako mger hum yeh tafseer bhaol agye k 4 shadiyan apne ayash nafes k liya nhe kaha tha is liya kah tha k bewao ka sahara beno yateemu k ser py hath pharyon kia yhe kaha gaya islam main k koi merd apne ayash hain apne gandy nafes py qabo nhe rakh sakta to ajye aur shadi ker lain aur kahye main insaaf kero ga apni bivaiyon k dermiyan ? muje itraaj lerki py nhe tum logo py hain jo insan nheya pher apne metlub ka islam bana k bath gaye


App nay bilkul sahi bola sis
YE khai nahi likha kay Juram sabit honay kay baad is tareeqay say saza di jaye
ye bilkul ghalt herkat the
may kheti hun un teen logo ko bhi Jo kay 2 bakray hovay thay lerki ko or jo mar raha tha
un teeno ko bhi Koray maary jaye wo bhi to namehrim hain Unho nay haath kion lagaya lerki ko unhay bhi maro pakar ker

ChaMpioN PaKiStaNi
4th April 2009, 06:51
Kuch nahi khana Darama ...................

chaand_nager
4th April 2009, 07:57
[quote=aabi2cool;1035396]
محترمہ آپ سے گزارش ہے کہ* آپ قرآن و سنت پر براہ راست رائی زنی کرنے سے پہلے اسلامی تاریخ کا بغور مطالعہ فرمالیں آپ جتنا بولے چلی جارہی ہیں اتنا ہی آپ کا اسلام کہ بارے میں علم نمایاں ہوتا چلا جارہا آپ کو چاہیے کہ پہلے اسلامی حدود و تعزیرات کا مطالعہ فرمائیں کہ آیا حدوداللہ کیا ہوتی ہیں انکے احکام کیا ہیں ان کا نفاذ کیسے ہوگا اور کون کرئے گا اور کیا ان کہ نفاذ میں نرمی برتنا خود ایک جرم نہیں اور جب کسی کا جرم ثابت ہوجائے تو اس پر کیا حد لگے گی ؟ آیا اس کا جرم حد کہ دائرے میں آئے گا یا تعزیر کہ اور یہ بھی کہ حد اور تعزیر میں کیا فرق ہے ؟ نیز حد قائم کرنے کی کیا شرائط ہیں وغیرہ وغیرہ ۔ ۔

مختصر عرض کرتا چلوں کہ زنا کی سزا (یعنی حد) جاری کرنے کے لیے جن شرائط پر فقہاء کا اتفاق ہے وہ یہ ہیں کہ زنا کرنے والا بالغ ہو، عاقل ہو، مسلمان ہو، زانی مختار ہو یعنی اس پر جبر (زبردستی) نہ کی گئی ہو۔ عورت کے ساتھ زنا کرے اور ایسی لڑکی سے زنا کیا ہو جس سے عادتاً وطی ہوسکتی ہو۔
جب یہ تمام شرائط پائی جائیں تو پھر حد جاری کی جاسکتی ہے ورنہ اگر کوئی بھی ایک شرط نہیں پائی جارہی یا پھر کسی ایک شرط میں شبہ پڑ رہا ہے تو اس پر بھی حد جاری نہیں کی جائے گی کیونکہ اگر حد جاری کرنے میں معمولی شبہ پڑ رہا ہے تو اس وقت حد جاری نہیں ہوتی بلکہ ساقط ہوجاتی ہے۔
گواہ: مذکورہ شرائط کے پائے جانے کے ساتھ ساتھ حد جاری کرنے کے لیے چار گواہوں کا ہونا بھی لازمی ہے اور اگر تین گواہ ہیں تو پھر بھی حد جاری نہیں ہوگی۔ چار گواہوں کا ہونا قرآن مجید سے ثابت ہے
جیسا کہ سورۃ النسآء کی آیت نمبر15 میں ہے کہ ۔ ۔۔
وَاللاَّتِي يَأْتِينَ الْفَاحِشَةَ مِن نِّسَآئِكُمْ فَاسْتَشْهِدُواْ عَلَيْهِنَّ أَرْبَعةً مِّنكُمْ فَإِن شَهِدُواْ فَأَمْسِكُوهُنَّ فِي الْبُيُوتِ حَتَّى يَتَوَفَّاهُنَّ الْمَوْتُ أَوْ يَجْعَلَ اللّهُ لَهُنَّ سَبِيلاً
. اور تمہاری عورتوں میں سے جو بدکاری کا ارتکاب کر بیٹھیں تو ان پر اپنے لوگوں میں سے چار مردوں کی گواہی طلب کرو، پھر اگر وہ گواہی دے دیں تو ان عورتوں کو گھروں میں بند کر دو یہاں تک کہ موت ان کے عرصۂ حیات کو پورا کر دے یا اللہ ان کے لئے کوئی راہ (یعنی نیا حکم) مقرر فرما دے

And those of your women who commit adultery, call in from your men four witnesses against them. Then if they produce evidence, confine those women to their houses till death completes their term of life or Allah ordains a way (i.e. a new injunction) for them.

اسلامی تعزیرات اور حدود اللہ کے نفاذ کے لیے بنیادی کامل ثبوت اور مکمل شہادت ہے۔ شہادت بھی ایسی جو ہر قسم کے شک و شبہ سے بالا ہو۔ یہ اسلامی تعزیرات کی ایک ایسی وصف ہے جو انہیں دنیا کے تمام نظام ہائے تعزیرات سے ممتاز کردیتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ جس ملک میں، جہاں کہیں اور جب بھی اسلامی حدود کا نفاذ اپنی اصل روح کے ساتھ ہوا وہاں جرائم کا نشان ہی نہیں رہا۔ اور لطف یہ ہے کہ سزا کی نوبت بھی شاذونادر ہی آئی ہے۔
ثبوت اور گواہ کے بغیر کوئی بھی فیصلہ نہیں کیا جائے گا
گواہوں کی تعداد: گواہوں کی تعداد دعوے اور جرم کی نوعیت پر موقوف ہے۔ بعض دعواؤں کے ثبوت کو ایک گواہ کافی ہے اور بعض دعواؤں کے لیے دوگواہوں کی ضرورت پڑتی ہے۔ جبکہ بعض واقعات کے لیے چار گواہوں کی شہادت ضروری ہوتی ہے۔ زنا کے مجرم کو سنگسار کرنے کے موقع پر ایک جم غفیر (بڑی جماعت) کی موجودگی مطلوب ہوتی ہے۔ اسی طرح بعض معاملات میں مرد و عورت دونوں کی گواہی تسلیم کرلی جاتی ہے۔ جبکہ بعض مقدمات میں صرف مرد کی گواہی لازمی ہے۔ مثلاً زنا کی گواہی میں عورت کی گواہی قابل قبول نہیں ہے۔ زنا میں چار مردوں کی شہادت کی ضرورت ہوتی ہے جبکہ چوری وغیرہ کے معاملات میں دوگواہ کافی ہوتے ہیں۔ لیکن حدود اللہ کے نفاذ کے لیے ضروری ہے کہ گواہ فاسق نہ ہوں۔ عام حالات میں دو مرد نہ ہوں تو ایک مرد اور دو عورتیں۔ ان میں سے جن کو تم گواہی کے لیے پسند کرتے ہو، گواہی دیں تاکہ ان میں سے ایک عورت بھول جائے تو دوسری اس کو یاد دلائے۔ (البقرہ۔ آیت 282)
حدود شرعی کے نفاذ کے لیے عورتوں کی گواہی کافی نہیں۔ مردوں کی شہادت ضروری ہے۔ اس کی کئی وجوہ ہوسکتی ہیں۔ مثلاً عورت کا صنف نازک اور ضعیف ہونا۔ مرد کا عورت پر قوام ہونا۔ عورت کو منظر عام پر لانے اور عدالتوں میں مقدمات کی جرح قدح سے بچانے کے لیے اس زحمت میں نہ ڈالنا وغیرہ۔ شک و شبہ کی صورت میں گواہ سے حلف بھی لیا جاسکتا ہے کہ وہ جو کچھ کہے سچ سچ کہے گا۔ جیسا کہ فرمان الٰہی ہے اگر تمہیں شک ہو تو دونوں گواہ قسم کھائیں کہ ہم اس کا دنیوی حقیر معاوضہ قبول نہیں کریں گے خواہ وہ ہمارے قریبی عزیز رشتہ دار کا معاملہ ہو اور خدا ترسی کے تحت سچی بات کو نہیں چھپائیں گے ایسا کیا تو ہم گناہ گار ہوجائیں گے۔ (المائدہ۔ 106)
اسلام نے گواہ کے لیے جس قدر پابندیاں عائد کی ہیں اتنی قدر ان کے احترام اور تقدس کو واجب قرار دیا ہے۔ نہ صرف مدعی (دعویٰ کرنے والا) اور مدعا علیہ (جس پر دعویٰ کی گئی ہو) پر بلکہ ان کے ورثاء اور متعلقین پر بھی ضروری ہے بلکہ حکومت اور عدلیہ کی بھی ذمہ داری ہے کہ گواہوں کو ان کی گواہی کی بناء پر کسی طور پر کوئی گزند نہ پہنچے۔ کوئی فریق انہیں نقصان یا ایذا نہ پہنچائے۔ ارشاد باری تعالیٰ ہے کاتب اور گواہ کو کوئی بھی نقصان نہ پہنچایا جائے۔ (البقرہ۔ آیت 282)
موجودہ معاشرے کے بگاڑ، تنازعات کی بھرمار اور عدالتی نظام کی بحالی کا صرف ایک ہی حل ہے کہ اسلام کے اس عادلانہ اور حکیمانہ نظام کو اس کی اصل روح کے ساتھ نافذ اور جاری کیا جائے۔ بے ثبوت دعوے نہ ہوں۔ گواہ سچے ہوں۔ گواہیاں بے لاگ ہوں۔ لین دین کے معاملات ضبط تحریر لائے جائیں۔ فرضی تمسکات نہ لکھے جائیں۔ گواہوں کا تحفظ ہو۔ گواہ پر کوئی ہاتھ اٹھانے کی جرأت نہ کرے۔ ناقابل اصلاح جھوٹے گواہ زندگی بھر کے لیے گواہی سے محروم اور واجب تعزیر قرار پائیں تاکہ انہیں قرار واقع سزا ملے اور دوسروں کے لیے سبق بن جائے۔
اسلامی سزاؤں کا مقصد مجرم کی اصلاح اور معاشرہ میں جرائم کا انسداد ہے۔ سزائیں شدید ہیں لیکن ان کے نفاذ میں حد درجہ احتیاط اور کڑی شرائط ہیں:
سچی توبہ اور اسلامی سزا مجرم کو پاک کردیتی ہے۔ لہٰذا توبہ کرلینے والے اور اپنے جرم کی سزا پالینے والے شخص سے حقارت اور نفرت کی کوئی گنجائش نہیں۔ اسلامی نظام عدل کی بنیادی بات یہ ہے کہ جرم ثابت ہوجانے کے بعد کسی عدالت اور کسی بھی فرد کو حدود اللہ میں تخفیف اور تبدیلی کا اختیار نہیں۔ الَّا یہ کہ مقتول کے وارث خون بہا قبول کرنے پر راضی ہوجائیں یا ازخود معاف کردیں۔
چند حدود کے بیان سے قبل اس حقیقت کا اظہار ضروری ہے کہ حدود اللہ اور تعزیرات یعنی سزاؤں کا نفاذ عدلیہ کے اختیار میں ہے، کسی فرد کو از خود کسی صورت میں قانون کو اپنے ہاتھ میں لینے کا اختیار نہیں۔ اس معاملہ میں ہرگز کسی شبہ کی گنجائش نہیں ہے کیونکہ انسانوں کے اپنے بنائے ہوئے قوانین میں اور اللہ تعالیٰ علیم و خبیر کے بھیجے ہوئے احکام میں زمین آسمان کا فرق ہے۔
انسان کا علم محدود ہے۔ وہ جو کچھ سوچتا ہے اپنے ذاتی یا قومی مفاد کے لیے سوچتا ہے یا علاقائی، ملکی اور گروہی فوائد کو مدنظر رکھتا ہے۔ اگر عالمی مقاصد بھی اس کے سامنے ہوں تو وہ وقتی اور ہنگامی ہوتے ہیں کیونکہ مستقبل کا علم اور غیب کی خبر صرف عالم الغیب اللہ کو ہے کہ وہ سب کا مالک ہے، سب کا خالق ہے اور سب کا رب ہے۔ لہٰذا اللہ تعالیٰ کی نازل کردہ کتاب دائمی ہے۔ وہ قیام قیامت تک کے لیے ہے اور اسلامی احکام بھی دائمی ہیں عارضی اور وقت

tasawer-e-adel aur is ki khusosiyaat
ap nay ab tak jo sari ayaat batain muje kisi sy b koi inkar nhe na he inkar ho sakta lafz ba lafz bilkol theakh mager mery bhai ap ny ab tak jitneeeeeeeeeeeee
ayaat batai hain wo ek he cheez ko define ker rahi hain
saza saza aur saza mager ap zera un ayaat mubaraka per b roshni fermain gay jis main
maaf kerna afu der gozer kerna fermya gaya/ap ny saza ki to boaht sari ayaat post ki mger hayret hain k
maaf afu dergozer kerna is bare main kuch nhe fermya to main ap batati chalo mery bhai
k sooreh noor main he yeh wakia derj hain jeb hazret ayesha razi tala un ha per tuhmet ka ilzam laga tha aur rpori is wakiya ki tafshish ki agi the
to mery jeb pata lga tha k k yeh just afwah hain halan k ALLAH KA NABI PAK PBUM SEB JANTY HAIN
MAGER PHER B US TIME WO KHAMOSH RAHY
HAZRET AYESHA RAZI TALA UN HA BOAHT DOKH MAIN RAHI SAHET KHARAB HO GAIN RAATON KO UTH KER ROYA KERTI THEAIN
LAKIN JEB TUMAT LAGNY WALY NY KUD QABOL KIA K US NAY JHOTI TUHMET LAGI HAIN TEB

HUMRY PAK NABI PBUM NY US INSAN KO MAAF KIA JEB K QURAN PAK MAIN IRSHAAD HOWA K
TUHMET LAGYNY WALY KO 80 KORE MARAIN AJIN AGERCHA WO TUBA KER LY PHER B
KIA YEH UMAIN EXAMPLE NHE DI GAI GAY NABI PAK PBUM NY JEB ITNA BARA GONAH MAAF FERMYA YEH SABIT KIA
HER GONAH CHAYE KITNA BHARA HO MAAFI KA LAIKH HAIN TEB TAK JIS MAIN YEH DER NA HO K US SY MULKI INTASHAR
YA BAEDAMENI PAHLYAIN YEH SAKHET SAZAIN ISALM MAIN IS LIYA RAKHI GA K JEB AZ HADH KOI BAOHT BOAHT ZARORI HO JAYE SAZA DYAN MAAFI DAYNA JAHAN KHETRA HO
K QOOM KO YA MASHERY MAIN INTASHAR PAHLAY GA TEB ASYI SAZAON PY IMPLEMNT KERNY KA HUKM DIYA GAY

KIA AP MERI IS BAAT SY B INKAR KERTY HAIN K QURAN PAK K TAFSEER NABI KAREEM PBUM KI POSI HAAYAAT TAIBA HAIN
KIA AP MERI IS BAAT SY INKAR KERTY AIN K JEB HUM,RY PAK NABI PBUM NY APNI ZOUHJA PER TUHMET LAGNY WALY ISAN KO MAF FERMA DIYA
TEB HUMRI OKAAT HAIN K HUM
APNI HE BETIYON BAHENO KO SARE AAM LAY AYAIN K AUR KORE BERSAIN YEH KAH KER K QURAN MAIN SOREH NOOR MAIN LIKHA HAIN HUM NY SAZAIN TO PERH LE MAGER HUM MAAF KERNY WALY ILFAZ NHE PHERY

TURJUMA PER RAHI HON MAIN

(ZANI MERD AUR ZANI OURET IN DONO MAIN SY HER EK KO 100 KORE MARO AUR TUMHAIN IN PER HERGIZ TARES NA AYE
(DEFINATAION MAIN AGY LIKHA GAYA HAIN QANOON-E- AQOBET ADEL MUSTAQEEM HAIN JEB KAY AFU DERGOZER KA DERJA IS SY BLUND HAIN AUR YEH IAHSAAN ALLAH TALA NAY MOMINO KI SAAFAT BIYAAN KERTY HOWAY FERMYA
TURJUMA9 AUR WO LOG GUSAY KO ZABET KER JATAIN HAIN LOGO K QASOOR MAAF KER DYATAIN HAIN AUR ALLAH IHSAAN KERNY WALON KO DOST RAKHTA HAIN
EK AUR JAGA IRSHAD HOWA
(KUDA TUM KO ADEL AUR IHSAAN KA HUKM DAYTA HAIN ) MERY BHAI SAZA SY ZAYDA US PER TUBA KERNY WALA AUR US TUBA KO QABOL KER K MAAF KENRY WALY KA DERJA BLUND KIA GAYA HAIN US K JO AFU DER GOZER SY KAM NA LAY AUR SAKHT TAREEN SAZA DAIN
JITNE B QOUAIN LIKHI GAI BA KUDA YEH MERI APNI NHE YEH MAIN BOAHT STUDY K BAAD ISLAMI QUTEB SY JIN MAIN ADEL O INSAAF KI TAFSSER AUR NABI PAK PBUM NY JO MAAF KERNY KI FAZILET BATI HAIN SEB BOOKS SY HE LE HAIN

chaand_nager
4th April 2009, 10:00
]saza MAIN ASAANI -BOOK NAME-(MUSLIM POLITICALTHOUGHTS AND INSTITUTIONS )


syed bin al maseeb razi tala un ha sy rawayet hain : ky ek naqes-ul-khelqet aur natwan shekez humrey gheron main ajay kerta tha ek dafa gher ki londi k sath pakera gaya saad bin abaada razi tala un ha ny hazor pak PBUM sy ja ker arz ki ap PBUM ny fermaya isy soo kore lagoa logo ny arz ki ya rasool ALLAH wo to bohat kamzor hain kore kahne sy mer jaye ga ap PBUM ney fermya

ek asyi shaakh lo jis k sath so shakhain hun wo ek he dafa is ko maro saza pori ho jaye g (sanen abi maja) kia is wakiya k baat b koi gunjaish nhe hain k saza main kami bayshi ho sakti hain ? nabi pak pbum k door main ek auret per zana ki hadh qaim hoi us ouret ny aker kud iqrar kia k main is merd ko bahkaney wali the muje saza di jaye isi zindagi main taky akherit main saza na mily ap PBUM ny 3 mertaba us ouret sy gawahi le phali gawahi per ap PBUM NY apna chahra mubrak dain tarf mor liay doseri gawahi per bain tarf chahra mor liya amger jeb teseri gawahi di us ouret ny to ap PBUM NY us ouret ki tarf dekha jo umeed sy the ap PBUM NY FERMYA K JAO IS BACHY KO JANUM DO PHER MERY PASS AYO WO OURET GAI BACHA PAIDA KIA PHER AYI K YA RASOOL ALLAH MUJE SAZA DI JAYE TA KY ISI DUNYA MAIN MUJE SAZA MIL JAYE AKHERIT MAIN NHE AP PBUM NY FERMYA K JAO APNE BACHY KO DOODH PILAO JEB TAK US KI DOODH PILANY KI MODET PORI NA HO JAYE WO OURET PHER CHALI GAI 3SERI BAR PHER YAI WO OURET NABI PAK PBUM K PASS K YA RASOOL ALLAH MUJE SAZA DI JAYE TEB US K BACHA US K SATH THA MU MAIN ROOTI KA EK TUKREA DUBAYE TEB NABI PAK PBUM NY PHER US OURET SY POUCHAA PHER US OURET NY KUD SAZA K LIYA KAHA TEB US OURET KO SANGSAR KIA GAYA
IS WAKIYA SY HUMAIN PORI TERHAN SY YEH PATA LGTA HAIN K KITNE GONJAISH RAKHI HAIN SAZAON MAIN NABI PAK PBUM SY BHER KER KOI INSAAF KERNY WALA NHE KUD BAR BAR US OURET K ILTAJA KERNY PER US KO SAZA DI GAI HUMRY NABI PAK PBUM NY KITNE BAR US KO TALA MGER WO OURET KUD SAZA CHATI THE TA KY DUNYA MAIN USY US KI KIYA KI SAZA MILY AKHERIT MAIN NH TO KIA HUM ITNE PASET BEN JAIN K KISI OURT K TUBA B NA QABOL KERAIN AUR KORAIN BERSATY RAHAIN MAIN MANTI HON K HUKM HAIN KITNE GONAJISH RAKHI GAI YEH AP LOGO KO PATA CHAL HE GAYA HO GAY AGER AB B NHE TO NABI PAK PBUM NY US SHAKEZ TAK MAAF FERMAYA JIS NY HAZRET AYESHA RAZI TALA UN HA PER TUHMET LAGI KIA HUMARI ANKHAIN AB NHE KHOLAIN K HUM DRIF SAZAON K MUNSIF BEN K FAYSELA KERAIN YA PHER EK IHSAAN KENRY WALA BENAIN . NABI PAK PBUM NY EK NATAWAN MERD KI SAZA MAIN KAMI KER DI TO KIA EK OURET AGER GONAH SY TUBA KERTI HAIN YA KISI K BAHKWAY MAIN AKER AYSA KERTI HAI N BYSHUK WO GONAHGAR HAIN MAGER AGER TUBA KERTI HAIN TO KAI US KI TUBA NHE SUNI JAYE G QURAN PAK MAIN ASYI SAKHT SAZAIN MUSLIM KO TENBIY K LIYA RAKHI GAI HAIN HADH DERJA YEH KHOSHISH KI JAYE K ASYE SAKHET SAZAON KA HUKAM PER IMPLEMENT KENRY SY JEB HUMRE NABI PAK PBUM NY GORAIZ KI YAHAN TAK KAH DIYA K AYSI FAYSELAIN MERY PASS MET LAYA KERON KHOSHISH KIA KERON MAAF KER DIYA KERON AP PBUM NY FERMYA

QAZI AGER MAAF KER DAYNE MAIN GALTI KERY TO YEH IS BAAT SY BAHTER HAIN K WO SAZA DAYEN MAIN GALTI KERY AFU DERGOZER KA MAKAAM QANOON O AQOBET SY BLUND HAIN
EK TARF FERMYA GAYA HAIN K ZANI OURET SY NEKAH JAIZ NHE TO DOSERI TAF YEH B FERMYA GAYA HAIN AGER KOI AURET GONAH SY TUBA KERTI HAIN PAKBAZI K RASTY MAIN CHALNA CHATI HAIN TO TUM UN PY AIB TALASH MET KERO .[/B]

D@y W@lk3r
4th April 2009, 10:18
ager lerki nay ghona kiya hain to wo akalay to nahi kar sakti wo mard kaha hain jis kay saat usnay yah ghona kiya.....................usko kiyun nahi mara gaya.......... ager dono kawaray hain to unki appas main shadi bhi hosakti thi..........

ager is terha islami saza day ka qanon hain to wo siyasaat dan ko kiyun koray nahi martay jin ki family saray aam nachti hain yah sharaab pitay hain... aisa srif ghareeb inssan kay saat hota hain..

ALLHA ham sab ko sidhi rah dekhai........................:ak:

Pakistan ka to ab ALLHA hi malik:ak::ak:

chaand_nager
4th April 2009, 10:25
Soreh nisa main
terjuma:


Aur jin merdon ko apni oureton sy bedhkhoi ka der ho to
1 tum samjho unhain
2 alge ker do apni khowab gah sy
3 maroo unhain
pher agher wo manain tumhra kha to met talash kero in per rah ilzam byshuk allah seb sy oper bhara hain.

Kia ab b koi gonjaish nhe nekalti k sila rehmi ki jaye kia ab b hum quran pak k word ki jo implementaion humry pak nabi pbum ny fermai kia hum us rasty per chalty howay wo he tareeka wo he sila rehmi ko apna nhe saktain humain sazaon ki pori pori ayaat to yaad arhi hain lakin sila rehmi aur gonaho ko danp ker rakhna hum nhe seekh sakty saza do zaror do un ko jo baaz na aye mager jo tuba ker lain un ko maaf ker diya jaye yahn mian yeh baat b clear ker don k zana ki jo saza di jati hain us main soret hal yhe hain ager lerki k uksany py zana howa to sazawar lerki aur ager lerkay k uksany py goanh howa to sazawar lerka hain saza usy mily g yeh baat islami kuteb main derj hain jin ko itrazaat ho rahin wo study zaror kerain main bar bar tafseer ka is liya kahti rahi k islami books aur nabi pak pbum ki haat taiba aur un ka adel o insaaf un k afu dergozer in seb ki defination zaror milti hain hain . Ager meri kisi baat sy kisi ki dilazaari hoi to main maafi chahti hon mera bilkol maqsed kisi per ilzam lagana ya galt sabet kerna nhe tha bus smjhna tha . Aur han jadeed door k taqzon ko pora kerty howay allah tala ny islami qawannen main ijtihad,qayas, shora, mashawert jayse makhiz banye hain jo tarameem ker k islam k daire kar main rah ker asool nafiz ker sakti hain

chaand_nager
4th April 2009, 10:32
ager lerki nay ghona kiya hain to wo akalay to nahi kar sakti wo mard kaha hain jis kay saat usnay yah ghona kiya.....................usko kiyun nahi mara gaya.......... ager dono kawaray hain to unki appas main shadi bhi hosakti thi..........

ager is terha islami saza day ka qanon hain to wo siyasaat dan ko kiyun koray nahi martay jin ki family saray aam nachti hain yah sharaab pitay hain... aisa srif ghareeb inssan kay saat hota hain..

ALLHA ham sab ko sidhi rah dekhai........................:ak:

Pakistan ka to ab ALLHA hi malik:ak::ak:



HAAN G BHAI MAIN B TO YEH HE ILTAJA KER RAHI HON KAL SYKIYON KIYON AYSA HAIN MAIN JUST US LEKR KI BAAT NHE KER RAHI BUS TAREEKA KAR PER BAHES HAIN AER GOANH HOWA HAIN TUBA B KI GAI HAIN TO KIYON SAZA DI JAYE SOREH NOOR TO HUAMIN YAAD HAIN JSI MAIN SAZA KA HUAKM HUAMAIN WO SOREH KIYON NHE YAAD JIN MAIN AFU DERGOZER SY KAM LIYA GAYA HAIN KIYON HUM APNE ISLAM KO ITNA INTEHA PASSAND BANA RHAI ISLAM NY TO HER BAAT MAIN HER LEHAZ SY KOI NA KOI GONJAZ RAKHI HAIN MAGER HUM JUST KUCH SOREH MUBARIKA KO PHER K AMEL KER LAIN Y YE B NA DEKAHIN K AGY ANY WALY NESLON PER IN KA KIA ASER HO GA KIA NABI PAK PBUM NY MAAF NHE KIA THA PHER TO SHARAB PEENY WALO KO B 80 KORON KA HUKM HAIN HUM UN KO KKIYON NHE LAGTY HAIN PHER TO CHORI KERNY WALO K HATH KAT DAYNE CHAYE MAGER HUM NY KITNO K KATAIN MUJRAM KI SAZA KA TAIYON US WAKT KIA JAYE JEB SARI BATON KO DEKHA JAYE US WAGTE KA DOOR HUKAMET K AYA HUKMAMAN AWANI INSAF AUR UN KI ZINDAGIYON K IYA KIA SAHE KAM KER RAHI JIS SY GOANH NA PAHLAIN HUM NY APNI KERTOTAIN TO DEKHAIN NHE TO CHLAIN ISLAM K HESAB SY SAZA DAYNE:ak::ak::ak::ak::ak:

aabi2cool
4th April 2009, 13:45
aik sawaal to yeh hai na kay talbiaan kay paas kia saboot hain kay us larki ka jurm yeh tha ?:mm: Tv pay kuch or taraha say bhi news hain ..yeh baat to tehqeeqaat kay bad samnay aye gee kay asal waqeya kia tha...or agar yehi jurm hai bhi to talibaan koon hotay hain saza deenay walye ? Pak ki hakoomat hai jo saza banye pak day ga talibaan koi islaam kay muhafiz nahi jo aisi sazaian deetay pheeraian :tasali: ..or kisi khatoon ko sarr-i-aam aisi saza deena islam main kaha likha hai .......

دیکھیئے ڈئیر سسٹر یہاں معاملہ فہمی کی بہت سخت ضرورت ہے اول تو اس لیے کہ یہاں پر اسلامی شریعت کو براہ راست ٹارگٹ کیا جارہا ہے اور دوم اس لیے کہ موجودہ جو ملکی صورتحال ہے اس کو بھی مد نظر رکھا جانا چاہیے ۔۔ ۔ میں کل سے دیکھ رہا ہوں کہ کس طرح محض مفروضوں کی بنیاد پر میڈیا ناعاقبت اندیشی کا مظاہرہ کرتے ہوئے اس معاملہ کو ہوا بنائے ہوئے ہے اور عوام کالانعام جو کہ اصل قضیئے کہ دونوں پہلوؤں سے ناواقف ہیں میڈیا کہ پروپیگنڈہ میں آکر نہ موجودہ ملکی حالات کو سمجھ رہے ہیں اور نہ ہی اسلامی قانون شریعت کو ۔ ۔ ۔۔ اصل میں یہاں دو چیزوں کو مکس اپ کیا جارہا ہے کہ ایک ہے اسلامی قانون حد جو کہ زانی پر جاری ہوتا ہے اور دوسری چیز ہے کہ نام نہاد طالبان کا اس حد کو اپنی مرضی کہ مطابق جاری کرنا ۔ ۔دیکھیئے معاملے کو سمجھیئے ان میں* سے پہلی چیز بالکل برحق ہے کہ یہ اسلامی قانون ہے کہ اگر زانی اور زانیہ پر اسلامی قانون کہ مطابق جرم ثابت ہوجائے اور وہ زانی اور زانیہ غیر شادی شدہ ہوں تو ان پر سو کوڑوں کی حد مسلمانوں کی ایک جماعت کہ سامنے ہی لگائی جائے گی یہ سورہ نور کی دوسری*آیت کا واضح حکم ہے آیت میں عورت اور مرد پر حد کہ جاری کرنے میں کوئی تخصیص نہیں ہے ہاں البتہ شارحین،مفسرین اور فقہاء نے یہ تصریح کی ہے کہ عورت کو چار دیواری کہ اندر مگر ایک جماعت کی موجودگی میں حد لگائی جائے گی جب کہ مرد کو سرعام ۔ ۔۔ اس کہ علاوہ بھی مرد اور عورت دونوں پر حد جاری کرتے وقت بعض چیزوں میں دونوں مختلف ہیں ۔۔ مگر یہ طے ہے کہ مقدمہ جب قاضی کی عدالت تک چلا جائے اورجرم بھی ثابت ہوجائے تو تو پھر حد ہر صورت میں لگے گی اور حد کہ لگنے کہ بعد اگر وہ سچے دل سے توبہ کرلیں تو انکا اخروی عذاب ٹل جائے گا ۔ ۔ یاد رہے کہ زانی اور زانیہ پر حد جاری کرنا اسلامی سزا ہے جو کہ عین عدل ہے اس کو ظلم کہنا خود ظلم ہے کہ یہ اللہ کا قانون ہے . . . .میں کل سے دیکھ رہا ہوں کہ نام نہاد طالبان کی شریعت کی*آڑ میں پرنٹ میڈیا(یعنی انٹرنیٹ وغیرہ)اور الیکٹرانک میڈیا دونوں ہی اس سزا پر اعتراض کیئے چلے جارہے ہیں کہ یہ ظلم ہے بربریت ہے وغیرہ وغیرہ خدارا آنکھیں کھولیں اور ہر دوطرف دشمن کی سازش کو سمجھیں جو کہ اسلام مسلمان اور پاکستان کہ خلاف ہے ۔ ۔ ۔
اس واقعہ کا دوسرا پہلووہ نام نہاد طالبان ہیں کہ جنکی ویڈیو منظر عام پر آئی ہے اور اس کہ پس منظر میں بھی کئی طرح حقائق چھپے ہوسکتے ہیں اول تو اس بات کو سمجھیئے کو وہ طالبان اس اسلامی سزا کو جاری کرنے کہ اہل ہی نہیں ہیں کہ یہ اسلامی ریاست کا کام ہے ۔۔۔ ۔ چلو مان بھی لیا کہ وہ نام نہاد طالبان اللہ کی حدود کو نافذ کرنے کہ اہل ہیں تو پھر میرا سوال یہ تھا کہ جب طالبانی ملا کہ مطابق مجرمہ نے اقرار زنا کرلیا تھا تو پھر اس پر شریعت کی حد نافذ کی جانی چاہیے تھی یعنی اگر وہ شادی شدہ تھی تو رجم کیا جاتا اور اگر غیر شادی شدہ تھی تو پھر اس کو 100 کوڑے مارے جاتے کیونکہ حدود میں کسی حکومت امیر اورحاکم کو نہ معاف کرنے کا اختیار ہے اور نہ ہی کسی قسم کے رد وبدل اور تغیر کا تو پھر یہ چالیس کوڑے کہاں سے نکال لیے طالبانی ملا نے اور اس کو حدوداللہ کا نام دے دیا ؟ اور یہ بھی یاد رہے کہ حقیقت میں شریعت کی رو سے حدود کا نفاذ اسلامی ریاست کرتی ہے نہ کہ کوئی بھی انفرادی گروہ یا جتھہ ۔ ۔ ۔ ۔اب اس واقعہ کاجو دوسرا پہلو ہے وہ یہ ہے کہ یہ واقعہ اور اس جیسے دیگر کئی واقعات کا ایک خاص پس منظر اور خاص ٹائمنگ ہے کہ جس کی طرف کوئی نظر نہیں کررہا ۔ ۔ ۔ ادھر امریکی صدر افغان پالیسی کا اعلان کرتے ہوئے پاک افغان سرحد کو انتہائی حساس علاقہ قرار دیتا ہے ادھر کچھ ہی دیر بعد اسی مخصوص علاقے میں عین جمعہ کی نماز کہ دوران بم دھماکہ ہوجاتا ہے جسے کہ میڈیا خود کش حملہ قرار دیتا ہے ۔ ۔۔ ادھر لندن میں ایک بار پھر اوبامہ القاعدہ کی ساری قیادت کا پاکستان میں بیٹھ کر امریکہ پر حملہ کرنے کی پلاننگ کا الزام لگاتا ہے ادھر عین انہی دنوں حکومت اور سوات معاہدے کو سبوتاژ کرنے کہ لیے ایک ایسی ویڈیو کا اجرا کردیا جاتا ہے کہ جس کی تاریخ کا ہی تعین نہیں ہوپا رہا کہ یہ کب کی ہے ؟ خدارا آنکھیں کھولیئے اور دشمنوں کی چالوں کو سمجھیئے کہ دشمن کس کس طریقے سے ہمیں اور ہمارے میڈیا کو استعمال کرکے اسلام کو بدنام اور پاکستان کہ گرد اپنا گھیرا تنگ کررہا ہے ۔۔ ویڈیو کی جو بھی کہانی ہے میں اس کی سخت مذمت کرتا ہوں مگر جس طرح سے سب لوگوں نے فقط ایک ویڈیو کی بنیاد پر ہر شئے کو سر پر اٹھا لیا کیا ہی اچھا ہوتا کہ اس سے زیادہ اس سنگین مسئلہ کو اٹھایا جاتا کہ جو آئے دن امریکی ڈرون حملوں کی وجہ سے سینکڑوں معصوم پاکستانیوں کی جانے جارہی ہیں جن میں بچے عورتیں بوڑھے اور مرد سب شامل ہیں کاش کہ ظلم ظلم پکارنے والوں کو انکی چیخیں بھی سنائی دیں ۔ ۔ ۔ ۔

chaand_nager
4th April 2009, 14:17
دیکھیئے ڈئیر سسٹر یہاں معاملہ فہمی کی بہت سخت ضرورت ہے اول تو اس لیے کہ یہاں پر اسلامی شریعت کو براہ راست ٹارگٹ کیا جارہا ہے اور دوم اس لیے کہ موجودہ جو ملکی صورتحال ہے اس کو بھی مد نظر رکھا جانا چاہیے ۔۔ ۔ میں کل سے دیکھ رہا ہوں کہ کس طرح محض مفروضوں کی بنیاد پر میڈیا ناعاقبت اندیشی کا مظاہرہ کرتے ہوئے اس معاملہ کو ہوا بنائے ہوئے ہے اور عوام کالانعام جو کہ اصل قضیئے کہ دونوں پہلوؤں سے ناواقف ہیں میڈیا کہ پروپیگنڈہ میں آکر نہ موجودہ ملکی حالات کو سمجھ رہے ہیں اور نہ ہی اسلامی قانون شریعت کو ۔ ۔ ۔۔ اصل میں یہاں دو چیزوں کو مکس اپ کیا جارہا ہے کہ ایک ہے اسلامی قانون حد جو کہ زانی پر جاری ہوتا ہے اور دوسری چیز ہے کہ نام نہاد طالبان کا اس حد کو اپنی مرضی کہ مطابق جاری کرنا ۔ ۔دیکھیئے معاملے کو سمجھیئے ان میں* سے پہلی چیز بالکل برحق ہے کہ یہ اسلامی قانون ہے کہ اگر زانی اور زانیہ پر اسلامی قانون کہ مطابق جرم ثابت ہوجائے اور وہ زانی اور زانیہ غیر شادی شدہ ہوں تو ان پر سو کوڑوں کی حد مسلمانوں کی ایک جماعت کہ سامنے ہی لگائی جائے گی یہ سورہ نور کی دوسری*آیت کا واضح حکم ہے آیت میں عورت اور مرد پر حد کہ جاری کرنے میں کوئی تخصیص نہیں ہے ہاں البتہ شارحین،مفسرین اور فقہاء نے یہ تصریح کی ہے کہ عورت کو چار دیواری کہ اندر مگر ایک جماعت کی موجودگی میں حد لگائی جائے گی جب کہ مرد کو سرعام ۔ ۔۔ اس کہ علاوہ بھی مرد اور عورت دونوں پر حد جاری کرتے وقت بعض چیزوں میں دونوں مختلف ہیں ۔۔ مگر یہ طے ہے کہ مقدمہ جب قاضی کی عدالت تک چلا جائے اورجرم بھی ثابت ہوجائے تو تو پھر حد ہر صورت میں لگے گی اور حد کہ لگنے کہ بعد اگر وہ سچے دل سے توبہ کرلیں تو انکا اخروی عذاب ٹل جائے گا ۔ ۔ یاد رہے کہ زانی اور زانیہ پر حد جاری کرنا اسلامی سزا ہے جو کہ عین عدل ہے اس کو ظلم کہنا خود ظلم ہے کہ یہ اللہ کا قانون ہے . . . .میں کل سے دیکھ رہا ہوں کہ نام نہاد طالبان کی شریعت کی*آڑ میں پرنٹ میڈیا(یعنی انٹرنیٹ وغیرہ)اور الیکٹرانک میڈیا دونوں ہی اس سزا پر اعتراض کیئے چلے جارہے ہیں کہ یہ ظلم ہے بربریت ہے وغیرہ وغیرہ خدارا آنکھیں کھولیں اور ہر دوطرف دشمن کی سازش کو سمجھیں جو کہ اسلام مسلمان اور پاکستان کہ خلاف ہے ۔ ۔ ۔


اس واقعہ کا دوسرا پہلووہ نام نہاد طالبان ہیں کہ جنکی ویڈیو منظر عام پر آئی ہے اور اس کہ پس منظر میں بھی کئی طرح حقائق چھپے ہوسکتے ہیں اول تو اس بات کو سمجھیئے کو وہ طالبان اس اسلامی سزا کو جاری کرنے کہ اہل ہی نہیں ہیں کہ یہ اسلامی ریاست کا کام ہے ۔۔۔ ۔ چلو مان بھی لیا کہ وہ نام نہاد طالبان اللہ کی حدود کو نافذ کرنے کہ اہل ہیں تو پھر میرا سوال یہ تھا کہ جب طالبانی ملا کہ مطابق مجرمہ نے اقرار زنا کرلیا تھا تو پھر اس پر شریعت کی حد نافذ کی جانی چاہیے تھی یعنی اگر وہ شادی شدہ تھی تو رجم کیا جاتا اور اگر غیر شادی شدہ تھی تو پھر اس کو 100 کوڑے مارے جاتے کیونکہ حدود میں کسی حکومت امیر اورحاکم کو نہ معاف کرنے کا اختیار ہے اور نہ ہی کسی قسم کے رد وبدل اور تغیر کا تو پھر یہ چالیس کوڑے کہاں سے نکال لیے طالبانی ملا نے اور اس کو حدوداللہ کا نام دے دیا ؟ اور یہ بھی یاد رہے کہ حقیقت میں شریعت کی رو سے حدود کا نفاذ اسلامی ریاست کرتی ہے نہ کہ کوئی بھی انفرادی گروہ یا جتھہ ۔ ۔ ۔ ۔اب اس واقعہ کاجو دوسرا پہلو ہے وہ یہ ہے کہ یہ واقعہ اور اس جیسے دیگر کئی واقعات کا ایک خاص پس منظر اور خاص ٹائمنگ ہے کہ جس کی طرف کوئی نظر نہیں کررہا ۔ ۔ ۔ ادھر امریکی صدر افغان پالیسی کا اعلان کرتے ہوئے پاک افغان سرحد کو انتہائی حساس علاقہ قرار دیتا ہے ادھر کچھ ہی دیر بعد اسی مخصوص علاقے میں عین جمعہ کی نماز کہ دوران بم دھماکہ ہوجاتا ہے جسے کہ میڈیا خود کش حملہ قرار دیتا ہے ۔ ۔۔ ادھر لندن میں ایک بار پھر اوبامہ القاعدہ کی ساری قیادت کا پاکستان میں بیٹھ کر امریکہ پر حملہ کرنے کی پلاننگ کا الزام لگاتا ہے ادھر عین انہی دنوں حکومت اور سوات معاہدے کو سبوتاژ کرنے کہ لیے ایک ایسی ویڈیو کا اجرا کردیا جاتا ہے کہ جس کی تاریخ کا ہی تعین نہیں ہوپا رہا کہ یہ کب کی ہے ؟ خدارا آنکھیں کھولیئے اور دشمنوں کی چالوں کو سمجھیئے کہ دشمن کس کس طریقے سے ہمیں اور ہمارے میڈیا کو استعمال کرکے اسلام کو بدنام اور پاکستان کہ گرد اپنا گھیرا تنگ کررہا ہے ۔۔ ویڈیو کی جو بھی کہانی ہے میں اس کی سخت مذمت کرتا ہوں مگر جس طرح سے سب لوگوں نے فقط ایک ویڈیو کی بنیاد پر ہر شئے کو سر پر اٹھا لیا کیا ہی اچھا ہوتا کہ اس سے زیادہ اس سنگین مسئلہ کو اٹھایا جاتا کہ جو آئے دن امریکی ڈرون حملوں کی وجہ سے سینکڑوں معصوم پاکستانیوں کی جانے جارہی ہیں جن میں بچے عورتیں بوڑھے اور مرد سب شامل ہیں کاش کہ ظلم ظلم پکارنے والوں کو انکی چیخیں بھی سنائی دیں ۔ ۔ ۔ ۔



ap ka poraaaaa islam poriiiiiiiiiiiiii sazain bus ek sooreh noor per akher kahtm ho jata haun ? ap ko jo wakiyat main ny batain hain wo nazer nhe arhy soreh noor main jo hazret ayesha razi tala un ha ka wakiya sunay hain wo nazer nhe arha hain ?aur doseri baat main ap ki is baat sy bilkol mutafiq hon k sara ek sazish ki ja rahi ager is cheez ko maan liya jaye to 3 din pahly 2 khawteen ko mara gaya swat main unho ny kud live bayan diya aur mara kiyon gaya?is liya k wo ouretain gher sy baher nekli the bazar gain teh dokaandar sy baat ker rahi he aur is wakiay k baremain jeb ek sahab sy poucha gaya jo kal t.v py thay aj.tv channal py ynho ny kha g bilkol unho ny islam k khilaf kam kia to bhai kia gher sy baher nekalna dokaandar sy baat kerna yeh islam k khilaf ho gaya?is ka metlub to ALLAH MAAF KERY K HUAMIN APNI MOTHERS PY YA KUD APNE AP KO BUS GHERON MAIN QAID KER LAYNA CHAIYE HUMRA YEH CONCEPT B KAHTM HONA CHAYE PHER K HAZRET KHATIJA TUL QUBRA RAZI TALA UN HA KAROBAR KERTI THE TO KIA WO TIJART KI GERZ SY JATI NHE THE ? MAAN LAYTAIN HAIN YEH VED KHALT HAIN MAGER JUST IS BUNYAAD PY GALT HO GAI K YEH MUSLIMU KA KAM HAIN JO K ISLAM KO AZIYT NAK BANAY PER TULAY HAIN JEB ALLAH NY TUMHRY AIRBO PER PERDA DALA HAIN JEB ALLAH NY ZANA K GAWAHI MAIN 4 MERDON KI SHAHDET KAH HUKAM FERMA YEH B SOUCHNY KI BAAT HAIN K GONAH K IRTAQAB K WAQT ZAHERI BAAT HAIN KOI 4 LOGO KO KHARA KER K TO GONAH NHE KERY GA ALLAH NY PERDA DALA NA NABI PAK PBUM NY JEB KUD TUHMET LAGNY WALY KO MAAF FERMA DIYA TO HUM KIA ALLAH MAAF KER ZAYDA HE AGYE HAIN SAZAIN DAYNE WALY ?

chaand_nager
4th April 2009, 14:23
Nabi pak PBUM ny to us zani ouret tak ko itne optins di k wo apni baat sy chup ho jain jis ny kud aker 3 bar iqrar kia tha k k us nymerd ko bahkaya usy saza di ajye ta ky akherit main usy saza na mily teb ja us ouret ka bar bar israr per suy sangsar kia gaya ager nabi pak pbum chaty to usi waqt insaf kerty mager teb unhony b ek ouret per itne sakht saza dayne sy ijtanab kia mager us ourt k bar bar israr per usy sangsar kia gaya

*Samra*
4th April 2009, 14:23
ap ka poraaaaa islam poriiiiiiiiiiiiii sazain bus ek sooreh noor per akher kahtm ho jata haun ? ap ko jo wakiyat main ny batain hain wo nazer nhe arhy soreh noor main jo hazret ayesha razi tala un ha ka wakiya sunay hain wo nazer nhe arha hain ?aur doseri baat main ap ki is baat sy bilkol mutafiq hon k sara ek sazish ki ja rahi ager is cheez ko maan liya jaye to 3 din pahly 2 khawteen ko mara gaya swat main unho ny kud live bayan diya aur mara kiyon gaya?is liya k wo ouretain gher sy baher nekli the bazar gain teh dokaandar sy baat ker rahi he aur is wakiay k baremain jeb ek sahab sy poucha gaya jo kal t.v py thay aj.tv channal py ynho ny kha g bilkol unho ny islam k khilaf kam kia to bhai kia gher sy baher nekalna dokaandar sy baat kerna yeh islam k khilaf ho gaya?is ka metlub to ALLAH MAAF KERY K HUAMIN APNI MOTHERS PY YA KUD APNE AP KO BUS GHERON MAIN QAID KER LAYNA CHAIYE HUMRA YEH CONCEPT B KAHTM HONA CHAYE PHER K HAZRET KHATIJA TUL QUBRA RAZI TALA UN HA KAROBAR KERTI THE TO KIA WO TIJART KI GERZ SY JATI NHE THE ? MAAN LAYTAIN HAIN YEH VED KHALT HAIN MAGER JUST IS BUNYAAD PY GALT HO GAI K YEH MUSLIMU KA KAM HAIN JO K ISLAM KO AZIYT NAK BANAY PER TULAY HAIN JEB ALLAH NY TUMHRY AIRBO PER PERDA DALA HAIN JEB ALLAH NY ZANA K GAWAHI MAIN 4 MERDON KI SHAHDET KAH HUKAM FERMA YEH B SOUCHNY KI BAAT HAIN K GONAH K IRTAQAB K WAQT ZAHERI BAAT HAIN KOI 4 LOGO KO KHARA KER K TO GONAH NHE KERY GA ALLAH NY PERDA DALA NA NABI PAK PBUM NY JEB KUD TUHMET LAGNY WALY KO MAAF FERMA DIYA TO HUM KIA ALLAH MAAF KER ZAYDA HE AGYE HAIN SAZAIN DAYNE WALY ?


:thmbup: i agree ... aap ne kaafi gheri baatain ki hain, mai apki bataou se itefaq kerti hoon.
meri bhi yehi soch hai, Islam mai kahien bhi jabbar nahi he, aur jaha per bhi saza ka hukam he... wo pehle narmi se sharoo hota he.
Pihr Kore lagaane wali baat mai jaha tak mera ilm hai, Kore lagaane ka tab hukam he jabb kam se kam 3 Log Gawaah hou.

aabi2cool
4th April 2009, 14:26
tasawer-e-adel aur is ki khusosiyaat
ap nay ab tak jo sari ayaat batain muje kisi sy b koi inkar nhe na he inkar ho sakta lafz ba lafz bilkol theakh mager mery bhai ap ny ab tak jitneeeeeeeeeeeee
ayaat batai hain wo ek he cheez ko define ker rahi hain
saza saza aur saza mager ap zera un ayaat mubaraka per b roshni fermain gay jis main
maaf kerna afu der gozer kerna fermya gaya/ap ny saza ki to boaht sari ayaat post ki mger hayret hain k
maaf afu dergozer kerna is bare main kuch nhe fermya to main ap batati chalo mery bhai




اسلام علیکم محترمہ میں نے آپ سے کل بھی عرض کی تھی کہ آپ اسلامی قانون حدود و تعزیرات کا مطالعہ فرمائیں آپ بہت سی چیزوں کو مکس اپ کیئے جارہی ہیں مجھے آپکو بچوں کی طرح سمجھانا پڑے گا اول تو میری جاب کی نیچر یہ ہے کہ میرے پاس اتنا وقت نہین ہوتا مگر پھر بھی کوشش کرتا ہوں آپ کو سب چیزیں ایک بار پھر سے سمجھانے کی ۔ ۔ ۔ ۔۔ مگر خدارا اس وقت تک خاموش رہیے جب تک کہ میں آپ کہ اٹھائے گئے تمام سوالوں کا جواب نہ دے لوں ۔۔ ۔ ۔ ۔ ۔

*Samra*
4th April 2009, 14:32
app kesi ko yah nahi kah sakti ka YAQEENAN Quran nahi perha u dont know about others definately :rose
Hain main ne pora Quran perha ha lakin pora Tarjuma se nahi perha kahen kahen se tarjuma or tafseer se perhna sekha ha or Allah ka shuker ha ka Arabic perh ker samagh aa jate ha ka kis bare main baat ho rahe ha

Zani mard or aurat ko kore mare jain to khabar ke mutabik wo aurat zani the to us ko kore mare gaye kunkah gunnah main koi maffi nahi ha,
App yah kis terhain se kah sakte hain ka us aurat ko 3 dafa warning nahi de gaye :mm:

jab Hamary Rasool (PBUH) ne saza ke bare main Bataya tha to yah Wazah Alfaz main ferma deya tha kah ager Gunah App kay ghar main se bhi kesi ne kia to Mafi ke koi gunjayesh nahi ha.

or Islam main sab se Bahtreem Baat yah ha kah jb koi appne Keya ke saza sab ke samnay la leta ha to phir us ka wo Gunah Dhool jata ha or society main kesi ko bhi Yah Haq nahi hota ha kah wo us ke past ke bare main us ko taneee de or jo us ko tanee da ga wo phir Bohtan lagaye ga or Bohtan ke saza to Zani se bhi zeda ha


koi achanaak uth ker to gunah ki tarf nahi chal parta,. Burai aur gunah pehle chote Level se hi sharoo hoti hain. aisy nobat paish anye ki kiya waja hai?

kiya is saza ki sirf Larki hi haqdaar hai??

chaand_nager
4th April 2009, 14:34
اسلام علیکم محترمہ میں نے آپ سے کل بھی عرض کی تھی کہ آپ اسلامی قانون حدود و تعزیرات کا مطالعہ فرمائیں آپ بہت سی چیزوں کو مکس اپ کیئے جارہی ہیں مجھے آپکو بچوں کی طرح سمجھانا پڑے گا اول تو میری جاب کی نیچر یہ ہے کہ میرے پاس اتنا وقت نہین ہوتا مگر پھر بھی کوشش کرتا ہوں آپ کو سب چیزیں ایک بار پھر سے سمجھانے کی ۔ ۔ ۔ ۔۔ مگر خدارا اس وقت تک خاموش رہیے جب تک کہ میں آپ کہ اٹھائے گئے تمام سوالوں کا جواب نہ دے لوں ۔۔ ۔ ۔ ۔ ۔




aur main ap sy arz ki the k main ny jo jo batain likhi hain aj sari slami kuteb sy le hain main ny books k name bata deti hon page nums b bata dayti hon aur sri batain chor dain kia harzt ayesha razi tala un ha ka wakiya quran pak main soreh noor main derj nhe ya yeh b ap k bakol meri apni he baaat hain ? Ya pher ap yeh kah rahain ho k 25 years tak main jitne islamic books pheri hain 10 sy ly ker masters tak apne llb tak apne css tak sari islamic books wo sahe nhe hain sari islami books jo main ny pheri hain bus khani hain ager ap yeh kahna chaty hain bhai to what can i say bus itna kahon g k kuda ra islam boaht bohat narum mazhab hain us ny jo sazain tenbhi k liya banay hain suy ayse he her ek per nafez ker dayna yeh kahan ka insaf hain jsi main na maafi ki gonjaish rakh rahy jeb k humry pak nabi pbum ny to maf b kiye hain aur yeh met kahin g ayh jo wakiyat bayan kiye hain apne pass sy nhe ker rahi yeh books main likha ap sialmic history of law
ap islam institutions books utha k dkahin perhain ap ko pat alg jaye ga ya wo wo sariiiiiii kitabain galt hain /??????????????

aabi2cool
4th April 2009, 14:40
aur main ap sy arz ki the k main ny jo jo batain likhi hain aj sari slami kuteb sy le hain main ny books k name bata deti hon page nums b bata dayti hon aur sri batain chor dain kia harzt ayesha razi tala un ha ka wakiya quran pak main soreh noor main derj nhe ya yeh b ap k bakol meri apni he baaat hain ? Ya pher ap yeh kah rahain ho k 25 years tak main jitne islamic books pheri hain 10 sy ly ker masters tak apne llb tak apne css tak sari islamic books wo sahe nhe hain sari islami books jo main ny pheri hain bus khani hain ager ap yeh kahna chaty hain bhai to what can i say bus itna kahon g k kuda ra islam boaht bohat narum mazhab hain us ny jo sazain tenbhi k liya banay hain suy ayse he her ek per nafez ker dayna yeh kahan ka insaf hain jsi main na maafi ki gonjaish rakh rahy jeb k humry pak nabi pbum ny to maf b kiye hain aur yeh met kahin g ayh jo wakiyat bayan kiye hain apne pass sy nhe ker rahi yeh books main likha ap sialmic history of law
ap islam institutions books utha k dkahin perhain ap ko pat alg jaye ga ya wo wo sariiiiiii kitabain galt hain /??????????????

آپ فکر نہ کریں اور اطمینان رکھیئے صبر کا دامن پکڑے ہوئے میں آپ کہ اٹھائے گئے تمام نقاط کا جواب دوں گا ان شاء اللہ العزیز مگر آپ خدارا زرا دھیرج رکھیئے اور مجھے تھوڑا وقت دیں میرے پاس وقت کی بہت کمی ہوتی ہے میں ایک سوال کا جواب دینے لگتا ہوں تو مزید اٹھا دیتی ہیں سو صبر پلیزززززززززز

chaand_nager
4th April 2009, 14:43
ap jitne sazain hain un per implementations ki sari ayyat lay ayain sare wakiya lay ayin aur main teb b ap ko yeh he kahon g afu dergozer sy bher koi asool nhe hain . ap ki her baat maanti hon main kisi baat sy ikhtilaf nhe mager iktilaf just itna k ap ny kaha k mafi ki gunjaish nhe hain sazaon main sare aam kore marny he chayein merdon k samny jeb islam ny humkm dia hain gair merd ka gair ouret per nazer dalna he haram ahin teb ap kayse kah sakty hian k usi ouret ko ALLAH chaye ga k sare aam merdon sy marwaya jaye ap muje yeh optin bata dain chalin k kahan likha hain k ouret ko kore merd he mary ga sari baatin maan le mager just bata dain kahan likah hain k ouret ko zameen py leta do aur us ki tangain gair merd paker lain halan k naharam ouret ko hath laga haram hain to pher kayse is cheez ki ijzat di ja sakti hain bhai mery 100 korain aur sangar sar jayse sakht tareen sazain is liya rakhi gai ta ky muslim is khuf sy koi gonah na keraina ur ager koi muslim is ka irtakab kerta hain to iqrar kerta hain tuba kerta hain to yeh zarori nhe k kisi ouret ki izet ko sare aam laya jaye usy zaniya kah ker us ki zindagiki berbad ker di ajye ager wo tuba ker ly aur sahe rasty per chal nekaly 3 optin islam ny di hain ouret k liya main ny uper ayaat ka terjuma likha hain jsiamin pahly piar sy samjho pher dant ker pher maro aur maro b is terhan k berdast ker ly ouret jo nazakt ka mujsma hoi hain 100 kore berdasht ker sakti hain ?ker b lay to kia us ko ki haq nhe k apne tuba ker k wo ek sahe zindgai gozary

chaand_nager
4th April 2009, 14:46
ok iam waiting t.c now iam got dc light jany wali hain humri so take care

shela
4th April 2009, 15:44
ager lerki nay ghona kiya hain to wo akalay to nahi kar sakti wo mard kaha hain jis kay saat usnay yah ghona kiya.....................usko kiyun nahi mara gaya.......... ager dono kawaray hain to unki appas main shadi bhi hosakti thi..........

ager is terha islami saza day ka qanon hain to wo siyasaat dan ko kiyun koray nahi martay jin ki family saray aam nachti hain yah sharaab pitay hain... aisa srif ghareeb inssan kay saat hota hain..

ALLHA ham sab ko sidhi rah dekhai........................:ak:

Pakistan ka to ab ALLHA hi malik:ak::ak:

Emotional kun ho rahe hain:ak:Na pori Khabar ka pata na Halat-o-Wakiyat ka pata.:tasali:

Adhore Khabroon ka yahi nateja hota ha,:(

sab se bara Emotioanl Insan Amir Liaqat:hahaha:(He is the source of information)

Media sirf ek manzar dekha ker sari Awam ko Emotional Blackmale ker raha ha And Nothing:na:

Kia app ko confirm ha ka us mard ko saza nahi mile:mm:


or jahain tak siyasat danoon or us ke familes ke baat ha to zara Ghoor se Tv dekhain yahe Loog hain jo is mamle ko peet rahe hain :khi:Zahir se baat ha Talebaan ager aa gaye to in sab per to sb se pehly koron372-shed ke barish ho ge372-haha

aabi2cool
4th April 2009, 16:03
ap ka poraaaaa islam poriiiiiiiiiiiiii sazain bus ek sooreh noor per akher kahtm ho jata haun ? Ap ko jo wakiyat main ny batain hain wo nazer nhe arhy soreh noor main jo hazret ayesha razi tala un ha ka wakiya sunay hain wo nazer nhe arha hain ?aur doseri baat main ap ki is baat sy bilkol mutafiq hon k sara ek sazish ki ja rahi ager is cheez ko maan liya jaye to 3 din pahly 2 khawteen ko mara gaya swat main unho ny kud live bayan diya aur mara kiyon gaya?is liya k wo ouretain gher sy baher nekli the bazar gain teh dokaandar sy baat ker rahi he aur is wakiay k baremain jeb ek sahab sy poucha gaya jo kal t.v py thay aj.tv channal py ynho ny kha g bilkol unho ny islam k khilaf kam kia to bhai kia gher sy baher nekalna dokaandar sy baat kerna yeh islam k khilaf ho gaya?is ka metlub to allah maaf kery k huamin apni mothers py ya kud apne ap ko bus gheron main qaid ker layna chaiye humra yeh concept b kahtm hona chaye pher k hazret khatija tul qubra razi tala un ha karobar kerti the to kia wo tijart ki gerz sy jati nhe the ? Maan laytain hain yeh ved khalt hain mager just is bunyaad py galt ho gai k yeh muslimu ka kam hain jo k islam ko aziyt nak banay per tulay hain jeb allah ny tumhry airbo per perda dala hain jeb allah ny zana k gawahi main 4 merdon ki shahdet kah hukam ferma yeh b souchny ki baat hain k gonah k irtaqab k waqt zaheri baat hain koi 4 logo ko khara ker k to gonah nhe kery ga allah ny perda dala na nabi pak pbum ny jeb kud tuhmet lagny waly ko maaf ferma diya to hum kia allah maaf ker zayda he agye hain sazain dayne waly ?

اسلام علیکم محترمہ زونش صاحبہ مجھے نہیں معلوم کہ آپکے نک کا اصل تلفظ کیا ہے سو کمی بیشی معاف ...سب سے پہلے تو اتنا جان لیجیئے کہ مزکورہ ویڈیو میں جو نام نہاد طالبان کا اسلام دکھایا گیا ہے میں اس کہ سخت مخالف ہوں اور اسکی مزمت کرتا ہوں اور اسکی مزمت کرنے پر میرا آپ کہ ساتھ کوئی اختلاف نہیں ۔۔ اول تو میں ان نام نہاد طالبان کو اسلام اور شریعت کی ر و سے اس قابل ہی نہیں سمجھتا کہ وہ کسی بھی مجرم یا ملزم پر حدود اللہ کی تنفیذ کہ مجاز ہوں یعنی وہ کسی بھی مسلمان پر چاہے اس پر محض الزام ہو یا پھر وہ مجرم ہی کیوں نہ ثابت ہوجائے پرحدود اللہ کو نافذ کرنے کہ اہل نہیں ہیں ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔لہزا اب آپ سے گزارش ہے کہ مزکورہ ویڈیو والے واقعہ کو اب ایک طرف رکھ دیں اور میرا آپ کہ ساتھ جو اصل اختلاف ہے یعنی حدود اللہ کی تنفیذ کہ بارے میں یعنی جب ایک ایسا مقدمہ کہ جس میں حدود اللہ کی پامالی کی گئی ہو جب اسلامی شریعت کی رو سے قاضی کہ سامنے پیش ہوجائے اور مقدمہ میں ملزم کا مجرم ہونا ہر طرح سے ثابت بھی ہوجائے تو آیا کیا قاضی کو یہ اختیار حاصل ہوگا کہ وہ حدود اللہ میں کمی بیشی کرتے ہوئے محض عفو درگزر کی بنیاد پر مجرمین کو معاف کردے ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟ آپکا کہنا ہے کہ جی ہاں اسے یہ اختیار نہ صرف حاصل ہے بلکہ اس کہ لیے افضل یہ کہ وہ مجرمین کو بار بار چھوڑ دے (جیسا کہ آپ نے ایک جگہ فرمایا کہ تین بار تنبیہ کی جائے گی)جبکہ ہمارا یہ کہنا ہے کہ جب حدوداللہ کی پامالی کہ واقعات میں مقدمہ اسلامی عدالت میں پیش ہوجائے اور قاضی ہر طرح سے مطمئن ہوجائے تو اب وہ حدود اللہ میں نہ تو کمی بیشی کرسکتا ہے اور نہ ہی انکو معاف کرسکتا ہے اگر ایسا کرئے گا تو خود اپنے ساتھ ظلم کرئے گا کہ اس نے خود کو اللہ پاک کی ذات سے زیادہ رحم کرنے والا سمجھ لیا ہے ۔ ۔ اب آئندہ صفحات میں ہمارے اور آپکے درمیان محض اسی مسئلہ کی وضاحت پر گفتگو ہوگی ۔ ۔ ۔ ۔جاری ہے ۔ ۔ ۔۔ ۔ ۔ ۔

shela
4th April 2009, 16:19
koi achanaak uth ker to gunah ki tarf nahi chal parta,. Burai aur gunah pehle chote Level se hi sharoo hoti hain. aisy nobat paish anye ki kiya waja hai?

kiya is saza ki sirf Larki hi haqdaar hai??
:eye:
esi nobat paish ane ke yah waja ha kah

boraye ko phalne bholne deya ja raha ha or

Hum sab iman ke Kamzoor tareen makam per hain

(Khamoshi se borae ko phalne da rahe hain lakin dil se us ko bora jante hain)

ager Borai ko chote level per he mar deya jaye to wo kabhi bhi shedat ikhtar nahi kere ge:eye:

(I am not talking about the vedio which is Adhore Khabar becase i am not sure about the circumstance and the situation)

lakin main "Zani ko sar-e-aam koroon ke saza ager unmarid hain or sar-e-aam Sangsar ke saza if married" Ke Haq main hoon:salam:

shela
4th April 2009, 16:24
آپ فکر نہ کریں اور اطمینان رکھیئے صبر کا دامن پکڑے ہوئے میں آپ کہ اٹھائے گئے تمام نقاط کا جواب دوں گا ان شاء اللہ العزیز مگر آپ خدارا زرا دھیرج رکھیئے اور مجھے تھوڑا وقت دیں میرے پاس وقت کی بہت کمی ہوتی ہے میں ایک سوال کا جواب دینے لگتا ہوں تو مزید اٹھا دیتی ہیں سو صبر پلیزززززززززز


372-haha

zoniash kitne KG ke sawalat utha chuke ho ab tak:bb: Abbicool ko kamaz kam Khana to khane do:na:

*Samra*
4th April 2009, 16:26
Emotional kun ho rahe hain:ak:Na pori Khabar ka pata na Halat-o-Wakiyat ka pata.:tasali:

Adhore Khabroon ka yahi nateja hota ha,:(

sab se bara Emotioanl Insan Amir Liaqat:hahaha:(He is the source of information)

Media sirf ek manzar dekha ker sari Awam ko Emotional Blackmale ker raha ha And Nothing:na:

Kia app ko confirm ha ka us mard ko saza nahi mile:mm:


or jahain tak siyasat danoon or us ke familes ke baat ha to zara Ghoor se Tv dekhain yahe Loog hain jo is mamle ko peet rahe hain :khi:Zahir se baat ha Talebaan ager aa gaye to in sab per to sb se pehly koron372-shed ke barish ho ge372-haha


poori information mujhe nahi he. yeh baat apne thik kahiye. Aajkal jo kuch horaha he Pakistan aur muslim countires mai...wo bohat hi afsosnaak halat hai.

*Samra*
4th April 2009, 16:29
:eye:
esi nobat paish ane ke yah waja ha kah

boraye ko phalne bholne deya ja raha ha or

Hum sab iman ke Kamzoor tareen makam per hain

(Khamoshi se borae ko phalne da rahe hain lakin dil se us ko bora jante hain)

ager Borai ko chote level per he mar deya jaye to wo kabhi bhi shedat ikhtar nahi kere ge:eye:

(I am not talking about the vedio which is Adhore Khabar becase i am not sure about the circumstance and the situation)

lakin main "Zani ko sar-e-aam koroon ke saza ager unmarid hain or sar-e-aam Sangsar ke saza if married" Ke Haq main hoon:salam:






zaahir he burai chote level se hi sharo hoti he..aur anjam bura hi hota hai. Apko nahi lagta pakistan mai jo iss waqt aik "fashion" chal para hai west ki copies kerne ka..wo chahye koi RICH log hou yaa middle loug...wo saab WEST ki copy mai lage huye hain.

jab ghar mai parents apni Ulaad ki tarbiyat se ghaafil rehain gai to... kisne kiya Muashre mai behtri kerni hai.

shela
4th April 2009, 16:39
poori information mujhe nahi he. yeh baat apne thik kahiye. Aajkal jo kuch horaha he Pakistan aur muslim countires mai...wo bohat hi afsosnaak halat hai.

sirf mughe or app ko nahi :na: blake kesi ko bhi nahi pata pori khabar ka372-haha

or main ne to sona ha yah waqia Sawat ka nahi Afghanistan ka ha:khi: lo ker lo gal 372-haha
Pakistani haqomat appni adalatain khol ker beth gaye hain Yah Haqomat or Media sirf lOOK BUSY DO NATHING wala kaam ker rahe hain

shela
4th April 2009, 16:44
zaahir he burai chote level se hi sharo hoti he..aur anjam bura hi hota hai. Apko nahi lagta pakistan mai jo iss waqt aik "fashion" chal para hai west ki copies kerne ka..wo chahye koi RICH log hou yaa middle loug...wo saab WEST ki copy mai lage huye hain.

jab ghar mai parents apni Ulaad ki tarbiyat se ghaafil rehain gai to... kisne kiya Muashre mai behtri kerni hai.
:salam: i agree with u:salam:

Burai ke Root Fashion ka jalwa ha372-haha

ummid
4th April 2009, 16:50
........

shela
4th April 2009, 16:53
........
u ne kia likha me is ko perhne ke leya kitne Number ke anak lagane pare ge:cn:

*Samra*
4th April 2009, 17:00
:salam: i agree with u:salam:

Burai ke Root Fashion ka jalwa ha372-haha


shela yeh koi mazaaq nahi hai .. aik dardnaaak haqeekat hai. aap ko nahi maloom kitni Nassalain tabah horahi hain...aur aap log issi tarah hunste raho

shela
4th April 2009, 17:12
shela yeh koi mazaaq nahi hai .. aik dardnaaak haqeekat hai. aap ko nahi maloom kitni Nassalain tabah horahi hain...aur aap log issi tarah hunste raho

Fashion ka jalwa Mazak ha or kia ha:khi:
ek larki tight paint and short sleveles skurti pehan ke ghar se nikalte ha phir phir jab loog gandi nazroon se dekhte hain to Net ke dopate se jism chupane ke koshi kare to wo mazak ke lage ge or kia372-haha Bhai ek cheez jo hum muslims ker he nahi sakte to wo kerte how mazaheya he lagain gay
same is the case with boys:khi: ab larki ke example main ne da de larke ke example koi larka he da :donno:

log372-scarekidhar hain log me to akale hoo:khi:

i know tha main bhi yaheen is donya main hoon or U bhi:eye:
lakin main appni nasal ko to sanwar sakte hoo bacha sakte hoo because it is in my control but not others lakin jis terhan burai chote level se choro ho ker bhalte ha is terhain achae bhi chote level se choro ho ker phalte ha:dance2:

ummid
4th April 2009, 17:18
u ne kia likha me is ko perhne ke leya kitne Number ke anak lagane pare ge:cn:

nothing to say girl...............

aabi2cool
4th April 2009, 17:23
اسلام علیکم سب سے پہلے تو یہ سمجھ لیجیئے کہ اسلامی سزائیں ہوتی کیا ہیں اور انکی تعریفات کیا ہیں ؟
دنیا کے عام قوانین میں جرائم کی تمام سزاؤں کو تعزیرات کا نام دیا جاتاہے خواہ وہ کسی بھی جرم سے متعلق ہوںاس لئے تعزیرات ہند تعزیرات پاکستان کے نام سے جو کتابیں ملک میں پائی جاتی ہیں اس میں ہرقسم کے جرائم اور ہرطرح کی سزاؤں کا ذکر ہے جب کہ شریعت اسلامیہ میں جرائم کی سزاؤں کی تین قسمیں ہیں:
:․․․حدود :․․․قصاص :․․․تعزیرات۔
جرائم کی وہ سزا جو قرآن وسنت اور اجماع نے متعین کردی ہو اس کی دو قسمیں ہیں: ۱:․․․حدود،۲:․․․․قصاص
حدود
شرعی اصطلاح میں ایسے جرم کی سزا کو کہا جاتاہے جس میں حق اللہ غالب ہو۔
قصاص
ایسی سزا جس میں حق العبد غالب ہو۔
تعزیرات
کسی بھی جرم کی وہ سزا جو قرآن وسنت نے متعین نہیں فرمائی بلکہ اسے حاکم ِ وقت یا قاضی کی صوابدید پر چھوڑدیا۔
شریعت اسلام میں حدود کی تعداد چھ ہے: ۱:․․․ ڈاکہ ۲:․․․چوری ۳:․․․زنا ۴:․․․تہمتِ زنا ۵:․․․ شراب خوری ۶:․․․مرتد کی سزا۔
حدود وقصاص میں فرق
جرائم کی وہ سزا جو قرآن وسنت نے متعین فرمادی ہے اس کی دو قسمیں ہیں:۱:․․ ایک حد ۲:․․․ قصاص۔ بنیادی طور پر یہ دونوں اگرچہ اس امر میں مشترک ہیں کہ ان میں سزاکی تعیین قرآن کریم اور سنت رسول کریم ا سے کی جاتی ہے لیکن ان دونوں کے حکم میں یہ فرق ہے کہ: حدود ․․․پانچ جرائم کی سزائیں․․․ جس طرح کوئی حاکم وامیر کم یا معاف نہیں کرسکتا اسی طرح توبہ کر لینے سے بھی معاف نہیں ہوتیں البتہ اگر اخلاص کے ساتھ توبہ کرلے تو آخرت میں معافی ہوجاتی ہے۔ ان پانچ میں سے صرف ڈاکہ کی سزا ایسی ہے کہ اگر ڈاکو گرفتاری سے قبل توبہ کرلے اور معاملات سے اس کی توبہ کا اطمینان ہوجائے تو یہ حد ساقط ہوجائے گی البتہ گرفتاری کے بعد کی توبہ کا اعتبار نہیں ہے۔ دوسری حدود توبہ سے بھی دنیا کے حق میں معاف نہیں ہوتیں خواہ توبہ گرفتاری سے قبل کرے یا بعد میں۔ قصاص کی سزا بھی اگرچہ حدود کی طرح قرآن کریم میں متعین ہے کہ جان کے بدلے میں جان اور زخموں کے بدلہ میں مساوی زخموں کی سزا دی جائے لیکن حدود کو چونکہ بحیثیت حق اللہ کے نافذ کیا جاتا ہے اس لئے اگر صاحب حق معاف بھی کرنا چاہے تو معاف نہیں ہوگا اور حد ساقط نہیں ہوگی مثلاً جس کا مال چوری کیا ہے وہ معاف بھی کردے تو چوری کی شرعی سزا معاف نہ ہوگی۔رہا قصاص کا معاملہ تو چونکہ اس میں حق العبد غالب ہے اس لئے ولی مقتول کو اختیار ہے کہ وہ قصاص لے لے یا معاف کردے اسی طرح زخموں کے قصاص میں بھی یہی حکم ہے۔
حدود اور تعزیر کا فرق
حدود اللہ ان سزاؤں کو کہا جاتا ہے جو متعین سزائیں ہیں اور تعزیر غیر متعینہ سزاؤں کوکہا جاتاہے۔ تمام تعزیری جرائم میں صحیح اور جائز سفارش سنی جاسکتی ہے لیکن حدود میں سفارش کرنا جائز نہیں ہے اور نہ ہی اس کا سننا جائز ہے۔ حدود کی سزائیں چونکہ سخت ہیں اور ان کی شرائط بھی کڑی ہیں اس لئے شبہات سے ساقط ہوجاتی ہیں چنانچہ مسلمہ قانون ہے : الحدود تندرئ بالشبہات جبکہ تعزیر شبہ سے ساقط نہیں ہوتی۔ تعزیری سزائیں حالات کے تحت ہلکی سے ہلکی بھی کی جاسکتی ہیں اور سخت سے سخت بھی اور یہ اختیار بھی ہے کہ انہیں معاف کردیا جائے اور حدود میں کسی حکومت امیر اورحاکم کو نہ معاف کرنے کا اختیار ہے اور نہ ہی کسی قسم کے رد وبدل اور تغیر کا۔
تعزیر کے سلسلہ میں ایک وضاحت
جن جرائم میں شریعت نے سزا متعین نہیں فرمائی ان میں دو صورتیں ہیں: ایک یہ کہ قاضی کے اختیار میں دیدیا جائے کہ وہ ہر زمانہ ہر مکان اور ماحول کے لحاظ سے جیسی اور جتنی سزا انسداد جرم کے لئے ضروری سمجھے وہ جاری کرے۔ دوسرے یہ کہ اسلامی حکومت شرعی قواعد کا لحاظ کرتے ہوئے قاضیوں کے اختیارات پر کوئی پابندی لگادے اور جرائم کی سزاؤں کا کوئی خاص پیمانہ مقرر کردے دونوں صورتیں جائز ہیں لیکن دوسری صورت آج کل کے حالات کے پیش نظر زیادہ بہتر ہے۔
حدود اللہ کہ نفاذ کا حکم
اللہ سبحانہ و تعالى كا فرمان ہے:
﴿ اور وہ لوگ جو اللہ تعالى كے ساتھ كسى اور كو الہ نہيں بناتے اور نہ ہى وہ اللہ تعالى كے حرام كردہ كسى نفس كو ناحق قتل كرتے ہيں، اور نہ ہى زنا كا ارتكاب كرتے ہيں، اور جو كوئى يہ كام كرے وہ گنہگار ہے، اسے روز قيامت ڈبل عذاب ديا جائيگا، اور وہ ذليل ہو كر اس ميں ہميشہ رہے گا، ليكن جو شخص توبہ كر لے اور ايمان لے آئے اور اعمال صالحہ كرے، تو يہى وہ لوگ ہيں اللہ تعالى جن كى برائيوں كو نيكيوں ميں بدل ديتے ہيں، اور اللہ تعالى بخشنے والا رحم كرنے والا ہے، اور جو كوئى توبہ كر لے اور نيك و صالح اعمال كرے تو اس نے اللہ كى طرف توبہ كر لى ہے ﴾
الفرقان ( 68 - 71 ).
نوٹ:- جو حدود حكمران تك پہنچ جائيں ان كا جارى كرنا واجب ہو جاتا ہے، ليكن جو نہ پہنچے تو افضل يہى ہے كہ اس سے توبہ كر لى جائے اور اللہ تعالى كى پردہ پوشى كو پردہ ميں ہى رہنے ديا جائے.
" جب شرعى حاكم كے پاس كسى حد كا معاملہ پہنچ جائے، اور كافى دلائل كے ساتھ وہ ثابت بھى ہو جائے تو اس حد كو لگانا واجب ہے، اور بالاجماع وہ حد توبہ سے ساقط نہيں ہو گى، غامدى قبيلہ كى عورت توبہ كرنے كے بعد نبى كريم صلى اللہ عليہ وسلم كے پاس آئى اور مطالبہ كيا كہ اسے حد لگائى جائے، تو نبى كريم صلى اللہ عليہ وسلم نے اس كے بارہ ميں فرمايا تھا:
" يقينا اس نے ايسى توبہ كى ہے اگر اہل مدينہ وہ توبہ كريں تو انہيں كافى ہو جائے "
اور اس كے باوجود نبى كريم صلى اللہ عليہ وسلم نے اس كو شرعى حد لگائى، ليكن حكمران كے علاوہ كسى اور كو يہ حق حاصل نہيں.
ليكن جب سزا حكمران كے پاس نہ پہنچى ہو: تو مسلمان آدمى كو چاہيے كہ اللہ تعالى نے جس كو پردہ ميں ركھا ہے اسے پردہ ميں رہنے دے، اور وہ اللہ تعالى كے سامنے سچى اور پكى توبہ كرے، اميد ہے كہ اللہ تعالى اس كى توبہ قبول فرمائيگا "
نبى كريم صلى اللہ عليہ وسلم كا فرمان ہے:
" تم سے پہلے اسى ليے ہلاك كر ديئے گئے كہ جب ان ميں كوئى شرف و مرتبہ والا چورى كر ليتا تو اسے چھوڑ ديتے، اور جب ان ميں سے كوئى كمزور شخص چورى كرتا تو اس پر حد جارى كر ديتے، اللہ كى قسم اگر فاطمہ بنت محمد ( صلى اللہ عليہ وسلم ) بھى چورى كرتى تو ميں اس كا ضرور ہاتھ كاٹ ديتا "
چنانچہ حضور صلّی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد ہے دور ونزدیک حدود اللہ کو قائم کرو، کسی ملامت کرنے والے کی ملامت کا خوف تمہیں اس سے نہ روکے۔ (ابن ماجہ)
اسی طرح حضرت عبد اللہ بن عمر رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں کہ اللہ کے رسول اللہ صلّی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا اللہ کے شہروں کے اندر حدود اللہ میں سے کسی حدکا قائم کرنا چالیس دن کی بارش سے بہتر ہے۔ (ابن ماجہ، نسائی، مشکوٰۃ)
گویا اسلامی سزاؤں کا نافذ ہونا باران رحمت سے زیادہ بارآور اور ثمر بار ہے۔
ابتداء اسلام میں زنا کی سزا یہ تھی کہ زنا کرنے والی شادی شدہ عورتوں کو تا حیات گھروں میں بند کردیتے تھے۔ اور کنواری لڑکیوں یا غیر شادی شدہ مردوں کو زنا کرنے پر زجر و توبیخ اور ڈانٹ ڈپٹ کی جاتی تھی۔
جیسا کہ اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے اور جو تمہاری عورتیں زنا کریں تو ان پر چارمردوں کی گواہی طلب کرو، پھر اگر وہ گواہی دے دیں تو ان عورتوں کو گھروں میں بند کردو تاوقتیکہ ان کو موت آجائے یا اللہ تعالیٰ ان کے لیے راستہ بیان کردے۔ اور تم سے جو لوگ زنا کریں تو تم ان کو (ڈانٹ ڈپٹ سے ) اذیت پہنچاؤ، پس اگروہ توبہ کرلیں اور ٹھیک ہوجائیں تو ان کو کچھ نہ کہو۔ بے شک اللہ تعالیٰ توبہ قبول کرنے والا، بہت رحم کرنے والا ہے۔ (سورۃ النسآء۔ ۴۔۔ آیت۱۵۔ ۱۶)
ابتداء اسلام میں زنا کی سزا یہی تھی لیکن بعد میں اس سزا کو منسوخ کردیا گیا۔ چنانچہ حضرت عبادہ بن صامت رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں کہ نبی کریم صلّی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا مجھ سے سیکھ لو، مجھ سے سیکھ لو۔ اللہ تعالیٰ نے ان (زنا کرنے والوں ) کا راستہ مقرر کردیاہے۔ اگر کنوارہ شخص کنواری لڑکی سے زنا کرے تو اس کو سوکوڑے مارو اور ایک سال کے لیے شہر بدر کردو اور اگر شادی شدہ مرد شادی شدہ عورت سے زنا کرے تو اس کو ایک سو کوڑے مارو اور رجم (سنگسار) کرو۔ (مسلم، ابوداؤد)
زنا کی سزا کے بارے میں قرآن مجید میں اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے
اَلزَّانِیَۃُ وَالزَّانِیْ فَاجْلِدُوا کُلَّ وَاحِدٍ مِّنْہُمَا مِائَۃَ جَلْدَۃٍ وَّلَاتَاْخُذْکُمْ بِہِمَا رَافَۃٌ فِیْ دِیْنِ اللہ اِنْ کُنْتُمْ تُؤُمِنُوْنَ بِ اللہ وَالْیَوْمِ الاٰخِرِ وَلْیَشْہَدْ عَذَابَہُمَا طَائِفَۃٌ مِّنَ الْمُؤْمِنِیْنَ۔ (سورۃنور۔ ۲۴۔ آیت۔ ۲)
زانی عورت اور زانی مرد ان دونوں میں سے ہرایک کو سو سودرے (کوڑے )مارو۔ اور اللہ تعالیٰ کے دین (شرعی سزا کے نفاذ) میں ان پر ترس نہ کھاؤ اگر تم اللہ تعالیٰ اور آخرت کے دن پر ایمان رکھتے ہو اور چاہیے کہ ان کو سزا دینے کے وقت مسلمانوں کا ایک گروہ موجود ہو۔ یہ سزا کنوارے اور زانی اور زانیہ کی ہے۔
کوڑوں کی جسمانی سزا کے علاوہ بدکار مردوں اور بدکار عورتوں کی دوسری عبرتناک سزا معاشرتی مقاطعہ (بائیکاٹ) ہے کہ اب وہ اسلامی معاشرہ میں گھٹیا درجے کے افراد شمار ہوں گے۔ پاکباز اور شریف رشتوں سے محروم رہیں گے۔ گویا درودیوار ان سے نفرت کریں گے اور شریف لوگ انہیں منہ نہ لگائیں گے۔
چنانچہ ارشاد ربانی ہے
اَلزَّانِیْ لَایَنْکِحُ اِلَّا زَانِیَۃً اَوْمُشْرِکَۃً وَّالزَّانِیَۃُ لَایَنْکِحُہَآ اِلَّازَانٍ اَوْمُشْرِکٌ وَحُرِّمَ ذَالِکَ عَلَی الْمُؤْمِنِیْنَ۔ (سورۃ نور۲۴۔ آیت۔ ۳)
زانی مرد صرف زانیہ عورت یا مشرکہ عورت سے نکاح کرسکتاہے اور زانیہ عورت بھی بدکار مرد یا مشرک کے سوا کسی کے نکاح میں نہیں آسکتی اور یہ اہل ایمان پر حرام ہے۔
زنا کی سزا بھگتنے کے بعد یہ ان کے لیے دوسری معاشرتی سزا ہے کہ زانی، زانیہ یا مشرکہ سے اور زانیہ، زانی اور مشرک سے نکاح کریں گے۔ یعنی زانی اور زانیہ ان کے علاوہ اور کسی کے نکاح میں نہیں آسکتے کیونکہ اللہ تعالیٰ نے صریحاً فرمادیا ہے کہ یہ مؤمنوں پر حرام ہیں۔
...........(جاری ہے)

aabi2cool
4th April 2009, 17:53
اسلام علیکم آپ بار بار سورہ نور کہ واقعہ کو کوٹ کررہی ہیں تو مناسب معلوم ہوتا ہے کہ صحیح اور مستند اسلامی ماخذات سے اس واقعہ کو خود حضرت عائشہ رضی اللہ عنھا کی زبانی نقل کردیا جائے

بنی المصطلق قبیلۂ بنی خزاغہ کی ایک شاخ تھی جو ساحلِ بحیرہ احمر پر جدہ اور رابغ کے درمیان قُدید کے علاقے میں رہتی تھی۔ اس کے چشمے کا نام مریسیع تھا جس کے آس پاس اس قبیلے کے لوگ آباد تھے۔ اسی مناسبت سے احادیث میں اس مہم کا نام غزوۂ مریسیع بھی آیا ہے۔
شعبان 6ھ میں نبی صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کو اطلاع ملی کہ یہ لوگ مسلمانوں کے خلاف جنگ کی تیاریاں کررہے ہیں اور دوسرے قبائل کو بھی جمع کرنے کی کوشش میں لگے ہوئے ہیں۔ یہ اطلاع پاتے ہی آپ ایک لشکر لے کر روانہ ہو گئے تاکہ فتنے کے سر اٹھانے سے پہلے ہی اسے کچل دیا جائے۔ اس مہم میں عبداللہ بن ابی بھی منافقوں کی ایک بڑی تعداد لے کر آپ کے ساتھ ہو گیا۔ ابن سعد کا بیان ہے کہ اس سے پہلے کسی جنگ میں منافقین اس کثرت سے شامل نہ ہوئی تھے۔ مریسیع کے مقام پر آنحضرت صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے اچانک دشمن کو جا لیا اور تھوڑی سے زد و خورد کے بعد پورے قبیلے کو مال اسباب سمیت گرفتار کرلیا۔ اس مہم سے فارغ ہو کر ابھی مریسیع ہی پر لشکر اسلام پڑاؤ ڈالے ہوئے تھا کہ ایک روز حضرت عمر رضی اللہ عنہ کے ایک ملازم (جہجاہ بن مسعود غفاری) اور قبیلۂ خزرج کے ایک حلیف (سنان بن برجہنی) کے درمیان پانی پر جھگڑا ہو گیا۔ ایک نے انصار کو پکارا۔ دوسرے نے مہاجرین کو آواز دی۔ لوگ دونوں طرف سے جمع ہو گئے اور معاملہ رفع دفع ہو گیا۔ لیکن عبداللہ بن ابی نے جو انصار کے قبیلہ خزرج سے تعلق رکھتا تھا، بات کا بتنگڑ بنا دیا۔ اس نے انصار کو یہ کہہ کر بھڑکانا شروع کردیا کہ "یہ مہاجرین ہم پر ٹوٹ پڑے ہیں اور ہمارے حریف بن بیٹھے ہیں۔ ہماری اور ان قریشی کنگلوں کی مثال ایسی ہے کہ کتے کو پال تاکہ تجھی کو بھنبھوڑ کھائے۔ یہ سب تمہارا اپنا کیا دھرا ہے۔ تم لوگوں نے خود ہی انہیں لا کر اپنے ہاں بسایا ہے اور ان کو اپنے مال و جائیداد میں حصہ دار بنایا ہے۔ آج اگر تم ان سے ہاتھ کھینچ لو تو یہ چلتے پھرتے نظر آئیں"۔ پھر اس نے قسم کھا کر کہا کہ "مدینے واپس پہنچنے کے بعد جو ہم میں سے عزت والا ہے وہ ذلیل لوگوں کو نکال کر باہر کردے گا"۔

یہ شوشہ ابھی تازہ ہی تھا کہ اسی سفر میں اُس نے ایک اور خطرناک فتنہ اٹھا دیا، اور فتنہ بھی ایسا کہ اگر نبی صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم اور آپ کے جاں نثار صحابہ کمال درجہ ضبط و تحمل اور حکمت و دانائی سے کام نہ لیتے تو مدینے کے نو خیز مسلمان معاشرہ میں سخت خانہ جنگی برپا ہو جاتی۔ یہ حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا پر تہمت کا فتنہ تھا۔ اس واقعے کو خود انہی کی زبانی سنیے جس سے پوری صورتحال سامنے آجائے گی۔ بیچ بیچ میں جو امور تشریح طلب ہوں گے انہیں ہم دوسری معتبر روایات کی مدد سے قوسین میں بڑھاتے جائیں گے تاکہ جناب صدیقہ رضی اللہ عنہا کے تسلسلِ بیان میں خلل واقع نہ ہو۔ فرماتی ہیں":
"رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کا قاعدہ تھا کہ جب آپ سفر پر جانے لگتے تو قرعہ ڈال کر فیصلہ فرماتے کہ آپ کی بیویوں میں سے کون آپ کے ساتھ جائے۔
(اس قرعہ اندازی کی نوعیت لاٹری کی سی نہ تھی۔ دراصل تمام بیویوں کے حقوق برابر کے تھے۔ ان میں سے کسی کو کسی پر ترجیح دینے کی کوئی معقول وجہ نہ تھی۔ اب اگر نبی صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم خود کسی کا انتخاب کرتے تو دوسری بیویوں کی دل شکنی ہوتی اور ان میں باہم رشک و رقابت پیدا ہونے کے لیے بھی یہ ایک محرک بن جاتا۔ اس لیے آپ قرعہ اندازی سے اس کا فیصلہ فرماتے تھے۔ شریعت میں قرعہ اندازی ایسی ہی صورتوں کے لیے ہے جبکہ چند آدمیوں کا جائز حق بالکل برابر ہو اور کسی کو کسی پر ترجیح دینے کے لیے کوئی معقول وجہ موجود نہ ہو، مگر حق کسی ایک ہی کو دیا جاسکتا ہو)۔
غزوۂ بنی المصطلق کے موقع پر قرعہ میرے نام نکلا اور میں آپ کے ساتھ گئی۔ واپسی پر جب ہم مدینے کے قریب پہنچتے، ایک منزل پر رات کے وقت رسول صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے پڑاؤ کیا اور ابھی رات کا کچھ حصہ باقی تھا کہ کوچ کی تیاریاں شروع ہو گئیں۔ میں اٹھ کر رفع حاجت کے لیے گئی اور جب پلٹنے لگی تو قیام گاہ کے قریب پہنچ کر مجھے محسوس ہوا کہ میرے گلے کا ہار ٹوٹ کر کہیں گر پڑا ہے۔ میں اسے تلاش کرنے میں لگ گئی اور اتنے میں قافلہ روانہ ہو گیا۔ قاعدہ یہ تھا کہ میں کوچ کے وقت اپنے ہودے میں بیٹھ جاتی تھی اور چار آدمی اسے اٹھا کر اونٹ پر رکھ لیتے تھے۔ ہم عورتیں اس زمانے میں غذا کی کمی کے سبب بہت ہلکی پھلکی تھیں۔ میرا ہودہ اٹھاتے وقت لوگوں کو یہ محسوس ہی نہ ہوا کہ میں اس میں نہیں ہوں۔ وہ بے خبری میں خالی ہودہ اونٹ پر رکھ کر روانہ ہو گئے۔ میں جب ہار لے کر پلٹی تو وہاں کوئی نہ تھا۔ آخر اپنی چادر اوڑھ کر وہیں لیٹ گئی اور دل میں سوچ لیا کہ آگے جا کر جب یہ لوگ مجھے نہ پائیں گے تو خود ہی ڈھونڈتے ہوئے آجائیں گے۔ اسی حالت میں مجھ کو نیند آگئی۔ صبح کے وقت صفوان بن معطل سلمی اس جگہ سے گذرے جہاں میں سو رہی تھی اور مجھے دیکھتے ہی پہچان گئے،کیونکہ پردے کا حکم آنے سے پہلے وہ مجھے بار ہا دیکھ چکے تھے۔
(یہ صاحب بدری صحابیوں میں سے تھے، ان کو صبح دیر تک سونے کی عادت تھی، اس لیے یہ بھی لشکر گاہ میں کہیں پڑے سوتے رہ گئے تھے اور اب اٹھ کر مدینے جا رہے تھے۔ ابو داؤد اور دوسری کتب سنن میں یہ ذکر آتا ہے کہ ان کی بیوی نے نبی صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم سے ان کی شکایت کی تھی کہ یہ کبھی صبح کی نماز وقت پر نہیں پڑھتے۔ انہوں نے عذر پیش کیا کہ یا رسول اللہ یہ میرا خاندانی عیب ہے، دیر تک سوتے رہنے کی اس کمزوری میں کسی طرح دور نہیں کر سکتا۔ اس پر آپ نے فرمایا کہ اچھا جب آنکھ کھلے تو نماز ادا کر لیا کرو۔ بعض محدثین نے ان کے قافلے سے پیچھے رہ جانے کی یہی وجہ بیان کی ہے۔ مگر بعض دوسرے محدثین اس کی وجہ یہ بیان کرتے ہیں کہ نبی {[درود}} نے ان کو اس خدمت پر مقرر کیا تھا کہ رات کے اندھیرے میں کوچ کرنے کی وجہ سے اگر کسی کی کوئی چیز چھوٹ گئی ہو تو صبح اسے تلاش کرکے لیتے آئیں)۔
مجھے دیکھ کر انہوں نے اونٹ روک لیا اور بے ساختہ ان کی زبان سے نکلا "انا للہ و انا الیہ راجعون، رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کی بیوی یہیں رہ گئیں"۔ اس کی آواز سے میری آنکھ کھل گئی اور میں نے اٹھ کر فوراً اپنے منہ پر چادر ڈال لی۔ انہوں نے مجھ سے کوئی بات نہ کی، لا کراپنا اونٹ میرے پاس بٹھا دیا اور الگ ہٹ کر کھڑے ہو گئے۔ میں اونٹ پر سوار ہو گئی اور وہ نکیل پکڑ کر روانہ ہو گئے۔ دوپہر کے قریب ہم نے لشکر کو جا لیا جبکہ وہ ابھی ایک جگہ جا کر ٹھیرا ہی تھا اور لشکر والوں کو ابھی یہ پتہ نہ چلا تھا کہ میں پیچھے چھوٹ گئی ہوں۔ اس پر بہتان اٹھانے والوں نے بہتان اٹھا دیے اور ان میں سب سے پیش پیش عبداللہ بن ابی تھا۔ مگر میں اس سے بے خبر تھی کہ مجھ پر کیا باتیں بن رہی ہیں۔
ہے ۔ ۔ ۔۔جاری ہے ۔ ۔ ۔۔ ۔

aabi2cool
4th April 2009, 17:57
دوسری روایات میں آیا ہے کہ جس وقت صفوان کے اونٹ پر حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا لشکر گاہ پہنچیں اور معلوم ہوا کہ آپ اس طرح پیچھے چھوٹ گئی تھیں اُسی وقت عبداللہ بن ابی پکار اٹھا "خدا کی قسم! یہ بچ کر نہیں آئی ہیں، لو دیکھو، تمہارے نبی کی بیوی نے رات ایک اور شخص کے ساتھ گذاری اور اب وہ اسے علانیہ لیے چلا آرہا ہے (نعوذ باللہ)"۔)
"مدینے پہنچ کر میں بیمار ہو گئی اور ایک مہینے کے قریب پلنگ پر پڑی رہی۔ شہر میں اس بہتان کی خبریں اڑ رہی تھیں، رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے کانوں تک بھی بات پہنچ چکی تھی، مگر مجھے کچھ پتہ نہیں تھا۔ البتہ جو چیز مجھے کھٹکتی تھی وہ یہ کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کی وہ توجہ میری طرف نہ تھی جو بیماری کے زمانے میں ہوا کرتی تھی۔ آپ گھر میں آتے تو بس گھر والوں سے یہ پوچھ کر رہ جاتے کہ کیسی ہیں یہ؟۔ خود مجھ سے کوئی کلام نہ کرتے۔ اس سے مجھے شبہ ہوتا کہ کوئی بات ہے ضرور۔ آخر آپ سے اجازت لے کر میں اپنی ماں کے گھر چلی گئی تاکہ وہ میری تیمارداری اچھی طرح کر سکیں۔
ایک روز رات کے وقت حاجت کے لیے مدینے کے باہر گئی۔ اس وقت ہمارے گھروں میں بیت الخلا نہ تھے اور ہم لوگ جنگل ہی جایا کرتے تھے۔ میرے ساتھ مسطح بن اثاثہ کی ماں بھی تھیں جو میرے والد کی خالہ زاد بہن تھی۔
(دوسری روایات سے معلوم ہوتا ہے کہ اس پورے خاندان کی کفالت حضرت ابو بکر صدیق رضی اللہ عنہ نے اپنے ذمے لے رکھی تھی، مگر اس احسان کے باوجود مسطح بھی ان لوگوں میں شریک ہو گئے تھے جو حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کے خلاف اس بہتان کو پھیلا رہے تھے)
راستے میں ان کو ٹھوکر لگی اور بے ساختہ ان کی زبان سے نکلا غارت ہو مسطح۔ میں نے کہا اچھی ماں ہو جو بیٹے کو کوستی ہو، اور بیٹا بھی وہ جس نے جنگ بدر میں حصہ لیا ہے۔ انہوں نے کہا "بٹیا! کیا تجھے اس کی باتوں کی کچھ خبر نہیں؟ پھر انہوں نے سارا قصہ سنایا کہ افترا پرداز لوگ میرے متعلق کیا باتیں اڑا رہے ہیں۔
(منافقین کے سوا خود مسلمانوں میں سے جو لوگ اس فتنے میں شامل ہو گئے تھے ان میں مسطح، حسان بن ثابت مشہور شاعر اسلام، اور حمنہ بنت حجش، حضرت زینب رضی اللہ عنہا کی بہن کاحصہ سب سے نمایاں تھا۔)
یہ داستان سن کر میرا خون خشک ہو گیا، وہ حاجت بھی بھول گئی جس کے لیے آئی تھی، سیدھی گھر گئی اور رات بھر رو رو کر کاٹی۔"
آگے چل کر حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں: "میرے پیچھے رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے علی اور اسامہ بن زید رضی اللہ عنہم کو بلایا اور ان سے مشورہ طلب کیا۔ اسامہ رضی اللہ عنہ نے میرے حق میں کلمۂ خیر کہا اور عرض کیا "یا رسول اللہ! بھلائی کے سوا آپ کی بیوی میں کوئی چیز ہم نے نہيں پائی۔ یہ سب کچھ کذب اور باطل ہے جو اڑایا جارہا ہے"۔ رہے علی رضی اللہ عنہ تو انہوں نے کہا کہ "یا رسول اللہ! عورتوں کی کمی نہیں ہے۔ آپ اس کی جگہ دوسری بیوی کر سکتے ہیں، اور تحقیق کرنا چاہیں تو خدمت گار لونڈی کو بلا کر حالات دریافت فرمائیں"۔ چنانچہ خدمت گار کو بلایا گیا اور پوچھ گچھ کی گئی۔ اس نے کہا کہ "اس خدا کی قسم جس نے آپ کو حق کے ساتھ بھیجا ہے، میں نے ان میں کوئی برائی نہیں دیکھی جس پر حرف رکھا جاسکے۔ بس اتنا عیب ہے کہ میں آٹا گوندھ کر کسی کام کو جاتی ہوں اور کہہ جاتی ہوں کہ ذرا آٹے کا خیال رکھنا، مگر وہ سو جاتی ہیں اور بکری آ کر آٹا کھا جاتی ہے"۔ اسی روز رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے خطبہ میں فرمایا "مسلمانو! کون ہے جو اس شخص کے حملوں سے میری عزت بچائے جس نے میرے گھر والوں پر الزامات لگا کر مجھے اذیت پہنچانے کی حد کردی ہے۔ بخدا میں نے نہ تو اپنی بیوی ہی میں کوئی برائی دیکھی ہے، اور نہ اس شخص میں جس کے متعلق تہمت لگائی جاتی ہے۔ وہ تو کبھی میری غیر موجودگی میں میرے گھر آیا بھی نہیں"۔ اس پر اسید بن حضیر (بعض روایات میں سعد بن معاذ رضی اللہ عنہ) نے اٹھ کر کہا "یا رسول اللہ! اگر وہ ہمارے قبیلے کا آدمی ہے تو ہم اس کی گردن مار دیں اور اگر ہمارے بھائی خزرجیوں میں سے ہے تو آپ حکم دیں، ہم تعمیل کے لیے حاضر ہیں"۔ یہ سنتے ہی سعد رضی اللہ عنہ بن عبادہ، رئیسِ خزرج، اٹھ کھڑے ہوئے اور کہنے لگے "جھوٹ کہتے ہو، تم اسے ہر گز نہیں مار سکتے۔ تم اس کی گردن مارنے کا نام صرف اس لیے لے رہے ہو کہ وہ خزرج میں سے ہے۔ اگر وہ تمہارے قبیلے کا آدمی ہوتا تو تم کبھی یہ نہ کہتے کہ ہم اس کی گردن مار دیں گے"۔ اسید نے جواب میں کہا کہ "تم منافق ہو اس لیے منافقوں کی حمایت کرتے ہو"۔ اس پر مسجد نبوی میں ہنگامہ برپا ہو گیا، حالانکہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم منبر پر تشریف رکھتے تھے۔ قریب تھا کہ اوس اور خزرج مسجد میں ہی لڑ پڑتے، مگر رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے ان کو ٹھنڈا کیا اور پھر منبر سے اتر آئے"۔
حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں کہ "اس بہتان کی افواہیں کم و بیش ایک ماہ تک شہر میں اڑتی رہیں۔ نبی صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم سخت اذیت میں مبتلا رہے۔ میں روتی رہی۔ میرے والدین انتہائی پریشان اور رنج و غم میں مبتلا رہے۔ آخر کار ایک روز حضور صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم تشریف لائے اور میرے پاس بیٹھے۔ اس پوری مدت میں آپ کبھی میرے پاس نہ بیٹھے تھے۔ حضرت ابوبکر اور ام رومان (حضرت عائشہ کی والدہ) نے محسوس کیا کہ آج کوئی فیصلہ کن بات ہونے والی ہے۔ اس لیے وہ دونوں بھی پاس آکر بیٹھ گئے۔ حضور صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے فرمایا عائشہ! مجھے تمہارے متعلق یہ خبریں پہنچی ہیں، اگر تم بے گناہ ہو تو امید ہے اللہ تمہاری براءت ظاہر فرما دے گا اور اگر تم واقعی کسی گناہ میں مبتلا ہوئی ہو تو اللہ سے توبہ کرو اور معافی مانگو، بندہ جب اپنے گناہ کا معترف ہو کر توبہ کرتا ہے تو اللہ معاف کر دیتا ہے۔ یہ بات سن کر میرے آنسو خشک ہو گئے۔ میں نے اپنے والد سے عرض کیا آپ رسول اللہ کی بات کا جواب دیں۔ انہوں نے فرمایا بیٹی، میری کچھ سمجھ ہی میں نہیں آتا کہ کیا کہوں؟ میں نے اپنی والدہ سے کہا کہ آپ ہی کچھ کہیں۔ انہوں نے بھی یہی کہا کہ میں حیران ہوں، کیا کہوں؟ اس پر میں بولی آپ لوگوں کے کانوں میں ایک بات پڑ گئی ہے اور دلوں میں بیٹھ چکی ہے، اب اگر میں کہوں کہ میں بے گناہ ہوں، اور اللہ گواہ ہے کہ میں بے گناہ ہوں، تو آپ لوگ نہ مانیں گے، اور اگر خواہ مخواہ ایک ایسی بات کا اعتراف کروں جو میں نے نہیں کی، اور اللہ جانتا ہے کہ میں نے نہیں کی، تو آپ لوگ مان لیں گے۔ میں نے اس وقت حضرت یعقوب علیہ السلام کا نام یاد کرنے کی کوشش کی مگر نہ یاد آیا۔ آخر میں نے کہا اس حالت میں میرے لیے اس کے سوا اور کیا چارہ ہے کہ وہی بات کہوں جو حضرت یوسف علیہ السلام کے والد نے کہی تھی کہ 'فصبر جمیل (اشارہ ہے اس واقعے کی طرف جبکہ حضرت یعقوب علیہ السلام کے سامنے ان کے بیٹے بن یامین پر چوری کا الزام بیان کیا گیا تھا:سورۂ یوسف رکوع 10) یہ کہہ کر میں لیٹ گئی اور دوسری طرف کروٹ لے لی۔ میں اس وقت اپنے دل میں کہہ رہی تھی کہ اللہ میری بے گناہی سے واقف ہے اور وہ ضرور حقیقت کھول دے گا۔ اگرچہ یہ بات تو میرے وہم و گمان میں بھی نہ تھی کہ میرے حق میں وحی نازل ہوگی جو قیامت تک پڑھی جائے گی۔ میں اپنی ہستی کو اس سے کم تر سمجھتی تھی کہ اللہ خود میری طرف سے بولے۔ (اللہ و اکبر میرے ماں باپ آپ پر قربان اے مومنوں کی ماں کیا مرتبہ ہے آپکا کہ منافقوں کی دشنام طرازیوں کا جواب آپکی طرف سے آپ کا رب دیتا ہے اللہ اکبر ،اللہ الصمد۔ ازآبی ٹوکول ) مگر میرا یہ گمان تھا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کوئی خواب دیکھیں گے جس میں اللہ تعالیٰ میری براءت ظاہر فرما دے گا۔ اتنے میں یکا یک حضور صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم پر وہ کیفیت طاری ہو گئی جو وحی نازل ہوتے وقت ہوا کرتی تھی، حتیٰ کہ سخت جاڑے کے زمانے میں بھی موتی کی طرح آپ کے چہرے سے پسینے کے قطرے ٹپکنے لگتے تھے۔ ہم سب خاموش ہو گئی۔ میں تو بالکل بے خوف تھی مگر میرے والدین کا حال یہ تھا کہ کاٹو تو بدن میں لہو نہیں۔ وہ ڈر رہے تھے کہ دیکھیے اللہ کیا حقیقت کھولتا ہے جب وہ کیفیت دور ہوئی تو حضور صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم بے حد خوش تھے۔ آپ نے ہنستے ہوئے پہلی بات جو فرمائی وہ یہ تھی کہ مبارک ہو عائشہ، اللہ نے تمہاری براءت نازل فرما دی اور اس کے بعد حضور صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے دس آیات سنائیں (یعنی آیت نمبر 11 تا نمبر 21)۔ میری والدہ نے کہا کہ اٹھو اور رسول اللہ کا شکریہ ادا کرو۔ میں نے کہا کہ میں نہ ان کا شکریہ ادا کروں گا نہ آپ دونوں کا، بلکہ اللہ کا شکر کرتی ہوں جس نے میری براءت نازل فرمائی۔ اور حدیث میں ہے کہ میرے عذر کی یہ* آیتیں اترنے کہ بعد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے دو مردوں اور ایک عورت کو تہمت کی حد (یعنی حد قذف ) لگائی یعنی حسان بن ثابت ،مسطح بن اثاثہ اور حمنہ بنت حجش کو ۔ ۔ ۔
واضح رہے کہ یہ کسی ایک روایت کا ترجمہ نہیں بلکہ حدیث ،تفسیر اور سیرت کی کتابوں میں جتنی روایات حضرت عائشہ سے اس سلسلے میں مروی ہیں ان سب کو جمع کرکے ان کا خلاصہ نکالا گیاہے۔
اول تو یہ سمجھیئے کہ یہ سارا واقعہ قرآن پاک میں سورہ نور میں بعینہ مذکور نہیں ہے بلکہ سورہ نور میں فقط ام المومنین صدیقہ کائنات حضرت عائشہ صدیقہ رضی اللہ عنھا کی پاکی بیان کی گئی ہے اور حدود اللہ کا بیان ہوا ہے کہ زنا کی کیا حد ہے اور حد قذف یعنی تہمت لگانے والے پر کیا حد جاری ہوگی اس کہ علاوہ باقی سارا واقعہ احادیث ،سیرت اور تاریخ کی مختلف کتابوں میں بیان ہوا ہے آپ نے جو یہ بار بار فرمایا کہ حضور نبی کریم نے جھوٹا الام لگانے والوں کو معاف فرمادیا یہ محض الزام ہے کسی تاریخ یا حدیث یا تفسیر کی مستند کتاب سے ایسا ثابت نہیں اگر ہے تو برائے مہربانی اس کا نام بتائیے وگرنہ میں بار بار کہہ چکا کہ قرآن و سنت کو محض اپنے فہم سے سمجھنا چھوڑ دیجیئے کہ یہ سرا سر گمراہی ہے ۔ ۔ ۔۔جاری ہے ۔ ۔ ۔۔

saraah
4th April 2009, 18:09
AABI BHAI AAP THEEK JA RAHAY HAIN....VERY GOOD.....:thmbup:

:jazak:

aabi2cool
4th April 2009, 19:30
خلاصۃ البحث
اسلام علیکم بات شروع ہوئی تھی میڈیا پر دکھائی جانے والی مبینہ طالبانی ویڈیو سے بڑھتے بڑھتے شرعی حدود اور نہ نفاذ تک پہنچی جس میں محترمہ زونیش صاحبہ سے ہمارا یہ اختلاف ٹھرا کہ انکے نزدیک اسلام کا عَفْو و دَرْگُزَر کا دین ہے لہزا اس کا یہ تقاضا ٹھرا کہ حدود اللہ کی تنفیذ میں بھی عَفْو و دَرْگُزَر سے کام لینا چاہیے جبکہ ہم نے حدوداللہ کی روشنی میں عرض یہ کرنا چاہی کہ بلا شبہ اسلام عَفْو و دَرْگُزَر کا دین ہے مگر یہ معاملہ اس وقت تک ہے کہ جب کہ کوئی بھی قضیہ فریقین کہ درمیان ہو لیکن جب معاملہ فریقین یا ان دونوں میں سے کوئی ایک اسلامی عدالت میں پیش کردے تو اب اس معاملے اسلامی تعلیمات کہ مطابق انصاف کہ سارے تقاضوں کو پورا کیا جائے گا کیونکہ اب معاملہ عدالت میں آن پہنچا اور عدالت کا تو کام ہی عدل مہیا کرنا ہوتا ہے اور عدل کی تعریف یہ ہے کہ ہر چیز کو ٹھیک ٹھیک اس کہ مقام پر رکھ دیا جائے کہ جس مقام کہ لیے وہ وضع کی گئی ہو ۔ ۔ ۔لیکن جہاں تک بات ہے عَفْو و دَرْگُزَر کی تو اس کا تعلق عدل سے نہیں بلکہ فضل سے ہے اور حدود میں یہ معاملہ اس وقت تک ہوتا کہ جب تک معاملہ خود بندے اور اللہ کہ درمیان رہے اور وہ بندہ توبہ کرلے تو اللہ کہ فضل سے قوی امید ہے کہ اس کا گناہ معاف کردیا جائے گا خواہ کتنا ہی بڑا کیوں نہ ہو کیونکہ " جب انسان اپنے پروردگار كے سامنے پكى اور سچى خالص توبہ كر ليتا ہے تو اللہ سبحانہ و تعالى نے وعدہ كيا ہے كہ وہ توبہ كرنے والے كى توبہ قبول كريگا، بلكہ وہ اس كے عوض ميں اسے نيكياں عطا فرمائيگا، جو كہ اللہ تعالى كے جود و كرم ميں شامل ہوتا ہے ۔۔
اللہ سبحانہ و تعالى كا فرمان ہے:
﴿ اور وہ لوگ جو اللہ تعالى كے ساتھ كسى اور كو الہ نہيں بناتے اور نہ ہى وہ اللہ تعالى كے حرام كردہ كسى نفس كو ناحق قتل كرتے ہيں، اور نہ ہى زنا كا ارتكاب كرتے ہيں، اور جو كوئى يہ كام كرے وہ گنہگار ہے، اسے روز قيامت ڈبل عذاب ديا جائيگا، اور وہ ذليل ہو كر اس ميں ہميشہ رہے گا، ليكن جو شخص توبہ كر لے اور ايمان لے آئے اور اعمال صالحہ كرے، تو يہى وہ لوگ ہيں اللہ تعالى جن كى برائيوں كو نيكيوں ميں بدل ديتے ہيں، اور اللہ تعالى بخشنے والا رحم كرنے والا ہے ﴾الفرقان ( 68 - 70 ).
اور توبہ كى شروط ميں گناہ كو فورى طور پر چھوڑ دينا، اور جو ہو چكا ہے اس پر ندامت كا اظہار كرنا، اور آئندہ اس كام كو نہ كرنے كا عزم كرنا شامل ہے، اور اگر اس كا تعلق كسى آدمى كے حقوق سے ہو تو پھر اس شخص سے معافى طلب كرنا بھى توبہ كى شروط ميں شامل ہوتا ہے ۔
آپ ہم درج زیل میں عفو و درگزر کی جتنی بھی مثالیں آپ نے نقل کی ہیں اسلامی تاریخ میں ان سب کا تنقیدی جائزہ لیں گے ۔ ۔ آپ نے فرمایا کہ ۔ ۔ ۔ ۔



main yhe nhe kahti k gonah per saza na di jaye mager bhai ager tuba ker le jaye teb saza nhe dyni chaye ? 100 korey teb marny chaye jeb zani merd aur zani ouret gonah sy baaz na aye ya tuba na kery



سب سے پہلے تو آپ کا یہ فرمانا ہی بے بنیاد اور بلا تحقیق ہے ۔ کیونکہ شريعت نےجن گناہوں پرحد ركھي ہے ان گناہوں کہ ارتکاب کہ بعد اس حد كا لاگو کیے جانے ہی كي بنا پر وہ حد گناہ كا كفارہ بن جاتي ہے اور اس كا گناہ ختم ہوجاتاہے. چناچہ حديث ميں ہےكہ عبادہ بن صامت رضي اللہ تعالي عنہ بيان كرتےہيں رسول كريم صلي اللہ عليہ وسلم نےفرمايا: ميرےساتھ اس بات پر بيعت كرو كہ تم اللہ تعالي كےساتھ شرك نہيں كروگے اور نہ ہي چوري اور زنا كاري كرو گے اور نہ ہي اپني اولاد كوقتل كروگےاور نہ ہي اپني جانب سےبہتان بازي كروگے اور نيكي ميں نافرماني نہيں كروگے اورجوكوئي بھي تم ميں سے اس كي وفاداري كرےگا اللہ تعالي اسےاجروثواب سےنوازےگا، اور جوبھي اس ميں سے كسي ايك كا مرتكب ہوگا اسےدنيا ميں سزا دي جائےگي جواس كےليےكفارہ ہوگي اورجوكوئي بھي ان ميں سےكسي ايك كامرتكب ہوا اوراللہ تعالي نےاس كي پردہ پوشي كردي اس كامعاملہ اللہ كےساتھ ہے اگروہ چاہےتواس سےوہ گناہ معاف كردے اور اگرچاہےتواسےسزا دے .
صحيح بخاري ( 18 ) صحيح مسلم ( 1709 )
اس لیے سچي توبہ بھي گناہوں كا كفارہ بنتي ہے اور "توبہ كرنےوالا ايسےہي ہے جيسے كسي كا كوئي گناہ نہ ہو" بلكہ اللہ تعالي تواس كي برائيوں كونيكيوں سے بدل ڈالتےہيں.مگر یہ اس وقت ہے کہ جب کسی بھی حد کی پامالی کرنے والے نے اپنے گناہ کا اعتراف اسلامی عدالت کہ سامنے نہ کیا ہو کیونکہ جب وہ اعترف گناہ عدالت کہ سامنے کرلے گا تو اب اس پر اسلامی ریاست کہ حاکم کا حد جاری کرنا واجب ہوجائے گا لہزا اگر کوئی بھی شخص توبہ كرنےميں سچائي اور كثرت سےاستغفار كرے اور اپنے معاملے کو اپنے اور اللہ کہ درمیان رکھے تو اس پرگناہ كا اعتراف كرنا لازم نہيں كہ اس پر حد جاري كي جاسكے، بلكہ انشاء اللہ اس کہ لیے خالی توبہ ہي كافي ہے مگر یاد رہے جب تک کہ وہ معاملہ اس کہ اس کہ رب کہ درمیان ہو ۔ ۔ ۔





k sooreh noor main he yeh wakia derj hain jeb hazret ayesha razi tala un ha per tuhmet ka ilzam laga tha aur rpori is wakiya ki tafshish ki agi the . . . . .


lakin jeb tumat lagny waly ny kud qabol kia k us nay jhoti tuhmet lagi hain teb


humry pak nabi pbum ny us insan ko maaf kia jeb k quran pak main irshaad howa k
tuhmet lagyny waly ko 80 kore marain ajin agercha wo tuba ker ly pher b


آپ نے یہ واقعہ بھی بلاسند اور بے بنیاد بیان کیا ہے اس کی حقیقت ہم پیچھے کھول آئے ہیں کہ خود حضرت عائشہ نے فرمایا کہ واقعہ افک میں جو مسلمان غلط فہمی کی وجہ سے منافقین کہ پرپیگنڈہ کا حصہ بن گئے تھے یعنی حضرت حسان بن ثابت ،مسطح بن اثاثہ اور حمنہ بنت حجش ان سب کو حد قذف لگائی گئی تفصیل کہ لیے دیکھیئے تفسیر ابن کثیر ۔ ۔ ۔



turjuma9 aur wo log gusay ko zabet ker jatain hain logo k qasoor maaf ker dyatain hain aur allah ihsaan kerny walon ko dost rakhta hain




ek aur jaga irshad howa

(kuda tum ko adel aur ihsaan ka hukm dayta hain ) mery bhai saza sy zayda us per tuba kerny wala aur us tuba ko qabol ker k maaf kenry waly ka derja blund kia gaya hain us k jo afu dergozer sy kam na lay aur sakht tareen saza dain




آپکی پیش کردہ ان آیات کا تعلق براہراست حدود اللہ کہ نفاذ سے متعلق نہیں ہے بلکہ آپس کہ روز مرہ کہ باہمی معاملات سے متعلق ہے ۔ ۔
جاری ہے ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔

saraah
4th April 2009, 21:12
خلاصۃ البحث
کہ بلا شبہ اسلام عَفْو و دَرْگُزَر کا دین ہے مگر یہ معاملہ اس وقت تک ہے کہ جب کہ کوئی بھی قضیہ فریقین کہ درمیان ہو لیکن جب معاملہ فریقین یا ان دونوں میں سے کوئی ایک اسلامی عدالت میں پیش کردے تو اب اس معاملے اسلامی تعلیمات کہ مطابق انصاف کہ سارے تقاضوں کو پورا کیا جائے گا کیونکہ اب معاملہ عدالت میں آن پہنچا اور عدالت کا تو کام ہی عدل مہیا کرنا ہوتا ہے اور عدل کی تعریف یہ ہے کہ ہر چیز کو ٹھیک ٹھیک اس کہ مقام پر رکھ دیا جائے کہ جس مقام کہ لیے وہ وضع کی گئی ہو ۔ ۔ ۔لیکن جہاں تک بات ہے عَفْو و دَرْگُزَر کی تو اس کا تعلق عدل سے نہیں بلکہ فضل سے ہے اور حدود میں یہ معاملہ اس وقت تک ہوتا کہ جب تک معاملہ خود بندے اور اللہ کہ درمیان رہے اور وہ بندہ توبہ کرلے تو اللہ کہ فضل سے قوی امید ہے کہ اس کا گناہ معاف کردیا جائے گا خواہ کتنا ہی بڑا کیوں نہ ہوجاری ہے ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔




ABSOLUTELY RIGHT......:jazak:

sohail khan
4th April 2009, 21:13
pegham ky seb dosto ko zoniesh ka salam

main ny aj abi abi ek holaknak dardnak menzer dekha hain aur muje samjh nhe arhi k main kia keron kasyse berdast keron dil ker raha hain k apne jism k he tokery ker don sawat main 17 year ki lerki ko sare aam korey mary ja rahin hain us ki cheekhain mery dimag ki neson ki phar dain g us ki maa jis ko zinda aag laga dyni chaye jo apni beti ka yehon sare aam leta k korey marwa rahi hain mamta mer gai hain ya insan he nhe wo jo apni beti ki cheekahin b sun nhe pa rahi aur jeb wo massom lerki ihtajaj kerny k liya hath rakhti hain to us ki maa us k hath paker leti hain ek merd ny us ko tangon sy paker rakh ta ky wo ihtajaj b na ker saky kahan gaya ya rub to kahan gaya mery pore wajod main senata chah gaya hain aur loog bygret ben k sara tamasha dakh rahain
main pochna chati hon k ek judge ko bahal kerwany k liya sare log road py nekal aye mager kia koi ahin aysa is zulm k khilaaf awaz uthaye baher neklay such main aj mery dil sy yeh dua nekli hain k
allah sawat main azaab laye sare log mer jain kiyon k ayse gandy zalim logo ko jeenay ka koi haq nhe jo zulm ko dkahty to hain mger us ko rokny ki hemt nhe kerty allah berbad ker dy ayse logo ko ameen :ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::a k::ak:
me is bare me kuch nahi kahoonga k ye jayez ha i ya najayez q k me ab is darje tak nahi puhancha k islami qanoon k bare me kuch keh sakoon lekin jaha tak swat k logo ki baat hai une majboor kiya gaya hai jab army waha kuch nahi karsakti to awam kya karengi aap ki thread parr kar mere dil se bhi aik bad duwa nikli hai k aise halat allah pak un sab logo ko dikaye jo aisi batain karte hai.
Hamare ooper jo zulam ho raha hai us k khilaaf bholne k bajaye aap hamare khilaaf bol rahi hai nehayat afsoos ki bat hai.

shela
5th April 2009, 08:36
nothing to say girl...............

kuch to kahen akhir Ummid per donya kayem ha:eye:

shela
5th April 2009, 08:49
yeh he baat main samjhany ki khoshish ker rahi hon mager abicool ki samjh main nhe arah main un ki yeh he smjhan chah rahi k kuda k bandy nabi pak PBUM ny aibo per perda dalny ka hukam fermya hain un ki hayat taiba per nazer dalin to ek b aysa wakia nhe milta kia teb gonah nhe hoty thy ya szain nhe milti the mager kabi aysa wakia samny aya kabi b kisi sahabi k door main b nhe khabi b kisi ny b is saza per implement kia?quran pak humre liya rehnumai hain mager is per amel kerny ka tareeka to humry nabi pak PBUM ny he bataya na humain .


Whats u wants to say ?:mm:
kah Allah ne jo sazain mukarar ke hain us ke implementation na pehle hote theen or na aj hone chaheya, its mean Islam is a theoratical not practical""''
kuch samagh nahi aya:(

shela
5th April 2009, 09:03
aik sawaal to yeh hai na kay Talbiaan kay paas kia saboot hain kay us larki ka jurm yeh tha ?:mm: Tv pay kuch or taraha say bhi news hain ..yeh baat to tehqeeqaat kay bad samnay aye gee kay asal waqeya kia tha...or agar yehi jurm hai bhi to Talibaan koon hotay hain saza deenay walye ? pak ki hakoomat hai jo saza banye pak day ga Talibaan koi islaam kay muhafiz nahi jo aisi sazaian deetay pheeraian :tasali: ..or kisi khatoon ko sarr-i-aam aisi saza deena islam main kaha likha hai .......

Pehle yah wazah ho jaye "kia app Talibaan ke khelaf hain yah saza ke khelaf":eye:

App ne sahe kaha Talibaan Islam ke muhafiz nahi ha lakin app yah bhi nahi jante ka Pakistan ke haqoomat bhi Islam ke muhafiz nahi ha.

Islam ke Muhafiz to Sare Muslims hain :eye:

kun Khatoon kia insaan nahi ha:wq:jis ko saza nahi milne chahea islam main kahain likha ha :mm:

Zana ek esa jurm ha jo Behaya or begharat insan ker sakte hain to jab un ko jurm kerty waqat behayae ka eahsas nahi jurm ke Zilat ka eahsas nahi howa to phir sar-e-amm saza kha ker kamaz kam un ke behayae to utre ge na or jo insaan is burai ke taraf attraction feel ker raha us ko bhi sabaq mile ga

chaand_nager
5th April 2009, 09:31
اسلام علیکم محترمہ زونش صاحبہ مجھے نہیں معلوم کہ آپکے نک کا اصل تلفظ کیا ہے سو کمی بیشی معاف ...سب سے پہلے تو اتنا جان لیجیئے کہ مزکورہ ویڈیو میں جو نام نہاد طالبان کا اسلام دکھایا گیا ہے میں اس کہ سخت مخالف ہوں اور اسکی مزمت کرتا ہوں اور اسکی مزمت کرنے پر میرا آپ کہ ساتھ کوئی اختلاف نہیں ۔۔ اول تو میں ان نام نہاد طالبان کو اسلام اور شریعت کی ر و سے اس قابل ہی نہیں سمجھتا کہ وہ کسی بھی مجرم یا ملزم پر حدود اللہ کی تنفیذ کہ مجاز ہوں یعنی وہ کسی بھی مسلمان پر چاہے اس پر محض الزام ہو یا پھر وہ مجرم ہی کیوں نہ ثابت ہوجائے پرحدود اللہ کو نافذ کرنے کہ اہل نہیں ہیں ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔لہزا اب آپ سے گزارش ہے کہ مزکورہ ویڈیو والے واقعہ کو اب ایک طرف رکھ دیں اور میرا آپ کہ ساتھ جو اصل اختلاف ہے یعنی حدود اللہ کی تنفیذ کہ بارے میں یعنی جب ایک ایسا مقدمہ کہ جس میں حدود اللہ کی پامالی کی گئی ہو جب اسلامی شریعت کی رو سے قاضی کہ سامنے پیش ہوجائے اور مقدمہ میں ملزم کا مجرم ہونا ہر طرح سے ثابت بھی ہوجائے تو آیا کیا قاضی کو یہ اختیار حاصل ہوگا کہ وہ حدود اللہ میں کمی بیشی کرتے ہوئے محض عفو درگزر کی بنیاد پر مجرمین کو معاف کردے ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟ آپکا کہنا ہے کہ جی ہاں اسے یہ اختیار نہ صرف حاصل ہے بلکہ اس کہ لیے افضل یہ کہ وہ مجرمین کو بار بار چھوڑ دے (جیسا کہ آپ نے ایک جگہ فرمایا کہ تین بار تنبیہ کی جائے گی)جبکہ ہمارا یہ کہنا ہے کہ جب حدوداللہ کی پامالی کہ واقعات میں مقدمہ اسلامی عدالت میں پیش ہوجائے اور قاضی ہر طرح سے مطمئن ہوجائے تو اب وہ حدود اللہ میں نہ تو کمی بیشی کرسکتا ہے اور نہ ہی انکو معاف کرسکتا ہے اگر ایسا کرئے گا تو خود اپنے ساتھ ظلم کرئے گا کہ اس نے خود کو اللہ پاک کی ذات سے زیادہ رحم کرنے والا سمجھ لیا ہے ۔ ۔ اب آئندہ صفحات میں ہمارے اور آپکے درمیان محض اسی مسئلہ کی وضاحت پر گفتگو ہوگی ۔ ۔ ۔ ۔جاری ہے ۔ ۔ ۔۔ ۔ ۔ ۔


g bhai main ved wali baat py bahes ker he nhe rahi wo usi din khatm ho gai the baat ho rahi hain meri ap ki k saza main kami byshi to janab mery bhai ap ny kaha k ager mujrem ko maaf ker diya jaye to gonah to bherty jain k byshukkk is main koi shuk ki gonjaish he nhe k gonah ko na roka jaye to gonah bherty jain gy mager gonah ki noiyet dakhin ap is ka metlub yeh howa ka ALLAH MAF KERAY k jeb nabi pak PBUM ney ek ayse shakez ki sazamain kami ki the jo kore khany ki itni sekht nhe rakhta tha halank wo zani tha mger nabi pak PBUM ny usy koron ki saza nhe di ap PBUM ny fermya k asyi shaakh le jaye jis k sath 100 shakhain hon us in ko ek bar maro saza pori ho jaye g to pher ap is baat py kia arz kerain gay? pher is baat per arz kia kerain gy jeb ek ouret k bar bar israr kerny per us ouret ko sangar kia halan k usy 3 dafa wapis bjh diya gaya nermi berti gai is baat k bare main kia fermain gayap jeb hazret ayesha razi tala un ha per tuhmet lagny waly insan ko nabi pak PBUM ny maaf ker diya halan k tuhmet lagny walo ko 80 koron ki saza ager wo tuba ker b ly teb b us ki tuba main mafi ki gonjaish nhe to arz yeh hain k aysi sakht sazain islam nay teb implement kerny ka hukm jari kia jeb boaht zayda fahashi ka khedsha ho jeb bedamnika khedsha ho gonah ki noyet ko dakh te b qazi k pas yeh ikhtiyar hota hain k wo ijtehad ker k saza main aur saza ki noyet main rado badel ker sakta hain lakin islam k daire kar k ander rah ker aysi sazain akhri saza k tor b di jati hain jeb koi aur rasat na nakaly pher to jo sazain maaf fermain nabi pak PBUM NY un k bare main ap kiyon nhe kuch ferma rahain batain na muje pher ? nabi pak PBUM ka ek ek amel humre liya qanoon ki hasiyet rakhta hain ya hum ye maan lain k jahan per humre nabi pak PBUM ny rahm kia wahn g hum kiyon kerian quran pak main to nhe irshad howa
2doseri baat quran pak main irshad howa k khoon ka badla khoon qasas ?right jis ny ek insan ko qatel kia goya pori insaniyet ko qatel kia aur maafi ki koi gonjaish nhe ?sahe? aysa he likha hain na ?
mager waqet k sath sath qatel k cases main ijtehad ker k new implements add kiye k maqtool k lawaheeqeen ko dheet day di ajye paise day diye jain . is fayselain main rado badel howa na?
3seri baat k
hazret umer farooq razi tala unho k ek door main chori ki saza maaf ker di gai kiyon k teb qahet per gya tha halank hona to yeh chaye tha k teb to jurm itne bher gaya ho gaya zayda sazaain milne chaye the na pher unho ny kiyon maaf ki sazain ?
koi b chor paidashi chor hota hain ? koi ba zani kia padaishi gonah kerta hain waqet halat kia hoty hain kis terhan k thay in seb ko made nazer rakhty howay teb faysela kiya jaye han teb saza zaror milni chaye jeb sudherny ka muka dayne k bawajood fashai pahlai jaye teb saza do main yehneh kahti k mujrem ko saza he ne do mager mery bhaibar bar yeh arz ker rahi k noyet dakh lain pahlain yeh dakh k kis bina per gonah kia gaya
aur ager koi insan apne gonah k khuf sy iqrar kerta haui to us ki saza to ALLAH B MAAF FERMATA HAIN ALLAH NY FERMYA HAIN SHRIK K SIWA TAMAM GONAH MAAF KER DIYE JAIN GAY CHAYE WO GONAH SAMANDER MAIN JAHG K BARABER HON CHAE BENO AMBYA KI BAKERIYON K BALOON K BARABER HON KIA MAIN GALT KAH RAHI HON ?

chaand_nager
5th April 2009, 09:42
US WAKIYE KI BAAT CHOOR DAIN AP LOG hum us wakiye ko is liya nhe maan rahain k wo wakiya muslim ny kia hain ya is liya nhe maan rhy k swat main amen muhaida hony ja raha hain is liya jo oureton per zulm ho un ko qurabni dayni he pari g g yeh baat wahan k political sahab hain unho ny fermai hain t.v py jis ko main ny kud suna hain . muje naam nhe maloom un ka ager dobar aye ga to zaror define keron g kia amin muhaiday k liya ouret ki qurbani dayne di jaye g ?
3sera swal yeh arah ahin k
ek tarf us wakiye k bad muslim khan jo taliban ka leader hain us nay kaha live call ker k geo py aur dosery channal per k wo lerki gonah gar the usy saza milne he chaye the
4 baat us ny kuch dair bad bol dia k ge yeh to 10 mah pahly ka wkaia hain aur 5 baat pher yeh bola gya k 3 january ka wakia hain phe ryeh bola gaya ak newpaper main g ALLAH KI QASUM KAHI GAI K VED JALI HAIN ek tarf kud mu sy iqrar doseri tarf ALLAH KI qasumain kha ker inkar kia ja rha hain india main ya kahin aur yeh wakiya hota to hum ankhain bandh ker k yakeen keer laytain chaye wo b jali he kiyon na hota

chaand_nager
5th April 2009, 10:37
دوسری روایات میں آیا ہے کہ جس وقت صفوان کے اونٹ پر حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا لشکر گاہ پہنچیں اور معلوم ہوا کہ آپ اس طرح پیچھے چھوٹ گئی تھیں اُسی وقت عبداللہ بن ابی پکار اٹھا "خدا کی قسم! یہ بچ کر نہیں آئی ہیں، لو دیکھو، تمہارے نبی کی بیوی نے رات ایک اور شخص کے ساتھ گذاری اور اب وہ اسے علانیہ لیے چلا آرہا ہے (نعوذ باللہ)"۔)

"مدینے پہنچ کر میں بیمار ہو گئی اور ایک مہینے کے قریب پلنگ پر پڑی رہی۔ شہر میں اس بہتان کی خبریں اڑ رہی تھیں، رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے کانوں تک بھی بات پہنچ چکی تھی، مگر مجھے کچھ پتہ نہیں تھا۔ البتہ جو چیز مجھے کھٹکتی تھی وہ یہ کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کی وہ توجہ میری طرف نہ تھی جو بیماری کے زمانے میں ہوا کرتی تھی۔ آپ گھر میں آتے تو بس گھر والوں سے یہ پوچھ کر رہ جاتے کہ کیسی ہیں یہ؟۔ خود مجھ سے کوئی کلام نہ کرتے۔ اس سے مجھے شبہ ہوتا کہ کوئی بات ہے ضرور۔ آخر آپ سے اجازت لے کر میں اپنی ماں کے گھر چلی گئی تاکہ وہ میری تیمارداری اچھی طرح کر سکیں۔
ایک روز رات کے وقت حاجت کے لیے مدینے کے باہر گئی۔ اس وقت ہمارے گھروں میں بیت الخلا نہ تھے اور ہم لوگ جنگل ہی جایا کرتے تھے۔ میرے ساتھ مسطح بن اثاثہ کی ماں بھی تھیں جو میرے والد کی خالہ زاد بہن تھی۔
(دوسری روایات سے معلوم ہوتا ہے کہ اس پورے خاندان کی کفالت حضرت ابو بکر صدیق رضی اللہ عنہ نے اپنے ذمے لے رکھی تھی، مگر اس احسان کے باوجود مسطح بھی ان لوگوں میں شریک ہو گئے تھے جو حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کے خلاف اس بہتان کو پھیلا رہے تھے)
راستے میں ان کو ٹھوکر لگی اور بے ساختہ ان کی زبان سے نکلا غارت ہو مسطح۔ میں نے کہا اچھی ماں ہو جو بیٹے کو کوستی ہو، اور بیٹا بھی وہ جس نے جنگ بدر میں حصہ لیا ہے۔ انہوں نے کہا "بٹیا! کیا تجھے اس کی باتوں کی کچھ خبر نہیں؟ پھر انہوں نے سارا قصہ سنایا کہ افترا پرداز لوگ میرے متعلق کیا باتیں اڑا رہے ہیں۔
(منافقین کے سوا خود مسلمانوں میں سے جو لوگ اس فتنے میں شامل ہو گئے تھے ان میں مسطح، حسان بن ثابت مشہور شاعر اسلام، اور حمنہ بنت حجش، حضرت زینب رضی اللہ عنہا کی بہن کاحصہ سب سے نمایاں تھا۔)
یہ داستان سن کر میرا خون خشک ہو گیا، وہ حاجت بھی بھول گئی جس کے لیے آئی تھی، سیدھی گھر گئی اور رات بھر رو رو کر کاٹی۔"
آگے چل کر حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں: "میرے پیچھے رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے علی اور اسامہ بن زید رضی اللہ عنہم کو بلایا اور ان سے مشورہ طلب کیا۔ اسامہ رضی اللہ عنہ نے میرے حق میں کلمۂ خیر کہا اور عرض کیا "یا رسول اللہ! بھلائی کے سوا آپ کی بیوی میں کوئی چیز ہم نے نہيں پائی۔ یہ سب کچھ کذب اور باطل ہے جو اڑایا جارہا ہے"۔ رہے علی رضی اللہ عنہ تو انہوں نے کہا کہ "یا رسول اللہ! عورتوں کی کمی نہیں ہے۔ آپ اس کی جگہ دوسری بیوی کر سکتے ہیں، اور تحقیق کرنا چاہیں تو خدمت گار لونڈی کو بلا کر حالات دریافت فرمائیں"۔ چنانچہ خدمت گار کو بلایا گیا اور پوچھ گچھ کی گئی۔ اس نے کہا کہ "اس خدا کی قسم جس نے آپ کو حق کے ساتھ بھیجا ہے، میں نے ان میں کوئی برائی نہیں دیکھی جس پر حرف رکھا جاسکے۔ بس اتنا عیب ہے کہ میں آٹا گوندھ کر کسی کام کو جاتی ہوں اور کہہ جاتی ہوں کہ ذرا آٹے کا خیال رکھنا، مگر وہ سو جاتی ہیں اور بکری آ کر آٹا کھا جاتی ہے"۔ اسی روز رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے خطبہ میں فرمایا "مسلمانو! کون ہے جو اس شخص کے حملوں سے میری عزت بچائے جس نے میرے گھر والوں پر الزامات لگا کر مجھے اذیت پہنچانے کی حد کردی ہے۔ بخدا میں نے نہ تو اپنی بیوی ہی میں کوئی برائی دیکھی ہے، اور نہ اس شخص میں جس کے متعلق تہمت لگائی جاتی ہے۔ وہ تو کبھی میری غیر موجودگی میں میرے گھر آیا بھی نہیں"۔ اس پر اسید بن حضیر (بعض روایات میں سعد بن معاذ رضی اللہ عنہ) نے اٹھ کر کہا "یا رسول اللہ! اگر وہ ہمارے قبیلے کا آدمی ہے تو ہم اس کی گردن مار دیں اور اگر ہمارے بھائی خزرجیوں میں سے ہے تو آپ حکم دیں، ہم تعمیل کے لیے حاضر ہیں"۔ یہ سنتے ہی سعد رضی اللہ عنہ بن عبادہ، رئیسِ خزرج، اٹھ کھڑے ہوئے اور کہنے لگے "جھوٹ کہتے ہو، تم اسے ہر گز نہیں مار سکتے۔ تم اس کی گردن مارنے کا نام صرف اس لیے لے رہے ہو کہ وہ خزرج میں سے ہے۔ اگر وہ تمہارے قبیلے کا آدمی ہوتا تو تم کبھی یہ نہ کہتے کہ ہم اس کی گردن مار دیں گے"۔ اسید نے جواب میں کہا کہ "تم منافق ہو اس لیے منافقوں کی حمایت کرتے ہو"۔ اس پر مسجد نبوی میں ہنگامہ برپا ہو گیا، حالانکہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم منبر پر تشریف رکھتے تھے۔ قریب تھا کہ اوس اور خزرج مسجد میں ہی لڑ پڑتے، مگر رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے ان کو ٹھنڈا کیا اور پھر منبر سے اتر آئے"۔
حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں کہ "اس بہتان کی افواہیں کم و بیش ایک ماہ تک شہر میں اڑتی رہیں۔ نبی صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم سخت اذیت میں مبتلا رہے۔ میں روتی رہی۔ میرے والدین انتہائی پریشان اور رنج و غم میں مبتلا رہے۔ آخر کار ایک روز حضور صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم تشریف لائے اور میرے پاس بیٹھے۔ اس پوری مدت میں آپ کبھی میرے پاس نہ بیٹھے تھے۔ حضرت ابوبکر اور ام رومان (حضرت عائشہ کی والدہ) نے محسوس کیا کہ آج کوئی فیصلہ کن بات ہونے والی ہے۔ اس لیے وہ دونوں بھی پاس آکر بیٹھ گئے۔ حضور صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے فرمایا عائشہ! مجھے تمہارے متعلق یہ خبریں پہنچی ہیں، اگر تم بے گناہ ہو تو امید ہے اللہ تمہاری براءت ظاہر فرما دے گا اور اگر تم واقعی کسی گناہ میں مبتلا ہوئی ہو تو اللہ سے توبہ کرو اور معافی مانگو، بندہ جب اپنے گناہ کا معترف ہو کر توبہ کرتا ہے تو اللہ معاف کر دیتا ہے۔ یہ بات سن کر میرے آنسو خشک ہو گئے۔ میں نے اپنے والد سے عرض کیا آپ رسول اللہ کی بات کا جواب دیں۔ انہوں نے فرمایا بیٹی، میری کچھ سمجھ ہی میں نہیں آتا کہ کیا کہوں؟ میں نے اپنی والدہ سے کہا کہ آپ ہی کچھ کہیں۔ انہوں نے بھی یہی کہا کہ میں حیران ہوں، کیا کہوں؟ اس پر میں بولی آپ لوگوں کے کانوں میں ایک بات پڑ گئی ہے اور دلوں میں بیٹھ چکی ہے، اب اگر میں کہوں کہ میں بے گناہ ہوں، اور اللہ گواہ ہے کہ میں بے گناہ ہوں، تو آپ لوگ نہ مانیں گے، اور اگر خواہ مخواہ ایک ایسی بات کا اعتراف کروں جو میں نے نہیں کی، اور اللہ جانتا ہے کہ میں نے نہیں کی، تو آپ لوگ مان لیں گے۔ میں نے اس وقت حضرت یعقوب علیہ السلام کا نام یاد کرنے کی کوشش کی مگر نہ یاد آیا۔ آخر میں نے کہا اس حالت میں میرے لیے اس کے سوا اور کیا چارہ ہے کہ وہی بات کہوں جو حضرت یوسف علیہ السلام کے والد نے کہی تھی کہ 'فصبر جمیل (اشارہ ہے اس واقعے کی طرف جبکہ حضرت یعقوب علیہ السلام کے سامنے ان کے بیٹے بن یامین پر چوری کا الزام بیان کیا گیا تھا:سورۂ یوسف رکوع 10) یہ کہہ کر میں لیٹ گئی اور دوسری طرف کروٹ لے لی۔ میں اس وقت اپنے دل میں کہہ رہی تھی کہ اللہ میری بے گناہی سے واقف ہے اور وہ ضرور حقیقت کھول دے گا۔ اگرچہ یہ بات تو میرے وہم و گمان میں بھی نہ تھی کہ میرے حق میں وحی نازل ہوگی جو قیامت تک پڑھی جائے گی۔ میں اپنی ہستی کو اس سے کم تر سمجھتی تھی کہ اللہ خود میری طرف سے بولے۔ (اللہ و اکبر میرے ماں باپ آپ پر قربان اے مومنوں کی ماں کیا مرتبہ ہے آپکا کہ منافقوں کی دشنام طرازیوں کا جواب آپکی طرف سے آپ کا رب دیتا ہے اللہ اکبر ،اللہ الصمد۔ ازآبی ٹوکول ) مگر میرا یہ گمان تھا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کوئی خواب دیکھیں گے جس میں اللہ تعالیٰ میری براءت ظاہر فرما دے گا۔ اتنے میں یکا یک حضور صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم پر وہ کیفیت طاری ہو گئی جو وحی نازل ہوتے وقت ہوا کرتی تھی، حتیٰ کہ سخت جاڑے کے زمانے میں بھی موتی کی طرح آپ کے چہرے سے پسینے کے قطرے ٹپکنے لگتے تھے۔ ہم سب خاموش ہو گئی۔ میں تو بالکل بے خوف تھی مگر میرے والدین کا حال یہ تھا کہ کاٹو تو بدن میں لہو نہیں۔ وہ ڈر رہے تھے کہ دیکھیے اللہ کیا حقیقت کھولتا ہے جب وہ کیفیت دور ہوئی تو حضور صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم بے حد خوش تھے۔ آپ نے ہنستے ہوئے پہلی بات جو فرمائی وہ یہ تھی کہ مبارک ہو عائشہ، اللہ نے تمہاری براءت نازل فرما دی اور اس کے بعد حضور صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے دس آیات سنائیں (یعنی آیت نمبر 11 تا نمبر 21)۔ میری والدہ نے کہا کہ اٹھو اور رسول اللہ کا شکریہ ادا کرو۔ میں نے کہا کہ میں نہ ان کا شکریہ ادا کروں گا نہ آپ دونوں کا، بلکہ اللہ کا شکر کرتی ہوں جس نے میری براءت نازل فرمائی۔ اور حدیث میں ہے کہ میرے عذر کی یہ* آیتیں اترنے کہ بعد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے دو مردوں اور ایک عورت کو تہمت کی حد (یعنی حد قذف ) لگائی یعنی حسان بن ثابت ،مسطح بن اثاثہ اور حمنہ بنت حجش کو ۔ ۔ ۔
واضح رہے کہ یہ کسی ایک روایت کا ترجمہ نہیں بلکہ حدیث ،تفسیر اور سیرت کی کتابوں میں جتنی روایات حضرت عائشہ سے اس سلسلے میں مروی ہیں ان سب کو جمع کرکے ان کا خلاصہ نکالا گیاہے۔

اول تو یہ سمجھیئے کہ یہ سارا واقعہ قرآن پاک میں سورہ نور میں بعینہ مذکور نہیں ہے بلکہ سورہ نور میں فقط ام المومنین صدیقہ کائنات حضرت عائشہ صدیقہ رضی اللہ عنھا کی پاکی بیان کی گئی ہے اور حدود اللہ کا بیان ہوا ہے کہ زنا کی کیا حد ہے اور حد قذف یعنی تہمت لگانے والے پر کیا حد جاری ہوگی اس کہ علاوہ باقی سارا واقعہ احادیث ،سیرت اور تاریخ کی مختلف کتابوں میں بیان ہوا ہے آپ نے جو یہ بار بار فرمایا کہ حضور نبی کریم نے جھوٹا الام لگانے والوں کو معاف فرمادیا یہ محض الزام ہے کسی تاریخ یا حدیث یا تفسیر کی مستند کتاب سے ایسا ثابت نہیں اگر ہے تو برائے مہربانی اس کا نام بتائیے وگرنہ میں بار بار کہہ چکا کہ قرآن و سنت کو محض اپنے فہم سے سمجھنا چھوڑ دیجیئے کہ یہ سرا سر گمراہی ہے ۔ ۔ ۔۔جاری ہے ۔ ۔ ۔۔

main nay yeh pora wakia quran pak main perh ahain aur tafseer main aur nabi pak PBUM ny usy maaf ker diya ager us waqt koi saza d i gai the us insan ko to kiyon nhe tahreer k gai kia p muje bta sakatin k us insan ko kore maary gaye keb kahan ? quran pak main likhi hoi bat aur tafseer ko mian kays kud y biya ker sakti hon kia ALLAH KI LANET HO MUJ PER JO AYSA KERON MAIN

chaand_nager
5th April 2009, 10:39
[B]baat ho rahi hain sheriyet ki to kia wakia hum sheriyet ko maanty hain
is per amel ker rahin hain//???///?
1. parents lekriyon ko yeh hahdayet kertain hain k lerko sy baat nhe kerni
dosti islam main jaiz nhe hain namahram hoty han wo kud ko dhanp k rakhna chaye
jeb lerkiyonk risht ki baat ati hain to wo he parents apni beti ko numaish bna k logo k samny pasih ker daytain hain
pasih kis liya kia jata hain g humri beti ko passand ker k hum per ihsaan ker dan
lerkay waly seb sy pahly aj kal jo moerden pen ka doora pera howa k lerka sath he ajata ahin aur kisi ko
koi itraaz he neh hota hin ma sway un logo k jo becahry seedhy sahdy hoty hain jin k kiyal main k
haan sy ya rishata hony sy pahly lerki ka ek ajnabi lerky k samny jana kia sahe hain
wo to ek dosery k liya namahram hain na
islam ny to bohat zayad sakht words main kaha k merdon k apni neghain necahi rakhi
lekriyon ko kaha hain k apni orhniyan seenay py pahla k rakho aur perda keron un logo sy jo tumhri family say baher hain mager yahn
maze ki baat hain lekry sari sheriyt bhol jaty teb koi ayaat koi soreh noor soreh nisa yaad tak neh rahti yaad rahta hain to bus itna
k g islam ny haq dia passsand hain to kia yeh haq diay jao lerkiyon ko dakho ek gher passand nhe
dosera dkaho b
yeh jany bahger k kai gozerti ho g un parents py jo ummed lagaye bathin rahty hain
islam ki kon si aayat hain jis main likah ahin k haan ya nekah sy pahly lerki ko dekhna jaiz hain ? konsy aayt main likha hain k
jao logo ki jawan betion ko passand kero pasadn ka metlub hum ny bus yeh he nekal liya jo parenst sari zindagi
apni bachi ko
haya sharm seekhaty hain sari garet o gai wo kahti ahin jeb main in merdon k smany ja sakti ho nuamihs k liay jo shadi k name per ajaty hain tomain baher nekal ker
apni passand ka lerka kiyon nhe dhoond sakti
jeb wo baher nekalti hain to is souch k sath to batin k yeh socuh kaahn ly k jati hain teb koun bhol kjat hain humry nujawan k
passand ka metlub yeh to nhe tha k jao ja k gheronmain rishat dakho yeh faysela to bozrug kerty hain yeh kia tuamhin apne parents per itan b yakeen nhe
jinho kud apni zindagiayn gzori ayse insan k sath arzi khushi jis zamany main dekhna to door ki baat hain baat b nhe krty thay lerka lekri ek dosery sy teb b to shadiyan nebhai jati the lerko ko yeh samjhnhe ata bus apne metlub ki sheriyt nazer jati hain

chaand_nager
5th April 2009, 10:42
yani k jin wakiyat py nabi pak PBUM Ny maaf fermya diya wo is liya k munafeqeen ka properganda tha? muslim jo munafeeken k sath mil k ker rahain thay main hyran ho k jin wakiyat py ap ny post ki k sebkuch sahe maan leti mger jeb baat ayi maafi ki to yhe kah diyak properganda tha ?

aabi2cool
5th April 2009, 10:51
yani k jin wakiyat py nabi pak PBUM Ny maaf fermya diya wo is liya k munafeqeen ka properganda tha? muslim jo munafeeken k sath mil k ker rahain thay main hyran ho k jin wakiyat py ap ny post ki k sebkuch sahe maan leti mger jeb baat ayi maafi ki to yhe kah diyak properganda tha ?
aap se phir sabar anheen hua naaaaa??????????????? mera jawab abhi mukamal naheen hua tha main apni last repply main mention kiya tha k abhi jari hy . . . . .. ?plz stop ur questions for a while...

chaand_nager
5th April 2009, 11:00
jeb hum shaidiyan kerty hain baarat py sare aam dhulhun ko la k bthya diya jata hain ejb wo pori saji sanweri hoti yani pori attraction ka saman beni hoti hain her merd aur ouret ki negah us per per rahi hoti hain to yahn py sheriyt kiyon he nafez hoti hain kiyon nhe ayse gheronmain nekah kerty jahan py sare aam numasih ki bajye saadgi si dhulhum ko rukhset kia jaye
akheri baat
islam main jaiz hain 4 shadiyon ka
lakin kin kin soret main yeh hum bhol agye hum ny 4 shadiyon ki ijzet ko apne nafes jo janwar haywan ka nafes ben chuka hain yeh maan liya k jaiz hain 2 ya 3 shadi
islam main hain k bewaon sy nekah keron yateemu k serper hath phayron main ap sy pochti hon abi cool bhai k ap kisi bewah sy shadi kerian gay
jeb sheriyet hain na zaror nhe hain k kanwari lerki sy shadi keron bewah sy shadi kerny ka to itna sawab hain kerain gay ap ?
yeh kaha jta hain k g ager mera husband shadi k bad kisi aur lerki k ishaq main per jata main usy ijazt day don g k sahdi ker ly is baat ko ly ker itne buraiyan pahle rahi k her merd ny aj shadi shuda hoty howay b doseri shadi ko apna ferz samjh liya yeh doseri shadi kerny walo ko bewah ouretain yateem bachy bysahara garib gher ki bachiyan nazer nhe ati sherieyt k maany walo ko sari aam ourty ko kore maarny walo ko yeh nzaer nhe ata k kin mahool main hum apni bachiyon ki perwarish ker raahin k burai ki tarf na jain wo
shadi ko tamsha bana lia hain ager merd shadi k bad kisi ki ishqmain per jaye to kaah jata hain haq hain us ka merd zaat hain na koi gal nhe mager ager ourt ko shadi k bat kisi aur merd sy muhabat ho ajye to usy bedchalen kah diya jata hain wah kia insaaf hain mery kery to haq ouret kery to bedchalen ? sudia arab main 4 shadiyan ostly ki hoti hain aur yakeen janiye itni tebhai ka shikar ho chuakin wo log k ap socuh b nhe sakty jitne masherti buriyan is time wahan hain yaahn b nhe hon g . merd jeb ek sharif pak baz ourt sy khush nhe rah sakat to kia wo merd 2 ya 3 bivi sy khsuh ho jaye ga ALLAH NY YEH FERMAY HAIN K IS LIAY 4 SHADIYAN KERON TUM KAHAN GAI SHERIEYT
AUR JEB HUM MAIN KUD B IS MAIN SHAMIL HON KOI POETRY DESING KERNT HAIN KISI LERKI KI PIC LAGA DEYTAIN HALAN K WO BYSHUK FERZI PIC KIYON NA HO MAGER HAIN TO OURT KI PIC NA US PY HUM PORTY LIKHTY HAIN TO KIA YEH BURAI NHE YEH CHEZIN GONAH KI TARF RAGIB NHE KERTI ? KIA ISLAM SHERIYT IS BAAT KI IJZET DAYTI HAIN KUDA K BANDON PAHLY APNE MASHERY APNE GHERON KO TO SHERIEYT K MUTABIQ BAA LON PAHLY APNE KIRDARON MAIN TO ISLAM LY AYO PHER SAZA DAYNA SHERIYET K MUTABIQ PHER BOLAN PHER KORE BERSANA PAHLY WO MASHERA TO BANA LO JAHAN BUARI AUR ASCHI MAIN FARQ ANZER AJAYE HUM JSUT ISLAM K NAME PER SAZAIN DAYNA JANTY AHIN AMGER HUM KUD KO SANWERNA NHE JANTY PAQHLY IS QABIL TO BEN JAIN HUM KA PNE ANDER KI MASHERTI BUARION KO KHATM KER SAKIAN PHER HUM INSAAF K MUNSIF BENTY B ASCHY LAGT AUR TEB KOI AWAZ NHE UTHE GA YAKEEN JANU KOI B NHE KHYE GA SARE AAM KORE MARNY PR OURT K SATH BURA KIA GAYA MAGER US USY PAHLY EKA SYA MASHERA TO TASHKEEL DAY LO JAHAN PY ZULM KO ZUM AUR BUARI KO BUARI SMJHA JAYE JAHAN PY KAM SYKAM EK MUKA ZAROR DIAYA JAYSE SANWERNY KA

chaand_nager
5th April 2009, 11:08
aap se phir sabar anheen hua naaaaa??????????????? mera jawab abhi mukamal naheen hua tha main apni last repply main mention kiya tha k abhi jari hy . . . . .. ?plz stop ur questions for a while...
AP APNI BAAT JARI RAKHAIN main ny koi sawal nhe kia tha belkay bata rahi hon aur is topic main mazeed kuch nhe bolon g kiyon k saza ager mafi sy bahri hain to ALLAH PER HUM JAIS LOGO KO ZAROR PAKERTA JO BOAHT GONAHGAR HAINMAGER AZEEM HAIN HUMRA SUB JO INTEHAI MEHARBAN REHAM KERNY WALA HAIN JO INSAN K SARE GONAHO G MAAF KERNY WALA HAIN JO KUD RAAT K PECHLAY PAHER APNE BENDON KO AWAZ DAYNE WALA K AHIN KOI ASYA JO MUJ SY MANGNE WALA HO APNI BHAKSHISH JEB HUMRA PAIDA KERNA WALA HE ITNA RAHEEM O KAREEM AHIN TO HUM KIYON NHE US INSAN K WO GOANH MAAF KER SKATAIN JEB US NAY BAHKWAY MAIN AKER KIA HO JO US KI APNI ZAAT SY JORA HOWA HO HAAN AGER WO GONAH JIS SY MASHERY MAIN TEBHAI PAHLY US PY SAZA ZROR DO AYSI ZANI KO JO BAAZ NA AYE JO FAHASHI PAHLYE MAGER JO BAHEK JAYE GOANH KER BTHAIN TO KUDA K LIYA EK MUKA ZAROR TO PAHLI GALTI PER KUDA B MAAF FERMATA HIN YEH KUD HAZRET ALI RAZI TALA UN HA KA QOUL HAIN TO HUM JAYSE HAKEER LOG KIYON NHE MAAN SAKATIN

aabi2cool
5th April 2009, 11:19
اسلام علیکم معافی چاہتا ہوں میں کل اپنے دلائل مکمل کررہا ہے تھا کہ کسی نجی وجہ سے تعطل واقع ہوا آج دوبارہ سے شروع کرتا ہوں مگر اج سب سے پہلے فوکس ابن ماجہ کی اس روایت پر ہوگا کہ جس کو آپ نے اپنے دعوٰی کہ ثبوت کہ طور پر پیش کیا ہے ۔ ۔ ۔۔دیکھیئے اور سب سے پہلے سمجھیے اگر آپ دینی مباحث میں حصہ لیتی ہیں تو آپ کو دین کہ بنیادی ماخذات اور انکی ترتیب و مرتبہ کا علم ہونا چاہیے ۔ ۔ ۔ دین کا سب سے پہلا ماخذ قرآن اور اسے دیگر تمام ماخذات پر فضیلت حاصل ہے جو چیز قرآن کی نص قطعی سے ثابت ہوگی اس کہ مقابلے میں سنت پیش نہیں کی جاسکتی کیونکہ اول تو قرآن کی ایک ایک آیت تواتر سے ثابت ہے اور اور اسکی صحت قطعی ہے اور اس پر اجماع ہے کیونکہ قرآن پاک تمام کا تمام قطعی الثبوت بالتواتر ہے اور اسی پر اجماع ہے اور قر آن کی ہر ہر آیت سے علم قطعی حاصل ہوتا ہے اور جو بھی اس کا انکار کرے وہ بالاجماع کافر قرار پائے گا جبکہ احادیث یعنی (سنت) کے ساتھ ایسا معاملہ نہیں کیونکہ فقط سنت مشہورہ متواترہ سے متواتر کو چھوڑ کر ہر ہر حدیث سے علم قطعی حاصل نہیں ہوتا اور سنت متواترہ سے بھی قرآن کا نسخ جائز نہیں بلکہ صرف قرآن کی عموم کی تخصیص اور اس کہ مفھوم کی تبیین جائز ہے اور وہ بھی صرف احناف کہ نزدیک باقی ائمہ کرام کا اس سے بھی اختلاف ہے تفصیل کہ اصول کی کتابوں سے رجوع کریں ۔ ۔ ۔ ۔ اب آتا ہوں ابن ماجہ کی مذکورہ روایت کی طرف ۔ ۔سب سے پہلے اس روایت کا عربی متن اور ترجمہ دیکھ لیتے ہیں پھر بات کو آگے بڑھاتے ہیں آپ نے ابن ماجہ کی جو روایت پیش کی ہے وہ ابن ماجہ میں درج زیل طریقے سے بیان ہوئی ہے ۔ ۔ ۔۔ ۔

chaand_nager
5th April 2009, 11:33
اسلام علیکم معافی چاہتا ہوں میں کل اپنے دلائل مکمل کررہا ہے تھا کہ کسی نجی وجہ سے تعطل واقع ہوا آج دوبارہ سے شروع کرتا ہوں مگر اج سب سے پہلے فوکس ابن ماجہ کی اس روایت پر ہوگا کہ جس کو آپ نے اپنے دعوٰی کہ ثبوت کہ طور پر پیش کیا ہے ۔ ۔ ۔۔دیکھیئے اور سب سے پہلے سمجھیے اگر آپ دینی مباحث میں حصہ لیتی ہیں تو آپ کو دین کہ بنیادی ماخذات اور انکی ترتیب و مرتبہ کا علم ہونا چاہیے ۔ ۔ ۔ دین کا سب سے پہلا ماخذ قرآن اور اسے دیگر تمام ماخذات پر فضیلت حاصل ہے جو چیز قرآن کی نص قطعی سے ثابت ہوگی اس کہ مقابلے میں سنت پیش نہیں کی جاسکتی کیونکہ اول تو قرآن کی ایک ایک آیت تواتر سے ثابت ہے اور اور اسکی صحت قطعی ہے اور اس پر اجماع ہے کیونکہ قرآن پاک تمام کا تمام قطعی الثبوت بالتواتر ہے اور اسی پر اجماع ہے اور قر آن کی ہر ہر آیت سے علم قطعی حاصل ہوتا ہے اور جو بھی اس کا انکار کرے وہ بالاجماع کافر قرار پائے گا جبکہ احادیث یعنی (سنت) کے ساتھ ایسا معاملہ نہیں کیونکہ فقط سنت مشہورہ متواترہ سے متواتر کو چھوڑ کر ہر ہر حدیث سے علم قطعی حاصل نہیں ہوتا اور سنت متواترہ سے بھی قرآن کا نسخ جائز نہیں بلکہ صرف قرآن کی عموم کی تخصیص اور اس کہ مفھوم کی تبیین جائز ہے اور وہ بھی صرف احناف کہ نزدیک باقی ائمہ کرام کا اس سے بھی اختلاف ہے تفصیل کہ اصول کی کتابوں سے رجوع کریں ۔ ۔ ۔ ۔ اب آتا ہوں ابن ماجہ کی مذکورہ روایت کی طرف ۔ ۔سب سے پہلے اس روایت کا عربی متن اور ترجمہ دیکھ لیتے ہیں پھر بات کو آگے بڑھاتے ہیں آپ نے ابن ماجہ کی جو روایت پیش کی ہے وہ ابن ماجہ میں درج زیل طریقے سے بیان ہوئی ہے ۔ ۔ ۔۔ ۔

g main ny b yeh wakiya isi terhan bayan kia tha han pori qoutaion is liya nhe likhti k time kam hota hain mery pass aur urdu main likhny bathon to sadiyan gozer jain g itni rawani nhe

chaand_nager
5th April 2009, 11:54
main is per koi aur baat nhe keron k bus last main itna bolon ki yeh mullana hazraat ny humra deen itna itna mushkil ker diya hain itna mushkil ban adya k kisi baat main koi gunjaish nhe hain apni meltub ki ayaat ahadees dhhoonadh k sare wakiye biyan ker islam main sari gonjaisho ko kahtm ker diya hain jeb ALLAH gonah maaf kerny wala ahin jis gonah main mulki intaashar wager ya kisi ka nuksaan ya fahashi k intihai arooj py pohanchny ka kheta ra ho wo gonah h=jis py tuba ki jaye sharamdagi ka ihsas ho us goanh main kiyon nhe mafi ki gonjaish rakhi gai hain jis ka jo jo dil kerta hain quran pak ki ayaat ko lay ker apni apnmi tafseer bana layta hain ek baat ko pather ly k bath jata ahin halan k dergozer kerny waly log ALLAH KO BOAHT PASSAND HAIN mager hum sheriyrt k mutabiq apni zindagi maun just sazaon k hadh tak amel kerny k majaz hain aur koi amel nhe hain sheriyt main baki seb bhol gaye hian main aur baat he keron g khush rahain seb

aabi2cool
5th April 2009, 12:09
http://www.pegham.com/images/imported/2009/04/47.gif



سب سے پہلے تو میں یہ عرض کردوں کہ زانی کی حد قرآن کی نص قطعی سے ثابت ہے جبکہ اس حد میں نرمی کہ لیے آپ جو حدیث پیش کررہی ہیں وہ صحاح ستہ کی سب سے آخری درجہ کی کتاب سنن ابن ماجہ سے ہے ۔ لہزا سب سے پہلے تواس روایت کی صحت کو جانچا جائے گا اگر صحت کہ اعتبار سے یہ صحیح بھی ثابت ہوجائے تب بھی اس سے نص قرآنی کا نسخ یعنی تنسیخ جائز نہیں کیونکہ قرآن پہلا ماخذ ہے اور اسے سنت پر افق حاصل ہے ۔ ۔۔ پھر سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ آیا کیا حدیث قران کہ مخالف ہے ؟ تو اس کا جواب یہ ہے کہ بظاہر ایسا ہی لگتا ہے لیکن حقیقت میں ایسا نہیں ہے تو پھر سوال یہ پیدا ہوا کہ پھر اس حدیث کو کس طرح سے قرآن کہ تابع کیا جائے ؟؟؟؟؟ تو جواب یہ ہے کہ اول تو اس حدیث کی فنی حیثیت ایسی نہیں کہ اس کو قرآن کی نص صریح کہ خلاف پیش کیا جائے باالفرض اگر پیش کر بھی دیا جائے تو بھی اس کی فنی حیثیت دیکھنے کہ بعد اس حدیث کو قرآن کہ تابع کیا جائے گا نہ کہ قرآن کو اس حدیث کہ ۔ ۔ لہزا اس کہ لیے ضروری ہوگا کہ اس حدیث کی تاویل پیش کی جائے اب ہم درج زیل میں اس حدیث کی مختلف تاویلات جو اللہ پاک نے ہمارے فھم کو عطا فرمائی ہیں پیش کرتے ہیں ۔ ۔ ۔ ۔۔(اللہ کمی بیشی معاف فرمائے آمین )۔ ۔
نمبر ایک :- اس حدیث کو قرآن کہ مقابلے میں نہیں پیش کیا جاسکتا ہے یہی اصول ہے شریعت کہ قانون کا ۔ ۔ ۔
نمبر دو:- اگر اس حدیث کو قرآن کہ مقابلے میں یعنی قرآن کی نص صریح کہ معارض میں باالفرض پیش بھی کیا جائے تو اس کی تاویل واجب ہوگی ایسی تاویل جو اسے قرآن کہ تابع کرے نہ کہ قرآن و سنت کا آپس میں ٹکراؤ پیدا کرے۔
نمبر تین:- اس حدیث کو خصائص نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم میں سے مانا جائے گا یعنی یہ اختیار فقط نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کو حاصل ہے کہ وہ اس قسم کہ معاملات میں سے بعض لوگوں کو خاص کرلیں آپ کہ بعد امت میں سے کسی کو بھی یہ اختیار حاصل نہیں ۔ ۔ ۔ اور نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کہ مخصوص اختیارات کی بہت سے مثالیں ہیں کہ جو فقط آپ کہ ساتھ خاص تھے امت کے لیے ممنوع مثلا ایک صحابی کی گواہی کو آپ کا دو آدمیوں شہادت کہ برابر قرار دینا ۔اور ایک صحابی کہ لیے چھ ماہ کا چھوٹا مینڈھا قربانی کہ لیے جائز قرار دے دینا ایک صحابی رسول کہ لیے ریشم اور بعض صحابیوں کہ لیے سونے کی انگھوٹی اور کنگنوں کو جائز قرار دے دینا وغیرہ وغیرہ ان سب معاملات میں نبی کریم نے اپنے زاتی اختیار کو تصرف میں لاتے ہوئے بعض لوگوں کو امت کہ عموم میں سے خاص کرلیا اور نبی کریم یہ خاص کرنا فقط نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کہ لیے جائز ہے کہ آپ شارع دین ہیں اور جن لوگوں کو آپ نے خاص کیا ان مخصوص افعال کہ ساتھ تو ان مخصوص افعال کی تخصیص فقط انہی لوگوں کہ لیے ہے نہ کہ امت کہ دیگر افراد کہ لیے اور نہ ہی آج کہ دور میں کوئی بھی حاکم اور کوئی بھی قاضی ایسا کرسکتا ہے ۔ ۔ ۔۔
نمبرچار:- حدیث کہ عربی متن پر اگر غور کیا جائے تو جن عربی الفاظ کو ہم نے سرخ پینسل سے انڈر لائن کیا ہے وہ الفاظ اس حدیث میں اس صحابی پر حد کہ نرم کیے جانے پر قرینہ ہیں کیونکہ حدیث میں عربی لفظ مخدج ضعیف استعمال ہوا ہے اور مخدج کا لفظ خداج سے ہے اور خداج کہ لغوی معنٰی یہ ہیں کہ گائے جو نامکمل بچھڑا جنم دیتی ہے یعنی عرف میں حمل کی مدت پوری ہونے سے پہلے گرا دیتی ہے اسے خداج کہا جاتا ہے یعنی ناقص تو اس حدیث خداج کہ ساتھ ضعیف کا لفظ بھی استعمال ہوا ہے ۔۔ جب نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ اس کو سو کوڑے بطور حد لگاؤ تو صحابہ نے عرض کی یا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم وی تو خداج اور ضعیف ہے یعنی ناقص اور نہایت ہی کمزور ہے اگر اس کو سو کوڑے لگائے گئے تو وہ مر جائے گا تو تب آپ نے فرمایا کہ سو لکڑیاں اکٹھی کرکہ ایک ہی بار میں لگا دو ۔ ۔۔ کیونکہ ہم پہلے بھی عرض کرچکے کہ کوڑوں کی حد میں قتل کرنا مقصود نہیں ہوتا بلکہ فقط سزا و تادیب مقصود ہوتی ہے تاکہ مجرم سزا کہ وقت کی تکلیف کو مد نظر رکھتے ہوئے آئندہ اس جرم سے بعض رہے ۔ ۔۔ لہزا اس حدیث میں خداج ضعیف اور لو ضربناہ مائۃ سوط مات کہ الفاظ یعنی کہ اگر ہم نے اسے شو کوڑے مارے تو وہ مر جائے گا کہ الفاظ اس بات پر قرینہ ہیں کہ اس کی حد میں نرمی اس لیے کی گئی کہ وہ ناقص اور ضعیف تھا اور اس کہ مرجانے کا اندیشہ تھا ۔۔ پھر اس کہ بعد بھی آپ اگر حدیث کہ الفاظ پر غور کریں گے تو آپ پر واضح ہوگا کہ حدیث میں قرآن کی حد کی خلاف ورزی نہیں کی گئی بلکہ قرآن میں جو سو کا عدد بولا گیا ہے بطور حد نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے اسے پورا فرمایا ہے شرعی طریقے سے اور ایسا راستہ اختیار کیا ہے کہ قرآن کی حد بھی پوری ہوجائے یعنی اس آدمی کو سو کوڑے بھی لگ جائیں اور قرآن حکم کہ منشاء کہ مطابق اس کی جان بھی بچ جائے ۔ ۔ اللہ و اکبر کیا بات ہے میرے کریم آقا صلی اللہ علیہ وسلم کی کہ آپ نے کتنی بہترین قرآن کی تبیین فرمائی ۔ ۔ ۔اور اس کو شرعی اصطلاح میں حیلہ و اسقاط سے تعبیر کیا جاتا ہے اس کی متعدد مثالیں قرآن و سنت دونوں سے ثابت ہیں ۔
یہ تھی آپکی پیش کردہ حدیث کی وہ تاویلات جو اللہ پاک نے ہمارے فھم پر محض اپنی عطا سر روشن فرمائیں (اگر یہ درست ہیں تو محض اللہ ہی کا فضل ہے اور اگر غلط ہیں تو اس میں سرا سرہمارے فھم کا قصور ہےاللہ پاک کمی بیشی معاف فرمائے )
نوٹ ایک بات اگر آج کہ اس دور میں کوئی ایسا ضعیف شخص قرآن کی حد کی پامالی کرنے والا ہوتو کیا اس کہ ساتھ حدیث والا معاملہ کیا جاسکتا کہ نہیں ؟؟؟؟؟؟؟ اس سلسلے میں فقہاء ہی بہتر بتا سکتے ہیں ہمارا علم نہایت ہی محدود اور ناقص ہے ۔ ۔ ۔ باقی واللہ والرسولہ اعلم ۔ ۔ ۔۔ ۔ ۔ جاری ہے ۔ ۔ ۔۔

aabi2cool
5th April 2009, 13:51
to pher ap is baat py kia arz kerain gay? Pher is baat per arz kia kerain gy jeb ek ouret k bar bar israr kerny per us ouret ko sangar kia halan k usy 3 dafa wapis bjh diya gaya nermi berti gai

اس کا جواب یہ ہے کہ اس عورت پر حد میں نرمی اس لیے کی گئی کہ وہ حاملہ تھی لہزا قانون یہ ہے کہ حاملہ کو وضع حمل کہ بعد حد لگائی جائے گی اور وضع حمل کہ بعد جب اس کا بچہ اس سے اپنا حق وصول کرچکا یعنی مدت رضاعت پوری کرچکا تو آپ نے اس پر حد جاری کی لہزا یہاں مطلقا حد کو منسوخ یا نرم نہیں کیا گیا بلکہ متعدد وجوہ کی بنیاد پر حد کو مؤخر کیا گیا یعنی حد کو لگانے میں تاخیر برتی گئی جس میں متعدد حکمتیں پیش نظر تھیں۔ ۔۔





is baat k bare main kia fermain gayap jeb hazret ayesha razi tala un ha per tuhmet lagny waly insan ko nabi pak pbum ny maaf ker diya halan k tuhmet lagny walo ko 80 koron ki saza ager wo tuba ker b ly teb b us ki tuba main



آپ کا یہ کہنا کہ حضرت عائشہ رضی اللہ عنھا پر پر تہمت لگانے والوں کو نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے معاف کردیا بلا ثبوت ، بلاتحقیق ہے ۔ ۔ ۔ ہم پہلے عرض کرچکے کہ اس سلسلے میں تین اشخاص پر حد قذف جاری کی گئی ۔ ۔ جن میں سے ایک بڑے مشھور صحابی رسول حضرت حسان بن ثابت ہیں ۔ ۔ ۔آپ کا یہاں پر حد کی معافی والا قول بغیر ثبوت کہ ہے لہزا آپ سے استدعا ہے کہ کسی مستند اسلامی ماخذ سے اپنے قول کا ثبوت پیش کریں ۔ ۔ ۔جبکہ ہم نے معروف قرآنی تفسیر ، تفسیر ابن کثیر کہ حوالہ سے ذکر کیا کہ حد جاری کی گئی تھی ۔ ۔ ۔ ۔



mafi ki gonjaish nhe to arz yeh hain k aysi sakht sazain islam nay teb implement kerny ka hukm jari kia jeb boaht zayda fahashi ka khedsha ho jeb bedamnika khedsha ho gonah ki noyet ko dakh te b qazi k pas yeh ikhtiyar hota hain k wo ijtehad ker k saza main aur saza ki noyet main rado badel ker sakta hain lakin islam k daire kar k ander rah ker aysi sazain akhri saza k tor b di jati hain jeb koi aur rasat na nakaly pher to jo sazain maaf fermain nabi pak pbum ny un k bare main ap kiyon nhe kuch ferma rahain batain na muje pher ? Nabi pak pbum ka ek ek amel humre liya qanoon ki hasiyet rakhta hain ya hum ye maan lain k jahan per humre nabi pak pbum ny rahm kia wahn g hum kiyon kerian quran pak main to nhe irshad howa



اب تک آپ ہم پر بہت سے سوال کرچکیں محض اپنے عقل کی بنیاد پر مگر یاد رہے کہ ہم نے ابھی تک آپ پر ایک بھی سوال وارد نہیں کیا اور ہمیں یقین ہے کہ اگر ہم نے ایک بھی سوال آپ سے کر دیا تو پھر آپ دوبارہ یہاں وارد نہیں ہونگی ۔ ۔ ۔ اس لیے عرض ہے کہ محض اپنی عقل کہ قیاسی گھوڑے قرآن و سنت کی واضح نصوص کہ مقابلے مت دوڑایئے اگر دوڑانے ہی ہیں تو قرآن کہ قرآن اور قرآن کہ سنت کہ ساتھ تقابل وتفاوت میں مت دوڑائیں بلکہ دونوں کہ ایکدوسرے کہ ساتھ تعاون میں دوڑائیں ۔ ۔ ۔۔





2doseri baat quran pak main irshad howa k khoon ka badla khoon qasas ?right jis ny ek insan ko qatel kia goya pori insaniyet ko qatel kia aur maafi ki koi gonjaish nhe ?sahe? Aysa he likha hain na ?
mager waqet k sath sath qatel k cases main ijtehad ker k new implements add kiye k maqtool k lawaheeqeen ko dheet day di ajye paise day diye jain . Is fayselain main rado badel howa na?



پھر وہی ناقص مطالعہ اور اس پر اپنی عقل کہ قیاسی گھوڑے ۔ ۔ ۔ ۔ ارے بی بی میں اوپر بھی عرض کرچکا کہ قصاص کا شمار حدود میں آتا ہے اور دیت قصاص کی ہی ایک شکل ہے ان دونوں کا زکر قرآن و سنت میں موجود ہے نہ کہ بعد کہ دور میں اجتھاد کہ زریعے کیا گیا لہزا قصاص کی سزا بھی اگرچہ حدود کی طرح قرآن کریم میں متعین ہے کہ جان کے بدلے میں جان اور زخموں کے بدلہ میں مساوی زخموں کی سزا دی جائے لیکن حدود کو چونکہ بحیثیت حق اللہ کے نافذ کیا جاتا ہے اس لئے اگر صاحب حق معاف بھی کرنا چاہے تو معاف نہیں ہوگا اور حد ساقط نہیں ہوگی مثلاً جس کا مال چوری کیا ہے وہ معاف بھی کردے تو چوری کی شرعی سزا معاف نہ ہوگی۔رہا قصاص کا معاملہ تو چونکہ اس میں حق العبد غالب ہے اس لئے ولی مقتول کو اختیار ہے کہ وہ قصاص لے لے یا معاف کردے اسی طرح زخموں کے قصاص میں بھی یہی حکم ہے۔
قتل کی سزا کے لیے قرآن میں قصاص کا حکم آیا ہے۔ یہ ایک فرض ہے جو اسلامی حکومت پر اللہ تعالیٰ کی طرف سے عائد کیا گیا ہے۔اسلامی معاشرے کے لیے اسی میں زندگی ہے اور مسلمانوں کے لیے یہ اللہ کا نازل کردہ قانون ہے جس سے انحراف صرف ظالم ہی کرتے ہیں، لہٰذا حکومت کی ذمہ داری ہے کہ اس کے علاقے میں اگر کوئی شخص قتل کر دیا جائے تو اس کے قاتلوں کا سراغ لگائے، انھیں گرفتار کرے اور قانون کے مطابق مقتول کے اولیا کی مرضی ان پر ٹھیک ٹھیک نافذ کر دے۔ اور دیت بھی قصاص کی ایک شکل ہے کہ جس کا زکر خود قرآن پاک میں موجود ہے البتہ دیت کی مقدار حدیث سے ثابت ہے قتل خطا اور قتل عمد، دونوں میں قرآن کا حکم یہی ہے کہ دیت معاشرے کے دستور اور رواج کے مطابق ادا کی جائے۔ قرآن نے خود دیت کی کسی خاص مقدار کا تعین نہیں کیا ہے ۔ ۔ ۔




3seri baat k
hazret umer farooq razi tala unho k ek door main chori ki saza maaf ker di gai kiyon k teb qahet per gya tha halank hona to yeh chaye tha k teb to jurm itne bher gaya ho gaya zayda sazaain milne chaye the na pher unho ny kiyon maaf ki sazain ?


رہ گئی اس اثرکی بات جو آپ نے حضرت عمر سے نقل کیا ہے تو اس کی بابت عرض ہے کہ كسى بھى حالت ميں ان حدود اللہ كو معطل كرنا جائز نہيں، اور عمر رضى اللہ تعالى عنہ سے جو مروى ہے كہ انہوں نے قحط سالى اور بھوك كے سال حد ساقط كر دى تھى، تو يہ دو چيزوں كى محتاج ہے ۔
اول: اس كا صحيح ثبوت یعنی اس اثر کی صحت کا ثبوت جو شخص اس اثر کو قرآن کی نص کہ مقابل پیش کرتا ہے اول اس سے ہمارا مطالبہ ہے کہ وہ اسے صحيح سند كے ساتھ امير المومنين رضى اللہ تعالى عنہ تك ثابت كرے.
دوم: عمر رضى اللہ تعالى عنہ نے شبہ قائم ہونے كى وجہ سے حد ختم كى تھى،اور فقہ کا معروف اور مسلمہ قاعدہ ہے جو کہ احادیث رسول صلی اللہ علیہ وسلم سے اخذ کردہ ہے کہ شبہات کی بنا پر حدود کو ساقط کرو کیونکہ حدود کی سزائیں بہت سخت ہوتی ہیں اس لیے مسلمہ اصول ہے کہ انھے شبہات کی بنا پر ساقط کردیا جائے گا ۔۔ اسلامی حدود و تعزیرات جس قدر شدید ہیں اسی قدر ان کے نفاذ میں نرمی اور احتیاط ہے۔ حضرت رحمت للعالمین صلّی اللہ علیہ وسلم کے چند واضح ارشادات:
حضرت ابن عباس اور حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہما سے روایت ہے آپ صلّی اللہ علیہ وسلم فرماتے ہیں کہ جہاں تک ممکن ہو حدود کو مؤخر کردو۔ (ابن ماجہ)
اس سلسلہ میں ام المؤمنین حضرت عائشہ صدیقہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ آپ فرماتی ہیں کہ رسول اللہ صلّی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: جہاں تک ممکن ہو مسلمانوں سے حدود کو ساقط کردو، اگر تم کوئی راہ پاتے ہو کہ وہ حد سے بچ جائے تو اس کا راستہ چھوڑدو، کیونکہ معاف کرنے میں امام و حاکم کی طرف سے غلطی سرزد ہونا اس کے سزا دینے میں غلطے کرنے سے بہتر ہے۔
(ترمذی، حاکم و بیہقی)
اس ضمن میں حضرت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ عنہما کی یہ روایت ہے۔ جہاں تک تمہارے بس میں ہو اللہ تعالیٰ کے بندوں سے حدود اور قتل کی سزا کو ٹال دو (ساقط کردو)۔ (طبرانی)
حدود اور تعزیرات کے نفاذ کے سلسلہ میں خود خلیفہ ثانی حضرت فاروق اعظم رضی اللہ تعالیٰ عنہ کا ارشاد ہے شبہات کی موجودگی میں حدود قائم کرنے کی نسبت میرے لیے یہ زیادہ بہتر ہے کہ شبہات کے بناء پر حدود کے نفاذ کو ساقط کردوں۔ (احکام الحکام، جلد چہارم صفحہ ۱۵۷)
چنانچہ تمام فقہائے امت کا اس پر اتفاق ہے کہ شبہ کی صورت میں حدود ساقط ہوجاتی ہیں۔ چناچہ حضرت عمر رضى اللہ تعالى عنہ نے شبہ قائم ہونے كى وجہ سے حد ختم كى تھى، كيونكہ لوگ قحط اور بھوك ميں تھے، كيونكہ بعض اوقات انسان ضرورت كى بنا پر چيز ليتا ہے، نہ كہ اس سے سير ہونے كے ليے بغير ضرورت ہى

الحمدللہ یہاں پر آکر ہم نے آپکے اٹھائے گئے تمام ویلڈ کوئسچنز کہ جوابات دے دئے رہ گئے وہ عقلی اور قیاسی گھوڑے جو آپ نے اصل موضوع سے ہٹ کر فرمائے ان کہ جواب کو ہم نظر انداز کرتے ہیں کہ اگر انکا جواب دیا تو آپ کو شدید خفت اٹھانا پڑے گی ۔ ۔ والسلام علیٰ من التبع الھدیٰ

Mr.Khan
5th April 2009, 14:26
Dekhiye ye movie jo media per chalaii ja rahi hai ....... ek Fake movie hai

Islam ko badnaam karne k liye ye sub prooganda hai....

Can u imagine after 40 flicks the girl is easily walking...

How can it possible???

Aap sub apni aqal key parday kholye please...

chaand_nager
5th April 2009, 14:33
ayet num(33-34) soreh nisa
aur jin ki bedkhoi ka der ho tum ko to in kob samjhao aur juda kero sonay main
aur maro aur pher ager kaha manain tu met talash kero in per ilzam ki rah byshuk ALLAH hain seb sy pehly
tafseer(jo quran pak main majod hain wo he lafz ba lefz likhi ja rahi hain )
ager koi ouret bedkhoi kery pehla derja:merd us ko zubani samjhaway ager na many tu dosera derja:
ky juda soye lakin isi gher main is per b na manain tu akheri derja yeh hain;k us ko maro per ayse na kery k jis ka neshan baki reh jaye
ya hadhi toot jaye
yeh tafseer ka ek derja hain aur isi k muafiq tadeeb aur tebhiye ki ijzat hain jis k 3 derjain hain
(akheri derja marna hain)
ager ouret bedkhoi aur nafermani sy baaz ajain aur mateeh ho jain to tum bhi bus kero aur un k qasooron ki
quraidon met her qasoor ki ek hadh hain aur merna akheri derja hain
(kia ek ouret 100 kore berdasth ker sakti han us k jisamnu aza main neshan nhe pre ga)
kia quran pak main likhi gai is tafseer sy hum inkari hain ?
kia main jo 3 din sy baat kah rahi hon wo galt hin k gonah gar ko saza teb do jeb wo baaz na aye teb us ko ebret ka neshan bana do ta ky serkesh aur bedgho log baaz ajain mager gonah kerny wala ager pane gonah per sherminda hain tuba kerta hain teb kis is tafseer sy pata nhe chalta k us k bad us per koi ilzam dhoondna gonah hain koi aur ilzam ki rah talash kerna gonah kam sy kam 3 na sahe ek he muka day don
kia ab b meri is baat ko galt kah jaye ga ap ny boaht ayaat perhi aur her jawab main ny kaha k
sari ayaat ka ahtaram un ka hukam hum per farz mager wo aayaat b hain jin main sila rehmi sy kam liya kia ek ouret 100 kore berdasht ker sakti us soret main jeb wo gonah sy tuba ker lay to mera kiyal hain k ALLAH TALA NY FERMYA HIN K INSAN AGER APNE GOANH PER KUD TUBA KER LY TO ALLAH US KA GONAH MAAF FERMATA HAINYEH HUM KONSA ISLAM SEKH RAHIN HAIN
JIS MAIN NA GONAH MAAF KIA JAT HAIN NA SILA REHMI KI JATI NA KOI SUDHERNY KA MUKA DIYA JATA AHIN
YEH TO HUMARA ISLAM NHE
HUMRA
ISLAM NY TO HER BAAT MAIN GONJAISH RAKHI HAIN
SAHABA IKARM KO
IJTEHAAD KERNY KA HUKM KIYON DIYA GAYA TA KY ZAMNA JADEED KA TAQZO KO PORA KERTY HOWAY


aur jahan tak ap ny yeh baat ki k main sari batain apni aqel sy ker rahi hon to is ka meltub yeh howa k main jitne baatin ki jitne aayaat perhain jitne wakiyat bayan kiye sare k sare mafrozay thay?teb to muje pay kore lagny chaye k main srif apni aqel ki bunyaad py bahes ker rahi halan k main bar bar waziyah ker chuki hon books ka name b bata cuki quran pak ki ayaat b pata chuki to goay meri sari ayaat galt aur apne jo jo fermaya wo sahe? aur jahan tak ap ny fermya k ap muj sy sawl kerain gy to main yaahn waird nhe ho g yeh ap ki kam aqeli hain ya choti souch haun magror hai ya pher nadan hain main yeh kah sakti ap sawal kerain jtna muje ilam ho ga ba kuda main jawab don g aur goya ap sary jo wakiaayt pasih kiye is sy to pata yeh lagat hain k nabi pak PBUM k door main sarin hadhian sari sazain maaf the jin jin sazaon main kami byashi ki gai un ki waja munafeqeen uar falaan falan log rahin yeh he metlub howa na? yani sari sazain sari hadoon even chori ki saza main maafi ka ilaan hazret umer razi tala un ha k door main maaf ker diya gaya kiyon k qahet per gaya tha teb yeh baat b meri apni ferzi hai is baat main b ap kahi sy hadhees lay ayain aur wakiya suna dain munafeeqeen lain aur g saza is liya kam ki gai kisa khatm yhe fermana chah rahain hain ap boaht afsos ki baat hain bhai mery boaht he dokh ki baat sari baatin sari hadhsain ap ko yaad hain to challange hain ap ko ap itne he sheriyt k many waly ho to bewah sy shadi kero chor do poety py lerkyin k images paste kern ayeh b gonah hain sheriyt per amel us baat per he hain jis main ap jaise logo ny yeh maan lia koi gonjaish he neh main mazzed koi bahs nhe ker sakti apne uper yeh ilzam berdast nhe keron g ap kah diya k meri sari bation ferzi ap ki sari baatain hadhis hai wah g wah good keep it up main aur koi bahes nhe ekron g jo tumahin sahe lagat hain keron jo muje sahe lagta hain mery keron g bolon g b mager ek baat dobar muje py yeh ilzam laga k meri sari wakiayt jhty ya sari aayyat peri wo galt teh to bohat bura ho ga bus

chaand_nager
5th April 2009, 14:42
1709 )
اس لیے سچي توبہ بھي گناہوں كا كفارہ بنتي ہے اور "توبہ كرنےوالا ايسےہي ہے جيسے كسي كا كوئي گناہ نہ ہو" بلكہ اللہ تعالي تواس كي برائيوں كونيكيوں سے بدل ڈالتےہيں.مگر یہ اس وقت ہے کہ جب کسی بھی حد کی پامالی کرنے والے نے اپنے گناہ کا اعتراف اسلامی عدالت کہ سامنے نہ کیا ہو کیونکہ جب وہ اعترف گناہ عدالت کہ سامنے کرلے گا تو اب اس پر اسلامی ریاست کہ حاکم کا حد جاری کرنا واجب ہوجائے گا لہزا اگر کوئی بھی شخص توبہ كرنےميں سچائي اور كثرت سےاستغفار كرے اور اپنے معاملے کو اپنے اور اللہ کہ درمیان رکھے تو اس پرگناہ كا اعتراف كرنا لازم نہيں كہ اس پر حد جاري كي جاسكے، بلكہ انشاء اللہ اس کہ لیے خالی توبہ ہي كافي ہے مگر یاد رہے جب تک کہ وہ معاملہ اس کہ اس کہ رب کہ درمیان ہو ۔ ۔ ۔
Quote:
yeh ap ny he post kia ? main jo 3 din sy kah ker rahi hon sirf yeh he ker rahi the k ager koi insaan tuba kert ahin apne gonah ki ALLAH SY YA APNE PARENTS SY AGER UN KO PATA HAIN YA APNE SHOHER SY MAGER MAMLA ADALT TAK NHE POHNCHA HAIN US SORET MAIN MAAF KER DAYNA AFZAL HAIN NA K PHE US KO PAKER K LYA JAO AUR USY RISWA KER DO JIS PER WO TUBA KER CHUKY HO PAHLY JEB ALLAH NY AIBO PER PERDA DAL DIA HAIN TO PHER /MAIN 3 DIN SY MUSELSAL YEH SAMJHNY KI TRY KER RAHI THE JIS KI WAJA SY MERI SARIIIIIIIIIIIIII BATON KO JHT MAFRIOZA BYBUNYAAD KAHA DIYA GAYA .

aabi2cool
5th April 2009, 14:53
1709 )
اس لیے سچي توبہ بھي گناہوں كا كفارہ بنتي ہے اور "توبہ كرنےوالا ايسےہي ہے جيسے كسي كا كوئي گناہ نہ ہو" بلكہ اللہ تعالي تواس كي برائيوں كونيكيوں سے بدل ڈالتےہيں.مگر یہ اس وقت ہے کہ جب کسی بھی حد کی پامالی کرنے والے نے اپنے گناہ کا اعتراف اسلامی عدالت کہ سامنے نہ کیا ہو کیونکہ جب وہ اعترف گناہ عدالت کہ سامنے کرلے گا تو اب اس پر اسلامی ریاست کہ حاکم کا حد جاری کرنا واجب ہوجائے گا لہزا اگر کوئی بھی شخص توبہ كرنےميں سچائي اور كثرت سےاستغفار كرے اور اپنے معاملے کو اپنے اور اللہ کہ درمیان رکھے تو اس پرگناہ كا اعتراف كرنا لازم نہيں كہ اس پر حد جاري كي جاسكے، بلكہ انشاء اللہ اس کہ لیے خالی توبہ ہي كافي ہے مگر یاد رہے جب تک کہ وہ معاملہ اس کہ اس کہ رب کہ درمیان ہو ۔ ۔ ۔
quote:
Yeh ap ny he post kia ? Main jo 3 din sy bakwas ker rahi hon sirf yeh he ker rahi the k ager koi insaan tuba kert ahin apne gonah ki allah sy ya apne parents sy ager un ko pata hain ya apne shoher sy mager mamla adalt tak nhe pohncha hain us soret main maaf ker dayna afzal hain na k phe us ko paker k lya jao aur usy riswa ker do jis per wo tuba ker chuky ho pahly jeb allah ny aibo per perda dal dia hain to pher /main 3 din sy muselsal yeh samjhny ki try ker rahi the jis ki waja sy meri sariiiiiiiiiiiiii baton ko jht mafrioza bybunyaad kaha diya gaya .

بی بی آپ اپنے لہجہ کو اعتدال میں رکھیئے .... اصل میں آپ نفس مسئلہ میں الجھن کا شکار ہیں سمجھ نہیں پارہی ہیں میں کچھ دیر بعد آپ کہ ان سوالات کا بھی جواب دیتا ہوں ۔ ۔

chaand_nager
5th April 2009, 16:18
بی بی آپ اپنے لہجہ کو اعتدال میں رکھیئے .... اصل میں آپ نفس مسئلہ میں الجھن کا شکار ہیں سمجھ نہیں پارہی ہیں میں کچھ دیر بعد آپ کہ ان سوالات کا بھی جواب دیتا ہوں ۔ ۔



main apne is word ki maafi chahti hon ap ki terhan tameez dar to hun nhe jo meri sari baton ko naqes kah day aur apni sari baton ko bilkol sahe khair bhai mery bolain ap boaht aschy ilam waly hain bakol ap k main ap k sawalat sy der ker bhag jaon dobra pegham main ayon g hen he to main ap sy iltimas kerti hon ap muj sy swal zaror pouchiye ek nhe 10000000 pochain ba kuda main ager us ka ilam rakhti hoi to zaror bata don g werna mazret ker lon g meri sari wuran k wakiyat ap ko ferzi lagy nafesani masiyel ka shikar lagy main kia kah sakti hun is main her insan ki apni apni souch

chaand_nager
5th April 2009, 17:14
آپ نے جو یہ بار بار فرمایا کہ حضور نبی کریم نے جھوٹا الام لگانے والوں کو معاف فرمادیا یہ محض الزام ہے کسی تاریخ یا حدیث یا تفسیر کی مستند کتاب سے ایسا ثابت نہیں اگر ہے تو برائے مہربانی اس کا نام بتائیے وگرنہ میں بار بار کہہ چکا کہ قرآن و سنت کو محض اپنے فہم سے سمجھنا چھوڑ دیجیئے کہ یہ سرا سر گمراہی ہے ۔ ۔ ۔۔جاری ہے ۔ ۔ ۔۔

jin logo ny hazret ayesha razi tala unhu per tufan uthya tha
un main muslim shamil thay aur un muslims main sy ek hazret MESTEEH thay jo ek muflis mahajir hony k ilawa
hazret abu baker sadiq razi tala un ha k bhanje ya khalazad bhai hoty hain hisa imak sy hazret abu baker sadiq in ki maded kia kerty thay
jeb yeh wakiya khatm howa aur hazret ayesha razi tala un ha ki berait asmaan sy nazil ho chuki to hazret abu baker sadiq ny qasum kahi k ainda
MESTEEH ki maded nhe keron ga shyed baz dosery sahaba ko b aysi soret hal pasih ayi hon is per
ayet nazil hoi
terjuma
"tum main sy jin ko ALLAH TALA NEY DAIN KI BOZURGI AUR DUNYA KI WOSAT ATA KI HAIN INAHIN LAIQ NHE K AYSI QASMAIN KAHIAN
UN KA ZARF BOAHT BLUND HONY CHAIYEAIN
BAHRI JAWAN MERDI YEH HAIN K BURAI KA BEDLA BHALAI SY DIYA JAYE.


g ab ap ferma dijye k yeh sara mera mafroza hain right
quran pak perh k usi ki tafseer likhi hainis main meri apni koi adding nhe mager main ny likhi hain is laiy ap jayse ilam rakhny walyy aur bakol muj jayse nafes k meslay ka shikar
yeh galt likh diya main ny yakeenan ap yeh he ferma dain k kiyon k ap tak meri sarii batain
sari likhi hoi ayaat mafrozay ka name day diya gay aur apny apni sari ayat aur sary wakiye kos ahe naam day diya

saraah
5th April 2009, 17:38
اصل میں آپ نفس مسئلہ میں الجھن کا شکار ہیں سمجھ نہیں پارہی ہیں میں کچھ دیر بعد آپ کہ ان سوالات کا بھی جواب دیتا ہوں ۔ ۔




is laiy ap jayse ilam rakhny walyy aur bakol muj jayse nafes k meslay ka shikar



...............................

aabi2cool
5th April 2009, 17:42
main apne is word ki maafi chahti hon ap ki terhan tameez dar to hun nhe jo meri sari baton ko naqes kah day aur apni sari baton ko bilkol sahe

اسلام علیکم ڈئر سسٹر مناسب سمجھتا ہوں کہ پہلے آپ کہ ان کمنٹس کا جواب دے دوں ۔ ۔ ۔۔ سب سے پہلی بات تو یہ ہے کہ میں نے آپکی ساری باتوں کو ناقص نہیں کہا بلکہ میں نے آپکی معلومات کو ناقص قرار دیا ہے جس پر آپکی تمام پچھلی رپلائیز گواہ ہیں اگر میں آپ کہ ایک ایک حرف کا جواب دینے بیٹھ جاؤں تو پھر بات بہت زیادہ طویل ہوجائے گی اس لیے میں نے آپکی بہت سی ایسی باتوں کو نظر انداز کیا ہے جو کہ یا تو خلط مبحث کا باعث تھیں یعنی ان کا سرے سے ٹاپک کہ ساتھ کوئی تعلق نہ تھا یا پھر وہ خاصی حد تک مضحکہ خیز تھیں
آپ نے پیچھے بہت سی تلخ باتیں کی ہیں کہ جن کو میں نے نظر انداز کیا ہے لیکن پھر بھی ان کہ اثر کی وجہ سے میرے لہجے میں تھوڑی تلخی آگئی ہے سو معذرت خواہ ہوں ۔ ۔۔



khair bhai mery bolain ap boaht aschy ilam waly hain bakol ap k main ap k sawalat sy der ker bhag jaon dobra pegham main ayon g hen he to main ap sy iltimas kerti hon ap muj sy swal zaror pouchiye ek nhe 10000000 pochain ba kuda main ager us ka ilam rakhti hoi to zaror bata don g werna mazret ker lon g

میں نے یہ ہرگز نہیں کہا کہ آپ سے مطلقا جو بھی سوال کیا جائے گا تو آپ اس کا جواب نہ دئے پائیں گی بلکہ میرے کہنے کا فقط یہ مطلب تھا کہ جس طرح قرآن و سنت کی نصوص کو آپ خود ہی بیان کرتی ہیں اور پھر اس کہ بعد ہم پر اپنی عقل سے سوالات وارد کرتی ہیں اگر ہم نے اس طرح کا ایک بھی سوال آپ سے کیا تو آپ سے یقینا جواب نہیں بن پڑے گا ۔ ۔ ۔ ویسے تو ہر علم والے کہ اوپر ایک علم والا ہوتا ہے ۔ ۔ رہ گئی میرے علم کی بات تو بارہا کہہ چکا ہوں کہ میں کوئی عالم دین نہیں فقط دین کا ایک ادنٰی سا طالب علم ہوں اور جو کچھ بھی لکھتا ہوں اس کہ پیچھے اپنی سی کوشش کرتا ہوں کہ تحقیق کرکے لکھوں مگر پھر بھی انسان ہوں میرا علم محدود بھی ہے اس لیے کمی بیشی رہ سکتی ہے لیکن کوشش کرتا ہوں کہ ناقص مطالعہ کی بنیاد پر کوئی شے بھی ضبط تحریر میں نہ لاؤں ۔ ۔ ۔ ۔ ۔



meri sari wuran k wakiyat ap ko ferzi lagy nafesani masiyel ka shikar lagy main kia kah sakti hun is main her insan ki apni apni souch


پہلی بات کہ میں نے آپکی کسی بھی بات کو فرضی نہیں کہا بلکہ قرآن و سنت کہ مقابلے میں آپکی زاتی تشریحات کو آپکی عقل اور قیاس کا شاخسانہ قرار دیا ہے آپ قرآن کی جو آیات اور احادیث بیان کرتی ہیں وہ اپنی جگہ برحق مگر ان قرآنی آیات و احادیث سے جو کچھ آپ اخذ کرتی ہیں اور پھر اخذ کرکے ان پر اپنی من مانی تاویلات جو کہ سراسر آپ کہ فھم پر مبنی ہوتی ہیں کو چڑھاتی ہیں وہ سراسر مفھوم قرآن کہ مخالف ہوتی ہیں اور وہ کس طرح ہوتی ہیں یہ بھی ہم ان شاء اللہ تفصیلی واضح کریں گے

aabi2cool
5th April 2009, 19:40
ayet num(33-34) soreh nisa
aur jin ki bedkhoi ka der ho tum ko to in kob samjhao aur juda kero sonay main
aur maro aur pher ager kaha manain tu met talash kero in per ilzam ki rah byshuk allah hain seb sy pehly
tafseer(jo quran pak main majod hain wo he lafz ba lefz likhi ja rahi hain )
ager koi ouret bedkhoi kery pehla derja:merd us ko zubani samjhaway ager na many tu dosera derja:
ky juda soye lakin isi gher main is per b na manain tu akheri derja yeh hain;k us ko maro per ayse na kery k jis ka neshan baki reh jaye
ya hadhi toot jaye
yeh tafseer ka ek derja hain aur isi k muafiq tadeeb aur tebhiye ki ijzat hain jis k 3 derjain hain
(akheri derja marna hain)
ager ouret bedkhoi aur nafermani sy baaz ajain aur mateeh ho jain to tum bhi bus kero aur un k qasooron ki
quraidon met her qasoor ki ek hadh hain aur merna akheri derja hain
(kia ek ouret 100 kore berdasth ker sakti han us k jisamnu aza main neshan nhe pre ga)
kia quran pak main likhi gai is tafseer sy hum inkari hain ?


اسلام علیکم اب کیا کروں میں کہ پھر آپ کو اعتراض ہوتا ہے آپ نے تو قرآن و سنت کو بازیچہ اطفال بنا دیا ہے اب بھلا سورہ نساء کی* آیت نمبر 33 کہ جس میں وراثت کہ مسائل بیان کیے گئے ہیں اور آیت نمبر 34 کہ جس میں عورت اور مرد کی خانگی و ازدواجی زندگی کہ بعض مسائل کو زیر بحث لایا گیا ہے اب بھلا ان دونوں آیات کا حد زنا کی آیت سے کیا تعلق ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟ جس طرح سے آپ قرآن پاک کی انٹر پٹیشن یا قرآن پاک سے مفھوم اخذ کررہی ہیں اس طرح تو سارا قرآن پاک پھر معاذاللہ تضادات کا کا مجموعہ بن جائے گا ہر دوسری*آیت پہلی سے ٹکرائے گی ۔۔ میری بہن قرآن پاک کی ہر آیت کا ایک مخصوص پس منظر ہوتا ہے کہ جس کہ تناظر میں وہ نازل ہوتی ہے اور وہ اس کا شان نزول کہلاتا ہے کسی بھی*آیت کو سمجھنے کہ لیے شان مزول بڑی اہمیت کا حامل ہوا کرتا ہے اور پھر اس کہ بعد قرآن پاک کو سمجھنے کہ بیسیوں اصول ہیں جن میں نظم قرآن ایک خاص اصول ہے کہ کسی بھی آیت کا اپنی ماقبل یا مابعددوسری آیت سے کیا ربط و تعلق ہے وغیرہ وغیرہ جس طرح سے آپ قرآن فھمی کا مظاہر کررہی ہیں اس طرح سے تو میں ساری زندگی لگا بھی لگا رہوں تو آپ کو سمجھا نہیں پاؤں گا ۔ ۔ ۔ ۔اس طرح تو پھر قرآن پاک میں ایک جگہ اللہ پاک فرماتے ہیں کہ میرا عذاب و انتقام بڑا شدید ہوتا ہے اور دوسری جگہ فرماتے ہیں کہ میرا فضل بڑا عظیم ہے تیسری جگہ فرماتے ہیں کہ میں عادل بھی ہوں اب کوئی بھی شخص اٹھ کر کھڑا ہوجائے کہ بھئی تمہارے قرآن میں تو بڑا تضاد ہے آخر تمہارا اللہ شدید منتقم ہے یا عظیم فضل کرنے والا (معاذاللہ) ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟ اسی طرح تو بیسیوں آیات میں ہر آدمی تضاد ثابت کردے گا ۔ ۔ ۔ ۔ ۔
میری بہن مسئلہ کو سمجھیں قران کی ہر آیت کو اس کونٹیکسٹ میں سمجھیں نہ کہ ادھر کی*آیت کو ادھر کی آیت کہ ساتھ ملا کر ۔ ۔ ۔ ۔ایک بار پھر یاد کراتا چلوں کہ ہمارا اور اپ کا اختلاف کیا تھا ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟ ہمارا اور آپکا اختلاف یہ تھا کہ اگر کوئی مسلمان حد زنا کا مرتکب ہوجائے اور معاملہ آج کی اسلامی عدالت میں پیش ہوجائے چاہے وہ ملزم خود اعتراف کرکے پیش ہو یا چاہے کوئی کسی ملزم پر دعوٰی کرکہ اسے شرعی قانون کہ مطابق چار مردوں کی گواہی کہ ساتھ مجرم ثابت کردے تو ایسی صورت میں اللہ کا قانون نافذ کیا جائے گا جسے عرف میں حد زنا کہا جاتا ہے دنیا کی کوئی بھی عدالت اس مجرم کو معاف نہیں کرسکتی یہ تھا ہمارا دعوٰی جس پر ہم نے بے شمار دلائل پیش کیئے قرآن و حدیث اور اجماّ امت سے بھی ۔ ۔۔ جب کہ آپ کا کہنا ہے کہ اگر کوئی زنا کا مجرم ثابت ہوجائے اور مقدمہ اسلامی عدالت میں چلا جائے اور تمام شرعی ضابطے پورے کرلیے جائیں تو اب آپ کہ نزدیک قاضی کو یہ چاہیے کہ وہ حد زنا نہ جاری کرئے بلکہ تنبیہ کرکے چھوڑ دے اور ایسا وہ آپ کہ نزدیک بار بار کرے کم زکم تین بار لاحوال ولا قوۃ اور دلیل اپکی یہ ہے کہ اللہ پاک بڑا رحیم و کریم ہے اور وہ احسان کرنے والوں کو پسند کرتا ہے وغیرہ وغیرہ اصل میں اس مسئلہ کو قرآن و سنت سے سمجھنے کی بجائے آپ شروع سے ہی اس مسئلہ میں جزباتیت کا شکار ہیں اور وجہ آپکی جزباتیت کی وہی ویڈیو میں اس خاتوں کہ ساتھ ہونے والے معاملے کو اپنی آنکھوں سے دیکھنا اور کانوں* سے سننا ہے اس کہ بعد سے اپ پر مسلسل جزباتیت طاری ہے اور قرآن و سنت کو بجائے قران و سنت کہ تناظر میں سمجھنے کہ* آپ ادھر کی*آیات کو ادھر اور ادھر کی احادیث کو ادھر بیان کیئے چلے جارہی ہیں ۔ ۔ ۔ یہاں پر میں ایک بار پھر سے وضاحت کرتا چلون کہ حد کسے کہتے ہیں کیونکہ میں دیکھ رہا ہوں کہ اپ ابھی تک یہی ہی نہیں سمجھ پائی ہیں کہ حد سے کیا مراد ہے اسی لیے آپ نے سورہ نساء کی آیت نمبر چونتیس کا ایک حصہ نقل کردیا ہے دیکھیئے ویسے تو حدود اللہ ہر وہ منکرات ہیں کہ جس سے اللہ پاک نے منع کیا مگر شریعت کی مخصوص اصطلاح میں حد سے مراد وہ گناہ کبیرہ ہیں کہ جن پر اللہ پاک نے خود سزا تجویز فرمائی ہے چاہے قرآن کی روشنی میں یا سنت کی روشنی میں یعنی
جرائم کی وہ سزا جو قرآن وسنت اور اجماع نے متعین کردی ہو وہ اصطلاح میں حدود اللہ کہلاتی ہیں اور شریعت اسلامی میں اس مخصوص اصطلاح کہ مطابق حدود کی تعداد صرف چھ ہے: ۱:․․․ ڈاکہ ۲:․․․چوری ۳:․․․زنا ۴:․․․تہمتِ زنا ۵:․․․ شراب خوری اور مرتد کی سزا ۔۔ ۔ اس کہ علاوہ باقی سب تعزیرات ہیں یا بعض قصاص میں آتی ہیں آپ نے جو سورہ نساء کی چونتیسویں آیت پیش کی ہے اس میں کسی حد کا بیان نہیں ہوا بلکہ عام گھریلو زندگی میں میان بیوی کہ درمیان پیش انے والے معاملات کو مد نظر رکھتے ہیں خاوندوں کو بیویوں کو تادیب کرنے کا قانون سکھایا گیا ہے کہ بیوی اگر سرکش ہو تو اس کہ ساتھ کیا معاملہ کرئے وغیرہ اور سرکشی سے ہرگز مراد حد زنا نہیں ہے ۔ ۔ ۔ ۔لہزا آپکا اس آیت کو حد زنا والی آیت کہ مقابل و معارض پیش کرنا محض عبث اور قلت فھم کا نتیجہ ہے ۔ ۔ ۔ ۔ ۔






kia main jo 3 din sy baat kah rahi hon wo galt hin k gonah gar ko saza teb do jeb wo baaz na aye teb us ko ebret ka neshan bana do ta ky serkesh aur bedgho log baaz ajain mager gonah kerny wala ager pane gonah per sherminda hain tuba kerta hain teb kis is tafseer sy pata nhe chalta k us k bad us per koi ilzam dhoondna gonah hain koi aur ilzam ki rah talash kerna gonah kam sy kam 3 na sahe ek he muka day don


افسوس کہ مجھے*آپکو بالکل بچوں کی طرح سمجھانا پڑ رہا ہے ۔ ۔ ۔ اب میں تھوڑا سا جارحانہ انداز اختیار کرکے آپ سے آپ کہ ہی طریقہ کار مطابق پوچھتا ہوں ۔ ۔ ۔ چلیئے بتائیے اپ جو تین دن سے یہ فرمارہی ہیں کہ گناہ گار کو سزا اس وقت دو جب وہ باز نہ آئے تو کیا میں یہ پوچھ سکتا ہوں اسکی دلیل کیا ہے ؟؟؟؟؟؟؟؟؟

اگر ایسا ہی تھا تو پھر اللہ پاک نے قرآن میں زنا کی حد کیوں بیان فرمائی کیا اللہ پاک سیدھے سیدھے یہ حکم نہیں نازل فرماسکتے تھے کہ تم زنا کہ مجرموں کو تین بار تنبیہ کرکہ چھوڑ دو اور اگر وہ پھر بھی باز نہ ائیں تو تب ان پر حد زنا لگاؤ آخر اللہ پاک کو باجود کہ وہ رحیم و کریم ہے اور اس کا فضل بھی عظیم اور وہ احسان رکھنے والوں کو دوست بھی رکھتا ہے پھر کس چیز نے (معاذ اللہ) اللہ پاک کو روکا کہ اس نے یہ حکم نہیں نازل کیا ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟ پھر اس نے کیوں* زانی مرد اور زانیہ عورت دونون کو ہی سو سو کوڑے لگانے کی حد مقرر کی کیا اللہ پاک کو(معاذاللہ) نہیں معلوم تھا کہ میری مخلوق میں سے عورت کو میں نے صنف نازک کہ طور پر پیدا کیا ہے وہ سو کوڑے کھانے کی متحمل نہیں ہوسکتی پھر میں اس پر(معاذاللہ ) یہ ظالمانہ حد نہ مقرر کروں ۔ ۔ حالانکہ خود میرا ہی بیان ہے قرآن میں کہ میں کسی بھی جان پر اس کی طاقت سے بڑھ کر بوجھ نہیں ڈالتا وغیرہ وغیرہ ۔ ۔ ۔ آپ پھر وہی فرمائیں گی اللہ بڑا رحیم اور احسان کرنے والوں کو دوست رکھتا ہے اور نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے ایک بوڑھے پر حد میں نرمی اور ایک عورت کی حد کو مؤخر کیا وغیرہ وغیرہ اور انکہ جوابات میں عرض کرچکا کہ اگر غور کیا جائے دونوں جگہوں پر حد پھر لگائی ہی گئی ہے اگرچہ بعض مصلحتوں کی وجہ سے ایک جگہ حد میں نرمی اور دوسری جگہ حد میں تاخیر کی حکمت سے کام لیا گیا ہے مگر تاہم حد پھر بھی لگی ہے ۔ ۔ ۔ چلیں میں خود ہی آپ کو جواب دیتا ہوں دیکھیں اور سمجھیں ایک ہوتا ہے کسی بھی مسلمان کا کوئی بھی گناہ کرنا اور اسکو گناہ کو کرنے کہ بعد اپنے اور اپنے اللہ کہ درمیان رکھنا تو جن*آیات میں یہ آیا کہ تم اللہ کی رحمت سے مایوس نہ ہوجاؤ اور سچے دل سے توبہ کرلو تو تم اللہ کو بڑا مہربان اور رحیم پاؤ گے وہ اسی قسم کی سچویشن کہ لیے آیا کہ جب تک معاملہ بندہ اور اللہ کہ درمیان تھا . . .باالفرض کوئی دو مسلمان باہم ایک دوسرے کی رضا مندی سے دنیا والوں سے چھپ کر زنا کہ مرتکب ہوتے ہیں تو اب جب تک کوئی ان کودیکھ نہ لے اور دیکھنے کہ بعد وہ اس منظر پر چار عینی شاہدین نہ پیدا کرلے تب تک وہ یہ معاملہ کورٹ میں نہیں لے جاسکتا اور اگر لے جائے تو پھر اس کو چار عینی شاہدین کا بندو بست کرنا پڑے گا وگرنہ ان زنا کی مرتکبین پرشرعی حد نہیں لگ سکتی اور اگر دیکھنے والا واحد شخص کہ جس نے اپنی آنکھوں سے زنا ہوتے ہوئے دیکھا ہو اگر وہ انکی رپورٹ شرعی عدالت میں کرتا ہے مگر چار گواہ نہیں پیش کرسکتا تو اب باوجود کہ ا س نے یہ سارا کچھ اپنی آنکھوں سے دیکھا ہے اس پر حد قذف لگے گی کہ کسی پر بھی زنا کا الزام لگانا بڑا ہی نازک معاملہ ہوتا ہے ۔ ۔ ۔ ۔اور بالکل اس کہ برعکس خدانحواستہ اگر کوئی مجرم ہمارے کسی عزیز کہ ساتھ اس قسم کا گھناونا فعل زبردستی کرتا ہے تو ہم اسے ایسے ہی چھوڑ دیں گے ؟؟؟؟؟؟؟؟ تاکہ وہ شرمندہ ہوکر توبہ کرے اور ہمارے اس عزیز کا کیا کہ جس کی معاشرے میں عزت خاک میں مل گئی اور زندگی تباہ ہوگئی ۔ ۔ ۔ اس لیے آپ سے گزارش ہے کہ اسلامی سزاؤں کو ان کہ صحیح پس منظر میں سمجھنے کی کوشش کریں کہ جہاں ایک طرف ان میں بڑی سختی ہے وہاں دوسری طرف ان کہ باعث معاشرے میں امن و سکون کی ضمانت ہے جہاں قصاص کو قتل کا بدلہ ٹھرایا گیا ہے وہیں اس قصاص کو زندگی سے بھی تعبیر کیا گیا ہے کہ لوگ قتل کا بدلہ قتل سمجھ کر دوسروں کی اور اپنی جانوں کو محفوظ کرلیں گے ۔ ۔ ۔ ۔ امید کرتا ہون اب بات سمجھ میں آ گئی ہو گی اگر اب بھی نہ سمجھ آئے تو بندہ مزید وضاحت کہ لیے ہمہ وقت حاضر ہے ۔۔ والسلام

chaand_nager
6th April 2009, 09:20
ap meri baat na tu samjh saktain hain aur na he ab main mazeed samjhaon g thats it lakin ek baat main ap ko arz ker don k mera yeh ,metlub her giz nhe hain k un logo ko chor diya jaye jo jan boh ker ya zana k adi ho bygerti aur byhaayi phalyany waly hon un logo ko qati tor per chorna munaseb nhe hain main asye logo ki baat ker rahi hon jo k na smjhi main ya bahkway main aker gonah ho jata hain aur us ki tuba b kerta hain ayse insan ko paker k adelt main ly jana ? main un logo ki baat n nhe ker rahi jo k samjhny aur smjhany ki sari hadon sy baher hon misal k tor per ager kisi ouret ki beti sy gonah hota hain wo pana gonah apni maa k samny qabol kerti hain aur tuba kerti hain ALLAH SY maafi mangti hain to pher kia us ouret ko chaye k lay jaye pher b us ko adalet main aur soo kore lagwa daina ur mazeed zilet aur reswai uthani pare bhai main ap ki her baat baat ihtaram kerti hon kisi baat ko galt nhe kahti ap ki terhan main b ek student hon aur apni ilam sy zayd amain ny ab tak jitne batain likhi wo kuda gawah hain k apne pass sy ek lafz tak nhe likha siway un baton k jin per main ny kud swal uthaye hain .

*Samra*
6th April 2009, 09:23
Dekhiye ye movie jo media per chalaii ja rahi hai ....... ek Fake movie hai

Islam ko badnaam karne k liye ye sub prooganda hai....

Can u imagine after 40 flicks the girl is easily walking...

How can it possible???

Aap sub apni aqal key parday kholye please...

agree ..aur pihr yeh jumla kehna kai..mai ainda nahi keroongi etc

chaand_nager
6th April 2009, 09:33
نصوص کو آپ خود ہی بیان کرتی ہیں اور پھر اس کہ بعد ہم پر اپنی عقل سے سوالات وارد کرتی ہیں اگر ہم نے اس طرح کا ایک بھی سوال آپ سے کیا تو آپ سے یقینا جواب نہیں بن پڑے گا ۔ ۔ ۔ ویسے تو ہر علم والے کہ اوپر ایک علم والا ہوتا ہے ۔ ۔ رہ گئی میرے علم کی بات تو بارہا کہہ چکا ہوں کہ میں کوئی عالم دین نہیں فقط دین کا ایک


jis baat ka ilam ho ga muje main zaror bata don g aur jahan tak baat ap ki hain k 3 bar tebhiye kerna to yeh baat na sirf soreh nisa main hain belkay nabi pak PBUM k khutba juma-tul-wida k muke per b yeh irshad fermya ahin byshuk ap study ker skaty hain yaha per main sirf liya ziker rahi k un adi mujramo ko bushuk maaf na kia jaye mager jis nalaik sy yeh galeti serzed ho ajye to us ek muka dayna nhe chaye kia chalo us ko mar lo jitna marna hain parents mar lain kore b mar lain mager zarrori to nhe k us ka gonah sare aam lay ajaye ta ky ager wo sudherna chaye b to lgo ki tano sy na sudher saky? jeb nabi pak PBUM ny shadi k baat jo ouretain bedkhoi kertain hainm un per b to sangari ka hukam foren he to nafez nhe ker diya yeh he fermya k samjho aleg ho jao pher maro marna islam ki hadon main seb sy akheri hadh hain yeh baat main apne pass sy nhe kah rahi mery pass 3 books hain jin main yeh he define kia gaya hain ab ap yeh kah dain k wo books sare sy he galt hain to jtne b ahel ilam log haion t.v py ya aur kahin wo seb unho ny jo baat define ki hain wo b sare galt hain chalo yhe b maan lia mager kahir choarin not again ap apni baat py sahe hain bilkol mera apna nazeriya hai main y yeh bilkol nhe kaha k jo log doseron ki izet kharab ker daytai hain un ko chor diya jaye meri sari aat un logo k liya hain jo k bahk ker yeh gonah ker laytain aur boaht maafi mangty hain to un ko kam sy kam marna hain danta hain zaror kero mager dunya tak yhe bat na jaye han ager wo serkashi kerain na baaz ayain teb un ko zaror saza di jaye .ab bahter ho ga is mozo per aur baat a ki jaye is liya k pher hum dono he gonah gar hon k ap b boltain jain gay main b bolti jaon g baat per zaat per ajye g lehaza iltamas hain baat khtam ki jaye nhe to main kia kah sakti hin

chaand_nager
6th April 2009, 09:50
aur jo sawalat main nay ap sy arz kiye jo bakol ap k mery aqeli aur qayasi ghorey thay jin per muje khifet mahsos ho g to bhai mery yeh arz keron k ap ny jitne b batain likhi un main soreh noor soreh nisa soreh yusaf sy lay ker likhi jaysa k ap ki posts main likha gaya to jeb main ny likhi hain jis per pan ny tenqeed k yeh ayaat ap ny soreh nisa sy li jis ka koi taluk nhe hain to jeb likh saktain refernce k toor per to ager mian likhon to wo bybunyaad halan k quran pak ka ek ek hisa ek doery sy jora howa hain koi aleg aleg nhe hain . aur main nay to just yeh poucha tha k ap ki sari sherieyt saza dayne per he shoro hoti hain ap islam ki is sheriet per amel keb kerain gay bewah sy nekah ka swab boaht hain yateem k ser per hath pahyrna ajer azeem hain yeh b to sherieyt hain humri to is per amel kerain gay ap?ya pher srif ap ki sherieyt saza tak mahdod hain

chaand_nager
6th April 2009, 10:00
main ny koi topic sy hat k baat nhe ki sherieyt ki baat ho rahi aur saza ki had tak to mahdod nehe hain na sari chezain ati hain am i right? jo ap ko mazaiqakheez lag rahin mger main ny to koi asyi baat nhe ki?

chaand_nager
6th April 2009, 10:32
I don't understand why these typical mullahs are so obsessed about sex... their Islam revolves only around women... hijaab, parda, mehram, namehram, zana... are major part of their "preaching"... it gives enough evidence what is usually going on in their minds...

other important prechings of islam where Islam is more vocal such as "huqooq ul ibaad", corruptions, illeteracy, tohmaat (putting false allegation), gheebat (saying bad behind someone's back), lie, hypocracy are not being preached by these illetrate mullahs so often... they only think about women and make them their centre of discussions...

chaand_nager
6th April 2009, 10:40
-------------------------------------------------------------------------------- kia humri sherieyt srif ouret ko saza dayna janti hain yeh hukumet aur islam sheriyet k dawe daron ko yeh zulm nhe nazer atah sirf gonah he nazer atain hain ayse mujrimu ko to hum chor daytain hain kiyon nhe in ko paker k sare aam kore lagaye jaty kore srif ek ouret ko goanh kerny py he lagty hain ye jo darindain azaad hain in ko korain kiyon nhe lage jaty ? ek ouret ager gonah kerti us py tuba kerti hain teb b usy kore marain jain aur yeh jo gonah kertain aur pher in ko azaad ker diya jaye in ko saza kiyon nhe

chaand_nager
6th April 2009, 11:06
adi murim jo doeron ki zindagiyan teb berbad ker daytain hain un ko saza keb milain g? sheriyet k name per ek ouret ko to foren saza day di jati hain mager in ka gayraban kon pakery ga taliban aur humry wo hazraat jo ouret ki saza k haq main to froen lambi lambi hadisain ferma daytian hain mager in darindo ko pakerny k liya saza k liya kuch nhe kia jata

aabi2cool
6th April 2009, 12:32
.
ab bahter ho ga is mozo per aur baat a ki jaye is liya k pher hum dono he gonah gar hon k ap b boltain jain gay main b bolti jaon g baat per zaat per ajye g lehaza iltamas hain baat khtam ki jaye nhe to main kia kah sakti hin


ایک طرف تو آپ یہ کہہ رہی ہیں کہ بات ؛ختم کردی جائے تو دوسری طرف آپ نے جو اپنی رپلائیز نمبر 102تا106 میں جو بے سروپا سوالات کیئے ہیں وہ کس سے کیئے ہیں ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟ (بےسروپا اس لیے کہ ان کا موضوع سے کوئی تعلق نہیں ) جب* آپ بات ختم کرنا چاہتی ہیں تو پھر وہ سوالات کیوں اور کس سے ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟

chaand_nager
6th April 2009, 13:30
.



ایک طرف تو آپ یہ کہہ رہی ہیں کہ بات ؛ختم کردی جائے تو دوسری طرف آپ نے جو اپنی رپلائیز نمبر 102تا106 میں جو بے سروپا سوالات کیئے ہیں وہ کس سے کیئے ہیں ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟ (بےسروپا اس لیے کہ ان کا موضوع سے کوئی تعلق نہیں ) جب* آپ بات ختم کرنا چاہتی ہیں تو پھر وہ سوالات کیوں اور کس سے ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟

main ny sawal to nhe kiye bus wayse he kha tha khair leave it

aabi2cool
6th April 2009, 13:47
main ny sawal to nhe kiye bus wayse he kha tha khair leave it
:salam:

chaand_nager
6th April 2009, 16:33
ur welcom

saraah
7th April 2009, 06:22
.............


http://www.jang.com.pk/jang/apr2009-daily/05-04-2009/editorial/col3.gif
http://www.jang.com.pk/jang/apr2009-daily/05-04-2009/editorial/col3a.gif


http://www.jang.com.pk/jang/apr2009-daily/06-04-2009/editorial/col1.gif
http://www.jang.com.pk/jang/apr2009-daily/06-04-2009/editorial/col1a.gif

chaand_nager
7th April 2009, 08:05
.............


http://www.pegham.com/
http://www.pegham.com/


http://www.pegham.com/
http://www.pegham.com/


ya thats right . aur jahan tak ved ka taluk hain to koi b insan ek dafa usy dakh bina souchy samjhy hil zaror jata hain na k foren he yeh kah day k yeh ho he nhe sakta baki hum us door main phans chujy hain k jeb tak humain zulim chaye jhot per manbi kiyon na ho dekhya na jaye humre ankhain aur kaan bandh rehtain hain awazain humri neklati he nhe dr. afiya k liya koi ek b aam soceity ka banda bola nhe awaz nhe uthai wo kahan hain kis haal main hain 2 din pehly jhan soleki ko reha ker diya gaya yeh keh ker k balochistan main dehshat gerd nhe rahty lakin jo seb sy bahry dehshat ger kud america hain us sy pher b koi fark nhe pare ga 17 hazar foji us ny afghanistan byaj diye koi nhe bola siway talk shows k anchers pher hum chup hain . kiyon k humain na kuch nazer raha hain na dekh rahin hain hum andhay aur bolay ho chuke hain

aabi2cool
7th April 2009, 16:31
ڈئر سسٹر عرفان صدیقی کہ اس کالم کہ شئر کرنے کہ لیے شکریہ ڈئر سسٹر عرفان صدیقی نے بھی بالکل انھی خطوط کی نشاندہی کی ہے کہ جن کی طرف ہم اپنی چار اپریل کی اسی پوسٹ کی رپلائی نمبر 44 میں اشارہ کرچکے ہیں ۔ ۔

saraah
7th April 2009, 16:32
ڈئر سسٹر عرفان صدیقی کہ اس کالم کہ شئر کرنے کہ لیے شکریہعرفان صدیقی نے بھی بالکل انھی خطوط کی نشاندہی کی ہے کہ جن کی طرف ہم اپنی چار اپریل کی اسی پوسٹ کی رپلائی نمبر 44 میں اشارہ کرچکے ہیں ۔ ۔




beshak :eye:

Silent Tears Sajid
7th April 2009, 16:33
pegham ky seb dosto ko zoniesh ka salam

main ny aj abi abi ek holaknak dardnak menzer dekha hain aur muje samjh nhe arhi k main kia keron kasyse berdast keron dil ker raha hain k apne jism k he tokery ker don sawat main 17 year ki lerki ko sare aam korey mary ja rahin hain us ki cheekhain mery dimag ki neson ki phar dain g us ki maa jis ko zinda aag laga dyni chaye jo apni beti ka yehon sare aam leta k korey marwa rahi hain mamta kahan gai hain ya insan he nhe wo jo apni beti ki cheekahin b sun nhe pa rahi aur jeb wo massom lerki ihtajaj kerny k liya hath rakhti hain to us ki maa us k hath paker leti hain ek merd ny us ko tangon sy paker rakh ta ky wo ihtajaj b na ker saky kahan gaya ya rub to kahan gaya mery pore wajod main senata chah gaya hain aur loog bygret ben k sara tamasha dakh rahain
main pochna chati hon k ek judge ko bahal kerwany k liya sare log road py nekal aye mager kia koi ahin aysa is zulm k khilaaf awaz uthaye baher neklay .:ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak::ak:: ak::ak:

Jee Bilkul Ye Video Dekhi Hai Bohot Hi Darinda Khaiz Video Hai

Bohot Dukh Huya Ab Haqeeqat To Yaa Wohi Laug Jaante Hain Jinhaun Ne

Aisa Kiya Yaa ALLAH Jaanta Hai

Well Karwaayi To Honi Chahiye

Baaki Bus Dua Hi Kar Sakte Hain Ke Future Main Kisi Maasoom Ke Saath

Aisi Zyaadti Na Ho

:(

saraah
7th April 2009, 16:35
Jee Bilkul Ye Video Dekhi Hai Bohot Hi Darinda Khaiz Video Hai

Bohot Dukh Huya Ab Haqeeqat To Yaa Wohi Laug Jaante Hain Jinhaun Ne

Aisa Kiya Yaa ALLAH Jaanta Hai

Well Karwaayi To Honi Chahiye

Baaki Bus Dua Hi Kar Sakte Hain Ke Future Main Kisi Maasoom Ke Saath

Aisi Zyaadti Na Ho

:(


372-haha372-haha372-haha372-haha372-haha372-haha372-haha

Silent Tears Sajid
7th April 2009, 18:05
372-haha372-haha372-haha372-haha372-haha372-haha372-haha

Serios Baaton Par Hansi Aaa Rahi Hai :cn:

saraah
7th April 2009, 20:10
Serios Baaton Par Hansi Aaa Rahi Hai :cn:
372-haha372-haha372-haha

ghor karain tou baat hansnay wali hi thi

Silent Tears Sajid
7th April 2009, 20:17
372-haha372-haha372-haha

ghor karain tou baat hansnay wali hi thi


Aap Gaur Karein To Baat Serios Hi Thi :cn:

saraah
7th April 2009, 20:17
Aap Gaur Karein To Baat Serios Hi Thi :cn:
:cn::cn::cn:
chotay bhai baat serious nae thi372-haha

Silent Tears Sajid
7th April 2009, 20:22
:cn::cn::cn:
chotay bhai baat serious nae thi372-haha

Daadi Amma To Us Main Joke Kahan Tha ? 372-haha372-haha372-haha

saraah
7th April 2009, 20:24
Daadi Amma To Us Main Joke Kahan Tha ? 372-haha372-haha372-haha


chacha ji bohata free nae hona :cn:

Silent Tears Sajid
7th April 2009, 20:31
chacha ji bohata free nae hona :cn:

Amma Jee Kaun Free Hota Hai 372-haha

saraah
7th April 2009, 20:36
Amma Jee Kaun Free Hota Hai 372-haha
:rolleyes:

Silent Tears Sajid
7th April 2009, 20:38
:rolleyes:

Amma Jee Ka Moo To Dekho 372-haha

saraah
7th April 2009, 20:40
Amma Jee Ka Moo To Dekho 372-haha
nae ab dekho beta :pg:

Silent Tears Sajid
7th April 2009, 20:42
nae ab dekho beta :pg:

Amma Jee Is Umar Main Moo Chara Rahi Hain 372-haha372-haha

chaand_nager
8th April 2009, 08:39
ary yeh kia ho raha hain dekho mu nahe charahty aur her baat aur wakiye py reday amel ka tareeka ek dosery sy different hota hain yeh zarori to nhe k ager ek baat py mutafiq haian to dosera b ho seb ki apni apni raye hoti hain wo deo chaye jhoti the ya suchi the mager ek pal ko koiiiiiiii b dekahy ga to zaror us ko dhachka lagy ga na ky wo foren he us ko jhotla dy ga insan hain koi farisha nhe hain aur muj sy aur abi bhai sy sabeq seekh lo kitna bolay hum mager mu nhe charhaya kabi ek dosery ko:khi::khi:

saraah
8th April 2009, 14:38
ary yeh kia ho raha hain dekho mu nahe charahty aur her baat aur wakiye py reday amel ka tareeka ek dosery sy different hota hain yeh zarori to nhe k ager ek baat py mutafiq haian to dosera b ho seb ki apni apni raye hoti hain wo deo chaye jhoti the ya suchi the mager ek pal ko koiiiiiiii b dekahy ga to zaror us ko dhachka lagy ga na ky wo foren he us ko jhotla dy ga insan hain koi farisha nhe hain aur muj sy aur abi bhai sy sabeq seekh lo kitna bolay hum mager mu nhe charhaya kabi ek dosery ko:khi::khi:


lou zoni me tou aabi bhai ko kisi b waqt moo charrha sakti hoon..:ANYWORD4.unnki ladli behan jo hoon :swing:

*Samra*
8th April 2009, 15:05
Amma Jee Ka Moo To Dekho 372-haha


nae ab dekho beta :pg:


Amma Jee Is Umar Main Moo Chara Rahi Hain 372-haha372-haha


:khi:

Mr. Sialkoty
9th April 2009, 12:21
ji ye TV par dikhaya ja raha he or jahan tak saza ka taluk he to ye saza Quran me Surah Noor me he k bad kaar mard or orat ko 100 korey mare jaen or sath me ye bhi he k ghalat ilzam lagane wale ko bhi 80 korey mare jaen...to saza to bilkul mojood he....ab jurm sabit theek hua ya ghalat sabit hua ye pata karna hukaam ka kaam he lekin ap saza ko maghrib ki tarah zalimaana nahi keh sakte....Allah ka hukam to ye bhi he ese mujrim par tars bhi na kia jaey...baki aj kal Islam ko badnaam karne ki mohim khasi kamyaab chal rahi he......is leay sab kuch mad-e-nazar rakhna chaey.
baki usalmanon ko Quran ka tarujma zarur zarur parhna chaey ta k gumrahi se bacha ja sake or Allah ka pegham clear ho kar hmare samene aey:)


larki nay jo bhi ghalati ki hoo saza milni chaien jo bhi saboot houn us kay hissab say ....lekan Talaban koon hotay hain saza deenay walay ?
or sarr-i-aam kisi khatoon ko saza deena koon say islam main hai ? or yeh jo video hai is main tareeka deekhoo in Talbaan ka ...


Yahan mein Aanchal ki baat se itfaaq karon ga. Hamaray muslmanon ne islam ko bohat ghalat interpret ker ke bohat si kharaabiyan paida ker li hein. Saza dena hakam ka kaam he, lekin yahan per state within state ka concerpt ban raha he.

Doosri baat yeh, jesa ke Aanchal ne kaha ke sar-e-aam aurat ko itnay gair merdon ke dermeyaan lataa ker us ki tazleel ki gai he. Senorita, Islam ne aurat ko wakaar dia he na ke is tarah ki tazleel. Islam ko ghalat interpret to tum khud ker rahi ho.

Aur saza dene ke liye bhi puray circumstances ko dekha jata he. Sub se pehlay yeh dekha jaye ke aaya yeh larki balag he ke nahi, kia is ki shadi ka masla to nahi chal raha, kia us ke ghar walay us ki merzi ke khilaaf kisi se shadi to nahi kerwa rhaay thay, kia is larki per ghar walon ki taraf se zulm to nahi hua tha. Ager her lehaz se larki ko sahooliyaat milein aur ideal mahool provide kia gaya aur us ke baad bhi ager larki ne bad'kaari ki to phir Taliban saza dene ke majaaz nahi, bulke yeh adalat ka kaam he.

Mein Laana't baijta hoon aisay talibaan per jo Islam ki dhajiyaan bakhaair rahay hein. Is waqee ke baad mein is hud tak berham ho gaya hoon, ke mera dil ub chah raha he ke America ko chahiye ke talibaan ko chun chun ker aik aik ko kill ker dein, because they simply don't deserve to live alive. They are animals, bullshit.

aabi2cool
9th April 2009, 12:31
Yahan mein Aanchal ki baat se itfaaq karon ga. Hamaray muslmanon ne islam ko bohat ghalat interpret ker ke bohat si kharaabiyan paida ker li hein. Saza dena hakam ka kaam he, lekin yahan per state within state ka concerpt ban raha he.

Doosri baat yeh, jesa ke Aanchal ne kaha ke sar-e-aam aurat ko itnay gair merdon ke dermeyaan lataa ker us ki tazleel ki gai he. Senorita, Islam ne aurat ko wakaar dia he na ke is tarah ki tazleel. Islam ko ghalat interpret to tum khud ker rahi ho.

Aur saza dene ke liye bhi puray circumstances ko dekha jata he. Sub se pehlay yeh dekha jaye ke aaya yeh larki balag he ke nahi, kia is ki shadi ka masla to nahi chal raha, kia us ke ghar walay us ki merzi ke khilaaf kisi se shadi to nahi kerwa rhaay thay, kia is larki per ghar walon ki taraf se zulm to nahi hua tha. Ager her lehaz se larki ko sahooliyaat milein aur ideal mahool provide kia gaya aur us ke baad bhi ager larki ne bad'kaari ki to phir Taliban saza dene ke majaaz nahi, bulke yeh adalat ka kaam he.

Mein Laana't baijta hoon aisay talibaan per jo Islam ki dhajiyaan bakhaair rahay hein. Is waqee ke baad mein is hud tak berham ho gaya hoon, ke mera dil ub chah raha he ke America ko chahiye ke talibaan ko chun chun ker aik aik ko kill ker dein, because they simply don't deserve to live alive. They are animals, bullshit.

حوصلہ بچے حوصلہ بھلا امریکہ طالبان کو کیوں مارنے لگا کہ طالبان مر کھپ گئے تو امریکہ کو کوئی نیا کریکٹر ایجاد کرنے کی خواہ مخواہ میں زحمت اٹھانا پڑے گی ۔ ۔ ۔باقی ویڈیو والے معاملے آپ اتنا برہم مت ہوں وہ ویڈیو اتنی ہی مشکوک ہے کہ جتنا اس کی تشہیر کرانے والی نام نہاد این جی اووز کا زاتی کردار ۔ ۔ ۔ ۔ 372-haha

Mr. Sialkoty
9th April 2009, 12:36
حوصلہ بچے حوصلہ بھلا امریکہ طالبان کو کیوں مارنے لگا کہ طالبان مر کھپ گئے تو امریکہ کو کوئی نیا کریکٹر ایجاد کرنے کی خواہ مخواہ میں زحمت اٹھانا پڑے گی ۔ ۔ ۔باقی ویڈیو والے معاملے آپ اتنا برہم مت ہوں وہ ویڈیو اتنی ہی مشکوک ہے کہ جتنا اس کی تشہیر کرانے والی نام نہاد این جی اووز کا زاتی کردار ۔ ۔ ۔ ۔ 372-haha



Saman Minallah ka ka kirdaar mashkook ho sakta he, lekin yaar apnay dil se pooch ke kia wo video mashkook he :rolleyes:

aur waise bhi yeh mein ne koi first video nahi dekhi he, taliban ki bohat si videos dekh chuka hoon. yeh dekh

http://www.youtube.com/watch?v=24LNQfIxbXI

http://www.youtube.com/watch?v=evKxW996xzQ&feature=related

http://www.youtube.com/watch?v=jbPhTnQcNu0&feature=related

http://www.youtube.com/watch?v=Yw79QzBl5yw&feature=related

aabi2cool
9th April 2009, 12:42
saman minallah ka ka kirdaar mashkook ho sakta he, lekin yaar apnay dil se pooch ke kia wo video mashkook he :rolleyes:

Aur waise bhi yeh mein ne koi first video nahi dekhi he, taliban ki bohat si videos dekh chuka hoon. Yeh dekh



طالبان کہ میں بھی خلاف ہوں لیکن مسئلہ یہ ہے کہ تجھے فقط طالبان نظر آرہے ہیں جبکہ مجھے ان نام نہاد طالبان کہ پیچھے جو فورسسز کارفرما ہیں ناں وہ بھی دکھ رہی ہیں یہ جو این جی اوز ہوتی ہیں ناں کہ جن کو آئے دن خواتین کہ حقوق کا مروڑ اٹھتا رہتا ہے انکا یہ مروڑ مخصوص وقت اور مخصوص قسم کی خواتین پر ہی اٹھتا ہے کہ یہ فائنانس کہیں اور سے ہوتی اب آج ہی کی خبر ہے کہ سوفی محمد نے سوات میں امن کیمپ ختم کردیا ہے اور جو امن ہوا تھا جو وہان کی عوام کو تھوڑا سکون ملا تھا وہ سب ان این جی اووز کی مروڑ کی نزر ہوگیا اب دیکھنا ان کو کتنا آرام آجانا ہے جبکہ سوات کیی عوام کا جینا حرام ۔ ۔ ۔ ۔

chaand_nager
9th April 2009, 13:22
lakin ek baat ki samjh nhe arahi hain abi bhai muje k ager swat k log sherieyt nafez kerna he chahty hain to itna dhandora kiyon peet rahin zarori to nhe k logo ko zaberdesti is per amel kerny per majbor kia jaye aur kabi hum ny yeh souch ahain k sherieyt ka nefez just in k liya ek drama hain jin logo ny islam ki rah per chalna ho wo khamoshi k sath apne apne gher mai islam ki mutaqbiq life gozerain amger ager hum ny pora hold yani amen muhadia per implement ker diya to kal ko koi aur khera ho jaye ga k us nay sherieyt nafez kerni hain aur bila akheri pakistan k tokery tokery ho jain gay ager in logo ko itna he shoq hain to kerain na sheryit k mutabiq apni life gozarain mger yeh kia baat hoi k govt her shehr ko alg alg hold day dain g to sara kuch buikher jaye her koi islam k naam per apni dhair inth ki masjid bana k bth jaye ga sherieyt ka nifaz just ik game hain in logo k liya aur jahan tak amen ki baat ker rahin yeh bus apni man mani kern achaty hain k sara hold unhain day diya jaye janty hain pher kia ho ga? phe ryeh ho ga so called tailban apni apni tenzamain banaye gay aur pher jihaad k name per nojwan nesl ki brain wahsing ki jaye g aur pher teh end yeh he ho ga america bhonkay ga k swat main alqaiada ka network hain so hum nay hamla kerna hain kahtm kern ahain aur is terhan sra kuch he kahtm ho jaye ga

chaand_nager
9th April 2009, 13:32
aur janab engeos ki nazer nhe howa muhaida ankhain zera khol lo tusi k america ki waja sy howa hain yeh baat seb janty thay k america ny jeb yeh muhaida tay pa rah atha to foren us sy ikhtilaf kia tha ek ved ki waja sy yeh kah day na k eu ki waja sy muhaida khatm na na yeh hum jis ka lay ker kha doos rahain hain na us k kahny per eh aysa howa hain pakistan k halat aur b kahrab ho gay jeb tak drown hamlay band nhe kiye jain gay jeb ak america ki madakhelt band nhe ki jaye per aysa ho ga nhe engoeas walo ko konsa galt hain america kabi nhe chahta k aysa ho amen muhaida ka concept kia hain muej to smajh he nhe arhi k ager sheriyt k mutabiq life gozarni hain to goazro bhai kis nay roka hain mger her khita her ilaqa uth khera ho ga apni apni ajaradari k liya kia yeh sahe hain aj sawt main uthayin log kal ko sheyd pher suni pher qadiyani aur doery log seb uth jain gy k apne apne mezhab k name per yar hadh ho gai aqel nhe use ker rahin hum aur yeh kahty hain k hold in ko day diya jaye muje batain k serhad main koi baher ka banda per nhe mar skta bandy gaib ker laytain hain to pher kis kism ka hold mang rahain hain jihaad k name per tenzamain bana k america k sath shamil ho ker pher kudkhush bom blasting k liya america kud drama ker raha hain .sherieyt k nifaz k liay kisi muhadiay k nhe apne kirdar aur apne amel ki zarort hain apne gheron amin rahain gozaian an sherieyt k mutabiq life

aabi2cool
9th April 2009, 13:33
lakin ek baat ki samjh nhe arahi hain abi bhai muje k ager swat k log sherieyt nafez kerna he chahty hain to itna dhandora kiyon peet rahin zarori to nhe k logo ko zaberdesti is per amel kerny per majbor kia jaye aur kabi hum ny yeh souch ahain k sherieyt ka nefez just in k liya ek drama hain jin logo ny islam ki rah per chalna ho wo khamoshi k sath apne apne gher mai islam ki mutaqbiq life gozerain amger ager hum ny pora hold yani amen muhadia per implement ker diya to kal ko koi aur khera ho jaye ga k us nay sherieyt nafez kerni hain aur bila akheri pakistan k tokery tokery ho jain gay ager in logo ko itna he shoq hain to kerain na sheryit k mutabiq apni life gozarain mger yeh kia baat hoi k govt her shehr ko alg alg hold day dain g to sara kuch buikher jaye her koi islam k naam per apni dhair inth ki masjid bana k bth jaye ga sherieyt ka nifaz just ik game hain in logo k liya aur jahan tak amen ki baat ker rahin yeh bus apni man mani kern achaty hain k sara hold unhain day diya jaye janty hain pher kia ho ga? Phe ryeh ho ga so called tailban apni apni tenzamain banaye gay aur pher jihaad k name per nojwan nesl ki brain wahsing ki jaye g aur pher teh end yeh he ho ga america bhonkay ga k swat main alqaiada ka network hain so hum nay hamla kerna hain kahtm kern ahain aur is terhan sra kuch he kahtm ho jaye ga

ڈئیر سسٹر جو نقاط آپ نے اٹھائے ہیں ان میں سے میں اکثر کہ ساتھ متفق ہوں مگر آج جو صورتحال ہوچکی ہے یعنی جو گراؤنڈ رئیالٹی یا زمینی حقیقت ہے اگر اس پر کسی کو مورود الزام ٹھرایا جائے تو پھر تاریخ کہ گوشوں میں جھانکنا ہوگا اور تاریخ پاکستان کا پس منظر دیکھنا ہوگا لہزا بات بڑی طویل ہوجائے گی ۔ ۔۔ ۔ اور میرے پاس اتنا وقت نہیں ۔ ۔ ۔

chaand_nager
9th April 2009, 13:44
bhai muje to samjh he nhe arhi hain k kia ho ga meri khala ki beti ki beti jo cathridel main perti hain kitne dino sy gher bythi hain uknow why? un k school mian dhamki ameez letter aya hain k ager school open howa to urha dain gay aur isi kisam ki dhamki lahore grammer school gulburg main b masool howa uar whaan k school b band pera hin ager hum yeh bolain k taliban ka hain to galet ho ga ager yeh bolain bait tula masood hain to wo kud america ka agent ahin is ka metlub to yeh howa k is time pakis tan k khilaf boaht zayd a sazish ki ja rahain hain aur hum seb mu dakh rahin kiyon nh ehum nekalty baher ihtajaj kerty in hukamanu ko b to pata hona chaye jeb tak hum log kud awaam baher nh nekly g na humry hukmanan kuch kerian gay na he yhe sazishain band ho g